Wednesday , October 18 2017
Home / شہر کی خبریں / حرمین شریفین کا سفر دعاؤں کا سفر

حرمین شریفین کا سفر دعاؤں کا سفر

دفتر سیاست میں عمرہ تربیتی کلاس ، مفتی سید آصف ندوی کا خطاب
حیدرآباد ۔ /7 فبروری (راست) ایک بندہ مومن کا عقیدہ یہ ہے کہ اللہ اس کی دعاؤں کو قبول کرنے والا اس کی مناجات کو سننے والا اور اس کے حاجات و ضروریات کو پورا کرنے والا ہے ۔ وہی ہے جو اس کو بے نیاز کرنے والا ہے ۔ اسی لئے حکم ہے کہ اسی سے مانگا جائے اسی سے لو لگائی جائے اور حرمین شریفین کا سفر تو ان نوازشوں اور عنایتوں کی معراج ہے ۔ قدم قدم پر ایک معتمر و زائر کو مانگنا چاہئیے ۔ بلاوا اسی لئے آیا ہے کہ کریم مولیٰ اپنے بندہ پر کرم کرنے والا ہے ۔ ان خیالات کا اظہار مولانا مفتی سید آصف الدین ندوی قاسمی بانی  جنرل سکریٹری لبیک سوسائیٹی نے روزنامہ سیاست کے اشتراک سے عمرہ تربیتی کلاس منعقد گولڈن جوبلی ہال احاطہ روزنامہ سیاست میں کیا اور کہا کہ  ہماری یہ غلط فہمی ہے کہ وہاں جاکر مانگ لیں گے وہاں جاکر اعمال و مناسک کو کرلیں گے جب کہ وہاں پہنچنے سے پہلے دعاؤں و مناجات ، اعمال و مناسک اور آداب کو سیکھنا چاہئیے ۔ وہاں جاکر ان مناسک کو پورا کرنا ہے وہاں تعلیم و تربیت کا کوئی نظم نہیں ہے ۔ معلم کے معنی سکھانے والے کے نہیں ہے بلکہ منتظم و آرگنائزر کے ہیں جو کچھ کرنا معتمر و زائر کو کرنا ہے ۔ مولانا نے مسنون دعائیں اور ان کے معانی و مطالب سمجھاتے ہوئے کہا کہ مسنون اور ماثورہ دعاؤں میں جو معنویت و روحانیت اور کیفیت ہے وہ کسی اور زبان میں ہرگز نہیں ہوسکتی اور نہ آسکتی اسی لئے ان کے پڑھنے سمجھ کر ادا کرنے کا اہتمام ہونا چاہئیے ۔ عمرہ کے فرائض و واجبات کو سمجھاتے ہوئے کہا کہ ہر معتمر کو ان کو ادا کرنا چاہئیے ۔ قبل ازیں جناب محمد نواب نے عازمین کا خیرمقدم کیا ۔  ضرورت اس بات کی ہے کہ تمام عازمین سیکھ کر جائیں ۔ مولانا محترم کی دعا پر کلاس اختتام پذیر ہوئی ۔

TOPPOPULARRECENT