Saturday , June 24 2017
Home / شہر کی خبریں / حج ہاوز کے مینٹننس کے حکام خواب غفلت کا شکار

حج ہاوز کے مینٹننس کے حکام خواب غفلت کا شکار

اندرون دو یوم رمضان کا آغاز ، اقلیتوں کے اہم دفاتر کیلئے روانگی کی لفٹ بند
حیدرآباد۔/25مئی، ( سیاست نیوز) اب جبکہ رمضان المبارک کے آغاز کو بمشکل دو دن باقی رہ گئے ہیں لیکن حج ہاوز کے مینٹننس کے حکام خواب غفلت کا شکار ہیں۔ حج ہاوز جہاں مختلف اقلیتی محکمہ جات کے دفاتر موجود ہیں اور روزانہ سینکڑوں افراد مسائل کی یکسوئی کیلئے رجوع ہوتے ہیں لیکن گزشتہ تین ماہ سے عمارت کے ایک حصہ کی لفٹ بند ہے جس کے باعث عوام کو سخت مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ جس حصہ میں دو کے منجملہ ایک لفٹ بند ہے وہاں اردو اکیڈیمی، وقف بورڈ، اقلیتی فینانس کارپوریشن تلنگانہ کے علاوہ آندھرا پردیش اقلیتی فینانس کارپوریشن کے دفاتر موجود ہیں۔ ان دفاتر کو روزانہ کئی مرد و خواتین اور خاص طور پر ضعیف العمر افراد بھی رجوع ہوتے ہیں تاکہ اپنے مسائل کی یکسوئی کریں۔ گزشتہ 3 ماہ سے یہ لفٹ بند ہے اور دوسری لفٹ میں کم گنجائش کے علاوہ تمام منزلوں پر ٹھہرنے کی سہولت نہیں جس کے باعث طلبہ اور ان کے سرپرستوں کو کافی مشکلات پیش آرہی ہیں۔ اردو اکیڈیمی کے دفتر سے شعراء، ادیب، مصنفین اور اردو تنظیموں کے نمائندے رجوع ہوتے ہیں جن کی اکثریت ضعیف العمر مرد و خواتین پر مشتمل ہوتی ہے۔ لفٹ بند ہونے کے باعث یہ لوگ سیڑھیوں کے راستہ چوتھی اور پانچویں منزل تک جانے کیلئے مجبور ہیں اور وہ بمشکل ہر منزل پر رکتے ہوئے مسافت طئے کررہے ہیں۔ وقف بورڈ کی تشکیل کے بعد بتایا جاتا ہے کہ مینٹننس حکام نے بجٹ کی کمی کا بہانہ بنایا۔ حالیہ عرصہ میں بورڈ نے تقریباً ایک لاکھ 80 ہزار روپئے لفٹ کی درستگی کیلئے منظور کئے لیکن ابھی تک یہ کام شروع نہیں کیا جاسکا۔ اب جبکہ رمضان المبارک قریب ہے ایسے میں روزہ دار افراد کو لفٹ بند ہونے سے مزید مشکلات اور دشواریاں پیش آسکتی ہیں۔ وقف بورڈ کے حکام کو چاہیئے کہ وہ فوری اس جانب توجہ مبذول کریں تاکہ ضعیف العمر افراد، طلبہ اور ان کے سرپرستوں اور شعراء اور ادیبوں کو راحت ملے۔ وقف بورڈ نے عمارت کی کلرنگ اور آہک پاشی کے کام کا آغاز کیا اور یہ اعلان کیا گیا تھا کہ رمضان کی آمد سے قبل یہ کام مکمل کرلیا جائے گا۔ عمارت کے بیرونی حصہ میں کلرنگ مکمل ہوچکی ہے تاہم اندرونی حصہ میں ابھی کافی کام باقی ہے۔ مختلف محکمہ جات کے دفاتر میں ابھی تک یہ کام شروع نہیں ہوسکا۔ اس کے علاوہ حج ہاوز کی مسجد میں صفائی کے انتظامات پر خصوصی توجہ کی ضرورت ہے۔ مصلیان مسجد نے کہا کہ خاص طور پر بیت الخلاؤں کی بروقت صفائی اور پانی کی سربراہی کا موثر انتظام کیا جانا چاہیئے۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT