Thursday , October 19 2017
Home / شہر کی خبریں / حج 2016 کے لیے غلط رہائشی پتہ ، چار افراد کے کور نمبرس منسوخ کرنے کی سفارش

حج 2016 کے لیے غلط رہائشی پتہ ، چار افراد کے کور نمبرس منسوخ کرنے کی سفارش

حج کمیٹی کو دھوکہ دینے کی کوشش ناکام ، پروفیسر ایس اے شکور اسپیشل آفیسر حج کمیٹی کا بیان
حیدرآباد۔ 16۔ مئی  ( سیاست نیوز) حج 2016 ء کے لئے غلط رہائشی پتہ داخل کرتے ہوئے حج بیت اللہ کی سعادت حاصل کرنے کی کوشش ناکام ثابت ہوئی اور حج کمیٹی نے 4 افراد کے کور نمبرس کو منسوخ کرنے کی سنٹرل حج کمیٹی سے سفارش کی ہے۔ بتایا جاتا ہے کہ دو الگ الگ کور نمبرس میں 4 افراد نے اپنا رہائشی پتہ درج نہیں کیا اور غلط طریقہ سے درخواست داخل کرتے ہوئے حج کیلئے منتخب ہوگئے ۔ حج کمیٹی نے جب رہائشی پتہ کی تفصیلات طلب کی تو وہ اس سے قاصر تھے۔ ایک معاملہ میں ٹاملناڈو سے تعلق رکھنے والے ایک جوڑنے نے چتور سے اپنا فارم داخل کیا جبکہ دوسرے معاملہ میں حیدرآباد سے تعلق رکھنے والے ایک جوڑے نے ضلع پرکاشم سے فارم داخل کیا اور یہ دونوں آندھراپردیش کے زمرہ میں منتخب ہوگئے۔ کور نمبر (APF-15358-3) میں جبار عبدالحبیب اور ان کی اہلیہ حبیب بدرالنساء نے چتور سے تعلق رکھنے والے اپنے رشتہ دار کے ساتھ درخواست داخل کی۔ ان کے پاس ٹاملناڈو کے پاسپورٹس ہیں۔ حج کمیٹی نے جب رہائشی پتہ کی تفصیلات طلب کی تو انہوں نے 30 اپریل 2016 ء کو جاری کردہ ووٹر آئی ڈی کارڈ روانہ کیا جبکہ حج کمیٹی میں رہائشی پروف داخل کرنے کی آخری تاریخ 10 مارچ تھی۔ ایک اور معاملہ میں حیدرآباد سے تعلق رکھنے والے محمد انیس اور ان کی اہلیہ نجمہ بانو نے کور نمبر (APF-366-2) کے تحت ضلع پرکاشم سے درخواست داخل کی۔ ان سے جب پرکاشم کا رہائشی پتہ دریافت کیا گیا تو انہوں نے ایک کرایہ نامہ داخل کیا جو قابل قبول نہیں ہے۔ آندھراپردیش نے عازمین حج کی کم درخواستوں کے سبب منتخب ہونے کیلئے ان افراد نے حج کمیٹی کو دھوکہ دینے کی کوشش کی ہے۔ تمام پاسپورٹس کی جانچ کے بعد یہ معاملہ منظر عام پر آیا اور اسپیشل آفیسر حج کمیٹی پروفیسر ایس اے شکور نے سنٹرل حج کمیٹی کو مکتوب روانہ کرتے ہوئے چاروں افراد کے انتخاب کو منسوخ کرنے کی سفارش کی ہے۔ سنٹرل حج کمیٹی اس سلسلہ میں قطعی فیصلہ کرے گی۔

TOPPOPULARRECENT