Thursday , September 21 2017
Home / ہندوستان / حج درخواستوں کیلئے ڈیجیٹل طریقہ کار ، موبائیل ایپ متعارف

حج درخواستوں کیلئے ڈیجیٹل طریقہ کار ، موبائیل ایپ متعارف

24 جنوری درخواست داخل کرنے کی آخری تاریخ ،ممبئی کے حج ہاؤز میں خصوصی تقریب، مختار عباس نقوی کا خطاب
ممبئی۔2 جنوری ۔ ( سیاست ڈاٹ کام ) مرکزی وزیر مملکت برائے اقلیتی امور (آزادانہ چارج) مختار عباس نقوی نے آج یہاں حج کمیٹی آف انڈیا موبائل ایپلی کیشن لانچ کرتے ہوئے حج امور سے متعلق تمام کام کاج کو ڈیجیٹل طریقہ پر کرنے کی ایک نئی پہل کی ہے ، جس کا مقصد سفر حج کیلئے آن لائن درخواست دینے کے عمل کو فروغ دینا ہے ۔ ممبئی میں واقع حج ہاؤس میں موبائل ایپلی کیشن لانچ کرتے ہوئے نقوی نے کہا کہ مرکزی وزارت اقلیتی امور بھی ڈیجیٹل انڈیا کی مہم کے ساتھ مکمل طور پر وابستہ ہو کر اس کو مزید مستحکم کر رہی ہے ۔ ہماری وزارت نے اس بار حج درخواست کے عمل کو آن لائن ؍ ڈیجیٹل کر دیا ہے۔ مرکزی حکومت حج 2017 ء کے سفر پر جانے والے خواہشمندوں کی طرف سے آن لائن درخواست دینے کے عمل کو بڑے پیمانے پر حوصلہ افزائی کررہی ہے تاکہ آسانی اور شفافیت کے ساتھ لوگ آئندہ سفر حج کیلئے درخواست دے سکیں۔حج کمیٹی آف انڈیا موبائل اپلی کیشن گوگل پلے اسٹور پر آج سے ہی دستیاب ہو گی۔ نقوی نے کہا کہ اس اپلی کیشن کا آغاز ہونے سے عازمین کو آن لائن درخواست داخل کرنے میں بڑی سہولت ہوگی۔ حج 2017 ء کیلئے درخواست دینے کے عمل کا اعلان ہو گیا ہے اور 2 جنوری یعنی آج سے اس کیلئے درخواستیں وصول کی جارہی ہیں۔ درخواست دینے کی آخری تاریخ 24 جنوری ہے ۔ انہوں نے کہا کہ حج کیلئے درخواست، پوچھ تاچھ اور اطلاع، حج سے متعلق تازہ ترین سرگرمیوں کی تفصیلات اور ای۔ ادائیگی اس اپلی کیشن کی اہم خصوصیات ہیں۔ اس اپلی کیشن کی کے ذریعے پانچ بالغ اور 2 بچے ایک گروپ کے طور پر درخواست دے سکتے ہیں۔ درخواست کی پی ڈی ایف کاپی درخواست کنندہ کو میل کے ذریعے بھیجی جائے گی جسے درخواست دہندہ گان کو بعد میں تصویر لگا کر اسٹیٹ حج کمیٹی کو بھیجنی ہوگی۔ اس اپلی کیشن سے رجسٹریشن کی فیس بھی آن لائن دی جا سکے گی۔مرکزی وزیر نے کہا گزشتہ ماہ وزارت اقلیتی امور نے حج محکمہ کی نئی ویب سائٹ لانچ کی تھی۔ یہ ویب سائٹ ہندی، اردو اور انگریزی زبانوں میں دستیاب ہے ۔ اس میں حج سے متعلق تمام تفصیلات دستیاب ہیں۔ اس ویب سائٹ سے بھی سفر حج پر جانے والے مسافروں کو آن لائن درخواست دینے میں بڑی مدد ملے گی۔ اس ویب سائٹ میں اقلیتی وزارت، حج محکمہ، سفر حج سے متعلق مختلف قوانین، حج کمیٹی آف انڈیا، پرائیوٹ ٹور آپریٹرز کے بارے میں تفصیلی معلومات دی گئی ہے ۔ ساتھ ہی حج کے دوران ارکان حج سے متعلق معلومات درج ہیں ۔ اس ویب سائٹ میں ان تمام معلومات پر مبنی فلم بھی دستیاب ہے۔آئندہ حج کیلئے عازمین کیلئے نقد رقم کے ساتھ ساتھ آن لائن، کریڈٹ ؍ ڈیبٹ کارڈ سے درخواست فیس جمع کرنے کا اہتمام کیا جا رہا ہے ۔حج 2016 ء کے دوران تقریباً 45843 آن لائن درخواستیں موصول ہوئی تھیں جو کل درخواستوں کا تقریبا 11 فیصد تھا۔ سب سے زیادہ 10960 آن لائن درخواستیں مہاراشٹر سے موصول ہوئی تھیں۔ مسٹر نقوی نے کہا کہ ہماری کوشش ہے کہ اس بار زیادہ سے زیادہ لوگ سفر حج کیلئے آن لائن درخواست داخل کریں۔ حج 2016 میں ملک بھر میں 21 مراکز سے تقریبا 99903 عازمین نے حج کمیٹی آف انڈیا کے ذریعہ حج کی سعادت حاصل کی جبکہ تقریبا 36 ہزار عازمین نے پرائیویٹ ٹور آپریٹرز کے ذریعے فریضہ حج ادا کیا تھا۔
انہوں نے کہا کہ اقلیتی وزارت اور حج کمیٹی آف انڈیا نے حج 2017 کے لئے قبل از وقت تیاریاں شروع کر دی ہے تاکہ عازمین کو ان کے سفر میں کسی بھی طرح کی کوئی پریشانی نہ ہو۔مسٹر نقوی نے کہا کہ ہم نے حج 2017 کے لئے ملک بھر سے موصولہ مختلف تجاویز کی بنیاد پر سعودی عرب کی حکومت اور حج سے متعلق ہندستان کی مختلف ایجنسیوں سے بات چت شروع کر دی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ شہری ہوا بازی کی وزارت کے حکام سے بھی کہا گیا ہے کہ عازمین حج کو جدید سہولتوں سے لیس طیارے دستیاب کرائے جائیں۔ موبائل اپلی کیشن کی لانچنگ کے موقع پر حج کمیٹی آف انڈیا چیئرمین چودھری محبوب علی قیصر، حج کمیٹی کے چیف ایکزیٹیو آفیسر (سی ای او) عطاالرحمن اور دیگر اہم شخصیات موجود تھیں۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT