Monday , August 21 2017
Home / ہندوستان / حساس مسائل پر فتویٰ ضروری نہیں

حساس مسائل پر فتویٰ ضروری نہیں

بھارت ماتا … نعرہ کے مفہوم کو سمجھا جائے ، مولانا خالد راشد فرنگی محل
لکھنو ۔ 5 اپریل ۔ ( سیاست ڈاٹ کام ) ’’بھارت ماتا کی جئے ‘‘ نعرہ پر جاری تنازعہ کے دوران مولانا خالد رشید فرنگی محل نے کہاکہ دارالعلوم دیوبندجیسے اداروں کو ان حساس موضوعات پر فتویٰ دینے سے گریز کرنا چاہئے جن کا ملک اور مسلمانوں پر منفی اثر پڑسکتا ہے ۔ انھوں نے کہا کہ نعرے لگانے کے اس مسئلہ سے سیاسی مفادات وابستہ ہیں ۔ مولانا خالد رشید فرنگی محل آل انڈیا مسلم پرسنل لاء بورڈ کے رکن بھی ہیں ۔ انھوں نے کہاکہ دونوں طبقات کی فرقہ پرست طاقتوں نے مجوزہ اسمبلی انتخابات کو پیش نظر رکھتے ہوئے یہ مسئلہ اُٹھایا ۔ اگر کوئی مسلم ادارہ ایسے حساس اور سیاسی مسئلہ پر فتویٰ جاری کرتا ہے تو اس سے فرقہ پرست طاقتوں کو اپنا مقصد حاصل کرنے میں مدد ملے گی ۔ انھوں نے کہاکہ آخر ہم ایسے مفادات حاصلہ کے ہاتھوں آلۂ کار کیوں بنیں ؟ انھوں نے کہا کہ ہر مسئلہ پر فتویٰ جاری کرنے کیلئے دینی ادارے پابند نہیں ہیں۔ انھوں نے کہا سب سے پہلی بات یہ ہے کہ دستور میں ملک سے محبت کے اظہار کیلئے کسی بھی شہری کیلئے نعرہ کو لازمی قرار نہیں دیا گیا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT