Wednesday , September 20 2017
Home / دنیا / حزب اللہ کے عسکری کمانڈر کی ہلاکت کیلئے تخریب کار ذمہ دار

حزب اللہ کے عسکری کمانڈر کی ہلاکت کیلئے تخریب کار ذمہ دار

’ مجرموں کی ٹولیوں ‘ کے خلاف جدوجہد جاری رکھی جائیگی ۔ تنظیم کا اعلان
بیروت 14 مئی ( سیاست ڈاٹ کام ) لبنان کی حزب اللہ تنظیم نے آج اسلامی تخریب کاروں کو شیعہ عسکری گروپ کے اعلی فوجی کمانڈر کی شام میں ہوئے حملوں میں ہلاکت کیلئے ذمہ دار قرار دیا ہے ۔ ایران کی تائید سے چلنے والے اس گروپ نے ہزاروں لڑاکوں کو شام میں متعین کیا ہے جہاں مصطفی بدرالدین نے صدر بشار الاسد کی تائید میں ہوئی اس فوجی مداخلت کی قیادت کی تھی ۔ حزب اللہ کے ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ تحقیقات میں واضح ہوا ہے کہ ایک دھماکہ دمشق انٹرنیشنل ائرپورٹ کے قریب حزب اللہ کے ٹھکانہ کو نشانہ بناتے ہوئے جو حملہ کیا گیا تھا اس میں مصطفی بدرالدین مارے گئے ہیں اور یہ حملہ اس علاقہ میں موجود گروپس نے کیا ہے ۔ حزب اللہ نے اپنے بیان میں کسی مخصوص گروپ کا نام نہیں لیا ہے اور نہ ہی کسی گروپ نے اس حملہ کی ذمہ داری قبول کی ہے ۔

حزب اللہ گروپ شام میں صدر بشار الاسد کے مخالف تخریب کار گروپس کے خلاف نبرد آزما ہے اور اسے اکثر آئی ایس جیسے گروپس کے عناصر کے خلاف مقابلہ کرنا پڑتا ہے ۔ النصرہ فرنٹ بھی یہاں سرگرم ہے جو شام میں القاعدہ سے الحاق رکھتا ہے ۔ شام کے سکیوریٹی ذرائع کا کہنا ہے کہ مصطفی بدر الدین دمشق ائرپورٹ کے قریب ایک ویر ہاوس میں تھے کہ اس پر جمعرات کی رات حملہ کیا گیا ۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ اس حملہ سے قبل کسی ہوائی جہاز کی آواز بھی سنائی نہیں دی ۔ آج جاری کردہ ایک بیان میں حزب اللہ نے کہا کہ شام میں سرگرم ’’ مجرموں کی ٹولیوں ‘‘ کے خلاف لڑائی میں کوئی کسر باقی نہیں رکھی جائیگی ۔ بیروت میں مصطفی بدرالدین کے جنازہ میںہزاروں افراد نے شرکت کی ۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ جو حقائق سامنے آئے ہیں ان کی روشنی میں ان ٹولیوں کے خلاف لڑائی کا ہمارا عزم اور بھی مستحکم ہوگا اور ہم مجرموں کی ان ٹولیوں کے خلاف اس وقت تک جدوجہد جاری رکھیں گے جب تک ان کاصفایا نہیں ہوجاتا ۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ یہ لڑائی امریکی صیہونی منصوبوں کے خلاف ہے جو دہشت گرد آگے بڑھا رہے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT