Sunday , September 24 2017
Home / شہر کی خبریں / حصول تلنگانہ میں طویل جدوجہد اور قربانیاں کارفرما

حصول تلنگانہ میں طویل جدوجہد اور قربانیاں کارفرما

کانگریس کی مرہون منت قرار دینے پر ٹی آر ایس ایم پیز وینوگوپال چاری اور ڈی سمن کا شدید ردعمل
حیدرآباد۔20 جولائی (سیاست نیوز) نئی دہلی میں تلنگانہ حکومت کے نمائندے وینوگوپال چاری اور رکن پارلیمنٹ ڈی سمن نے تلنگانہ پردیش کانگریس قائدین پر گمراہ کن بیانات دینے کا الزام عائد کیا۔ میڈیا کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے ان قائدین نے کہا کہ یہ تاثر دینے کی کوشش کی جارہی ہے کہ سونیا گاندھی نے تلنگانہ ریاست تشکیل دی۔ انہوں نے کہا کہ مرکزی حکومت نے تلنگانہ کی تشکیل کے ذریعہ عوام پر کوئی احسان نہیں کیا۔ کانگریس اور سونیا گاندھی کے رحم و کرم پر تلنگانہ حاصل نہیں ہوا بلکہ طویل جدوجہد اور قربانیوں کے نتیجہ میں مرکز کو تشکیل تلنگانہ پر مجبور ہونا پڑا۔ انہوں نے تلنگانہ میں ڈرگس اسکام میں چیف منسٹر کے قریبی افراد ملوث ہونے سے متعلق ڈگ وجئے سنگھ کے الزام کو مسترد کردیا اور کہا کہ ڈگ وجئے سنگھ بوکھلاہٹ کا شکار ہیں اور تلنگانہ میں کانگریس کے احیاء کے لیے اس طرح کے بے بنیاد الزامات عائد کررہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ٹی آر ایس حکومت نے سماجی برائیوں کے خاتمہ کے لیے کئی ایک اقدامات کئے۔ کارڈس کلب اور حقہ سنٹرس کو رد کرنے کا کام ٹی آر ایس حکومت کا کارنامہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ منشیات کے خلاف ٹی آر ایس حکومت نے جدوجہد کی ہے اور چیف منسٹر نے ایکسائز و انفورسنمنٹ عہدیداروں کو مکمل چھوٹ دے رکھی ہے۔ اس اسکام میں جو بھی ملوث پائے جائیں ان کے خلاف سخت کارروائی کی جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ ہائی کمان کی جانب سے تلنگانہ کے انچارج کی حیثیت سے تبدیل کرنے کے خوف کے تحت ڈگ وجئے سنگھ اس طرح کے بیانات دے رہے ہیں۔ انہوں نے الزامات سے دستبرداری کا مطالبہ کیا۔ بی سمن نے کہا کہ چیف منسٹر کے چندر شیکھر رائو نے منشیات اور دیگر سماجی برائیوں کے خلاف جنگ چھیڑدی ہے۔ انہوں نے الزام عائد کیا کہ ڈگ وجئے سنگھ ذہنی توازن کھوچکے ہیں۔ انہوں نے پیشکش کیا کہ اگر ڈگ وجئے سنگھ چاہیں تو انہیں ایراگڈا مینٹل ہاسپٹل میں مفت علاج کی سہولت فراہم کی جائے گی۔ سمن نے کہا کہ کانگریس پارٹی کی تاریخ رہی ہے کہ اس نے اپنے دور حکومت میں منشیات اور دیگر سماجی جرائم کی حوصلہ افزائی کی۔ ڈگ وجئے سنگھ گزشتہ دنوں دہشت گردی کے سلسلہ میں تلنگانہ پولیس پر الزامات عائد کرچکے ہیں لیکن وہ ثابت کرنے میں ناکام رہے۔ انہوں نے کہا کہ تلنگانہ پولیس اپنی کارکردگی کے اعتبار سے نہ صرف ملک بلکہ دنیا بھر میں مقبولیت رکھتی ہے۔ مختلف ممالک کے پولیس عہدیداروں نے حیدرآباد پہنچ کر تلنگانہ پولیس کی ستائش کی۔

TOPPOPULARRECENT