Thursday , August 24 2017
Home / شہر کی خبریں / حسینی علم گرلز ڈگری و پی جی کالج کے لیے بس خدمات کا آغاز ناگزیر

حسینی علم گرلز ڈگری و پی جی کالج کے لیے بس خدمات کا آغاز ناگزیر

سینکڑوں طالبات کی آمد و رفت میں مشکلات ، آر ٹی سی کو توجہ دینے کی ضرورت

حیدرآباد۔2اگسٹ (سیاست نیوز) حسینی علم گرلز جونیئر و ڈگری کالج کیلئے بس سروس کا آغاز ناگزیر ہوتا جا رہا ہے اور بس خدمات نہ ہونے کے سبب طلبہ کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے اسی لئے کالج تک منی بس کا آغاز کیا جانا چاہئے ۔ پرانے شہر میں موجود حسینی علم گرلز ڈگری و جونیئر کالج کیلئے کسی زمانے میں بس خدمات ہوا کرتی تھی لیکن ان خدمات کو معطل کردیا گیا۔ خدمات کی معطلی کے بعد طالبات کو چارمینار سے کالج تک پیدل مسافت طئے کرنی پڑ رہی تھی لیکن اب جبکہ چارمینار سے بھی بس خدمات عملی طور پر محدود ہو چکی ہیں تو طالبات کو مزید مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے اور شاہ علی بنڈہ سے انہیں کالج تک پیدل مسافت طئے کرنی پڑ رہی ہے۔ کالج کے ذمہ داروں کا کہنا ہے کہ کالج تک منی بس خدمات کے آغاز کے لئے متعدد مرتبہ متوجہ کروایا جاچکا ہے لیکن اس کے باوجود بھی کوئی اقدامات نہیں کئے گئے لیکن کہا جا رہا ہے کہ مؤثر نمائندگی کی صورت میں پرانے شہر کے اس قدیم کالج تک بس خدمات کا آغاز کیا جائے گا ۔ دیوڑھی خورشید جاہ شاہ گنج میں واقع اس کالج میں جہاں نہ صرف جونیئر و ڈگری کالج ہے بلکہ اس احاطہ میں بی جی کالج بھی موجود ہے لیکن اس کے باوجود اس کالج تک بس خدمات کی عدم فراہمی ناقابل فہم ہے۔ ایسا نہیں ہے کہ اس کالج تک بس کے پہنچنے کا راستہ نہیں ہے کیونکہ کالج کے اطراف کی سڑک پر کئی خانگی اسکولوں کی بسیں پہنچتی ہیں اور ان بسوں کی آمد و رفت میں کوئی مشکل نہیں پیش آتی اگر تلنگانہ اسٹیٹ روڈ ٹرانسپورٹ کارپوریشن کی جانب سے شہر کے مختلف علاقوں سے حسینی علم کالج تک بس خدمات کا آغاز کرے تو ایسی صورت میں بس خدمات کے استفادہ کنندگان کی تعداد میں بھی بھاری اضافہ ہوگا۔کالج طالبات کی شکایت ہے کہ دوردراز علاقوں پر موجود بس اسٹاپ سے اتر کر پیدل مسافت کے دوران انہیں اوباش اور لوفر لڑکوں کی چھیڑ چھاڑ کا سامنا کرنا پڑ تا ہے اسی لئے وہ بحالت مجبوری آٹو رکشا استعمال کرتی ہیں لیکن کئی مرتبہ مختلف وجوہات کی بناء پر انہیں پیدل ہی کالج تک پہنچنا ہوتا ہے اور پیدل مسافت کے دوران کئی مشکلات سے دوچار ہونا پڑتا ہے۔ مقامی منتخبہ عوامی نمائندوں کو طالبات کے ان مسائل کا جائزہ لیتے ہوئے انہیں بس سہولت کی فراہمی کے سلسلہ میں اقدامات کا آغاز کرنا چاہئے کیونکہ اس علاقہ میں منی بس خدمات کے آغاز سے نہ صرف کالج طالبات کا ہی نہیں بلکہ علاقہ کے عوام کا بھی زبردست فائدہ ہوگا اور اطراف کے علاقہ سے تعلق رکھنے والے بھی اس بس خدمات سے استفادہ حاصل کرسکیں گے۔

TOPPOPULARRECENT