Wednesday , October 18 2017
Home / اضلاع کی خبریں / حصول علم پر کامیابی یقینی، ملازمت کیلئے سخت محنت ضروری

حصول علم پر کامیابی یقینی، ملازمت کیلئے سخت محنت ضروری

کریم نگر میں پبلک سرویس کمیشن امتحانات کیلئے بیداری پروگرام، جناب سید متین قادری اور دیگر کا خطاب
کریم نگر 22 اکٹوبر (سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) سرکار دو عالم حضرت محمد مصطفی صلی اللہ علیہ و سلم پر پہلی وحی جو نازل ہوئی تھی اس میں پہلے علم کے حصول کی طرف توجہ دی گئی۔ دینی عبادت، نماز، زکوٰۃ ، روزہ کسی اور کارخیر کا حکم نہیں دیا گیا، پڑھنے کو کہا گیا اور آج ہماری قوم کی بدبختی ہے کہ علم حاصل کرنے میں پیچھے ہے۔ جناب سید متین قادری رکن تلنگانہ اسٹیٹ پبلک سرویس کمیشن نے ان خیالات کا اظہار کیا۔ یہاں میونسپل نیو پیکاک میں مسلم ایجوکیشنل سوسائٹی کریم نگر کے زیراہتمام منعقدہ تلنگانہ اسٹیٹ پبلک سرویس کمیشن امتحانات کے لئے کسی طرح کی تربیت و تیاری کی ضرورت ہے معلومات بیداری پروگرام میں بطور مہمان خصوصی مخاطب تھے۔ انھوں نے مسلم نوجوان لڑکے لڑکیوں سے کہاکہ دنیا اور آخرت میں کامیابی کے لئے علم کا حاصل کرنا ضروری ہے اور اس کے لئے بہتر جسمانی صحت اور علم یہ دونوں میسر ہوجائیں تو اقتدار بھی حاصل ہوگا۔ انھوں نے کہاکہ حضرت علیؓ کا ایک قول ہے کہ علم کے حصول کی ہرممکنہ کوشش کریں دولت کی نہیں اس لئے کہ علم آپ کی حفاظت کرے گا اور دولت کی آپ کو حفاظت کرنی پڑے گی۔ انھوں نے گروپ ون گروپ 2 دیگر امتحانات کی تفصیلات سے واقف کروایا اور کہاکہ گروپ ون ملازمت 50 ہزار روپئے اور گروپ 2 ملازمت سے 40 ہزار روپیے سے تنخواہ شروع ہوگی۔ قبل ازیں جناب بشارت علی ڈائرکٹر تعمیر کنسٹرکشن اور جناب رؤف ریحان اردو ٹیچرس اسوسی ایشن نے مسابقتی امتحانات میں کس طرح کے سوالات ہوں گے۔ اس پر تفصیل سے روشنی ڈالتے ہوئے تیاری کرنے کا مشورہ دیا۔ تلنگانہ کے جغرافیہ تاریخ تہذیب و تمدن ، سوالات ہوں گے۔ معاشیات، ماحولیات، دستور ہند پر سوالات ہوں گے۔ اس کے لئے روزانہ اخبارات کا مطالعہ انٹرنیٹ پر جانے کی صلاح دی۔ انھوں نے کہاکہ آج امتحان آن لائن ہورہے ہیں۔ شفافیت ہوگی۔ کسی بھی سفارش سے ملازمت ملنے والی نہیں ہے اور اب جو ملازمتوں کے تقررات کا اعلامیہ سامنے آرہا ہے اس کے بعد آئندہ چالیس پچاس سال تک ملازمتوں کا ملنا مشکل ہوگا۔ تقررات کیلئے سخت ترین مقابلہ ہے اسی لئے بلا تھکان محنت کی ضرورت ہوگی۔ انھوں نے کہاکہ محض اپنی زندگی گزار لینا کارنامہ نہیں ہوگا اوروں کی مدد اوروں کا سہارا بننے کا جذبہ ہونا چاہئے۔ آپ کو اپنی زندگی سنوارنے کے ساتھ ہی ساتھ ملت اسلامیہ کی خدمت کا موقع مل رہا ہے اور یہ موقع ملازمت کے اعلیٰ عہدوں پر فائز ہونے سے ہوگا یا پھر اعلیٰ تعلیم کے حصول پر یا پھر اقتدار کی اونچی سطح کی کرسی حاصل ہونے پر ملے گا۔ اس کے لئے اپنے آپ کو اہل بنانا ہوگا۔ خود اعتمادی پیدا کریں اور اللہ تعالیٰ سے دعا کریں تو یقینا کامیابی ضرور حاصل ہوگی۔ احساس کمتری سے نکلنا ہوگا۔ انھوں نے کہاکہ آندھراپردیش کی جب تشکیل ہوئی تھی اس میں 43 فیصد مسلم ملازمین سرکار تھے اور آج 2 فیصد سے بھی کم ہیں پھر بھی ہم غفلت کی نیند سورہے ہیں۔ اپنے ساتھ ناانصافی کا رونا رو رہے ہیں یہ ٹھیک نہیں ہے۔ اس موقع پر شریک خواتین اور نوجوان لڑکیوں کی جانب سے مختلف سوالات کے جوابات دیئے گئے۔ اس معلوماتی بیداری پروگرام کی صدارت محمد مظفر احمد انجینئرموظف مسلم ایجوکیشنل سوسائٹی نے کی۔ تقریب کی کارروائی ظہور خالد نے چلائی۔ شہ نشین پر محمد اختر علی، شیخ ابوبکر، خالد بن شیخ صالح، افضل شاہ بیابانی اور دیگر موجود تھے۔

TOPPOPULARRECENT