Saturday , August 19 2017
Home / شہر کی خبریں / حرم شریف سانحہ میں جاں بحق دو عازمین کے بچوں کو فی کس 3 لاکھ روپئے امداد

حرم شریف سانحہ میں جاں بحق دو عازمین کے بچوں کو فی کس 3 لاکھ روپئے امداد

حکومت آندھرا پردیش کا اعلان ۔ تلنگانہ حکومت کا بھی زخمیوں کی امداد پر غور ۔ تین خواتین کیلئے محرم کو روانہ کرنے اقدامات

حیدرآباد۔/15ستمبر، ( سیاست نیوز) آندھرا پردیش حکومت نے مکہ مکرمہ میں گزشتہ دنوں پیش آئے سانحہ میں جاں بحق مچھلی پٹنم ضلع کرشنا کے 2 عازمین حج کے بچوں کیلئے فی کس 3لاکھ روپئے امداد کا اعلان کیا ہے۔ چیف منسٹر چندرا بابونائیڈو نے مکہ مکرمہ کے سانحہ پر عہدیداروں سے مشاورت کے بعد یہ فیصلہ کیا۔ انہوں نے وزیر اقلیتی بہبود پلے رگھوناتھ ریڈی اور سکریٹری اقلیتی بہبود شیخ محمد اقبال سے اس سلسلہ میں رپورٹ طلب کی اور آندھرا پردیش کے دو عازمین کے حادثہ میں انتقال پر دکھ کا اظہار کیا اور چیف منسٹر ریلیف فنڈ سے بچوں کیلئے فی کس 3لاکھ روپئے کی منظوری دی ہے۔ جوائنٹ سکریٹری برائے چیف منسٹر پی ایس پردیومنا نے اس سلسلہ میں ریاستی حج کمیٹی کو بذریعہ مکتوب اطلاع دی۔ آندھرا پردیش حکومت نے اسپیشل آفیسر حج کمیٹی پروفیسر ایس اے شکور سے اس سانحہ پر رپورٹ طلب کی تھی۔ بتایا جاتا ہے کہ چندرا بابونائیڈو نے سکریٹری اقلیتی بہبود شیخ محمد اقبال کو ہدایت دی کہ وہ چیف منسٹر ریلیف فنڈ کی امداد کی اجرائی کیلئے اقدامات کریں۔ بتایا جاتا ہے کہ جاں بحق عازمین کے بچوں کے نام پر یہ رقم فکسڈ ڈپازٹ کی جائیگی تاکہ انکی تعلیم اوردیگر ضروریات کیلئے اس کا استعمال ہو۔ واضح رہے کہ مکہ مکرمہ کے سانحہ میں آندھرا پردیش کے دو عازمین جاں بحق ہوئے جبکہ تلنگانہ کے 3 عازمین زخمی ہوئے ہیں جن میں ایک شیخ مجیب ہنوز مکہ مکرمہ کے ہاسپٹل میں زیر علاج ہیں۔ بتایا جاتا ہیکہ جگر کے عارضہ کے سلسلہ میں انہیں ڈاکٹرس نے ڈسچارج نہیں کیا۔ اسی دوران تلنگانہ حکومت بھی زخمیوں کو امداد کی فراہمی پر غور کررہی ہے اور اس سلسلہ میں اسپیشل آفیسر حج کمیٹی پروفیسر شکور سے رپورٹ طلب کی گئی۔ سعودی عرب حکومت کی جانب سے جاں بحق افراد اور زخمیوں کیلئے امداد کے اعلان کے بعد تلنگانہ حکومت کوئی فیصلہ کریگی۔ پروفیسر شکور نے بتایا کہ مچھلی پٹنم کے جاں بحق دونوں عازمین کی کل بعد نماز عشاء حرم میں نماز جنازہ ادا کی گئی اور منٰی کے قبرستان میں تدفین عمل میں آئی۔ سانحہ میں کرناٹک سے تعلق رکھنے والے دو خاتون عازمین بھی جاں بحق ہوئے جو اگرچہ حیدرآباد سے روانہ ہوئے تھے لیکن ان کا تعلق پرائیویٹ ٹور آپریٹر سے ہے۔ مکہ مکرمہ میں 3 خواتین عازمین کیلئے حج کمیٹی محرم کو روانہ کرنے کا انتظام کررہی ہے۔ بودھن کے ایک عازم شیخ احمد علی کا انتقال ہوگیا تھا جن کی اہلیہ حبیبہ بیگم کیلئے محرم کے طور پر ان کے فرزند شیخ استخار احمد کو روانہ کیا جارہا ہے۔ اسپیشل آفیسر حج کمیٹی کی مساعی سے ریجنل پاسپورٹ آفیسر نے صرف 3 گھنٹے میں نیا پاسپورٹ جاری کیا۔ یہ پاسپورٹ ممبئی کو ویزا انڈارسٹمنٹ کیلئے روانہ کردیا گیا۔ مچھلی پٹنم کے جاں بحق عازمین کے ساتھ دو خواتین بھی حج کیلئے روانہ ہوئی تھیں انکے محرم کے طور پر ایک رشتہ دار کو روانہ کیا جائیگا۔ انہیں ویزا کی اجرائی کیلئے اقدامات کئے گئے اور سنٹرل حج کمیٹی ویزا کے حصول کیلئے سعودی کونسلیٹ سے رجوع کریگی۔ پروفیسر شکور کے مطابق مکہ مکرمہ کے سانحہ میں تلنگانہ اور آندھرا پردیش کے مزید کوئی عازمین متاثر نہیں ہوئے اور نہ کوئی لاپتہ۔ انہوں نے کہا کہ تمام عازمین حج خیریت سے ہیں اور عبادتوں میں مصروف ہیں۔ خادم الحجاج کو ہدایت دی گئی ہے کہ وہ عازمین حج کیلئے تمام سہولتوں کو یقینی بنائیں۔ انڈین حج مشن اور ہندوستانی کونسلیٹ کے حکام سے ریاستی حج کمیٹی ربط میں ہے۔

TOPPOPULARRECENT