Wednesday , August 23 2017
Home / شہر کی خبریں / حقوق اور ناانصافی کیخلاف عثمانیہ یونیورسٹی طلبہ کو احتجاج کا مشورہ

حقوق اور ناانصافی کیخلاف عثمانیہ یونیورسٹی طلبہ کو احتجاج کا مشورہ

کانگریس سے بھرپور تعاون کا تیقن، صدر کل ہند کانگریس سونیا گاندھی
حیدرآباد ۔ 8 اگست (سیاست نیوز) صدر کل ہند کانگریس مسز سونیا گاندھی نے اپنے حقوق اور ناانصافی کے خلاف احتجاج کرنے کا عثمانیہ یونیورسٹی کے طلبہ کو مشورہ دیا۔ کانگریس کی جانب سے مکمل تعاون کرنے کا تیقن دیا۔ دہلی میں کل راہول گاندھی سے ملاقات کرنے والے عثمانیہ یونیورسٹی کے طلبہ نے آج سونیا گاندھی کی قیامگاہ پہنچ کر ان سے ملاقات کی۔ اس موقع پر صدر تلنگانہ پردیش کانگریس کمیٹی کیپٹن اتم کمار ریڈی کانگریس کے رکن اسمبلی مسٹر سمپت کمار بھی موجود تھے۔ عثمانیہ یونیورسٹی کے طلبہ نے علحدہ تلنگانہ ریاست تشکیل دینے پر سونیا گاندھی سے اظہارتشکر کیا اور کہا کہ ٹی آر ایس حکومت طلبہ اور بیروزگار نوجوانوں کے مسائل کو نظرانداز کردیا۔ ہر سال ایک لاکھ ملازمتیں فراہم کرنے کا چیف منسٹر تلنگانہ کے سی آر نے وعدہ کیا تھا۔ تاہم آج تک ایک بھی ملازمت فراہم نہیں کی گئی اور نہ ہی عثمانیہ یونیورسٹی کے طلبہ سے ملاقات کرنے کی چیف منسٹر نے کوشش کی ہے جبکہ تلنگانہ کی تحریک میں طلبہ نے اہم رول ادا کیا ہے۔ سونیا گاندھی نے کہا کہ انہوں نے طلبہ کی تحریک اور خودکشیوں کو پیش نظر رکھتے ہوئے عوامی جذبات کا احترام کیا اور کئی مخالفتوں کے باوجود علحدہ تلنگانہ ریاست تشکیل دیا ہے۔ علحدہ تلنگانہ ریاست میں بھی طلبہ و غریب عوام کے مسائل جوں کے توں رہنے پر بے حد افسوس کا اظہار کیا ہے۔ سونیا گاندھی نے طلبہ کو ہمت نہ ہارنے حوصلے سے آگے بڑھنے کا مشورہ دیا۔ طلبہ کی جانب سے اپنے حقوق اور ناانصافی کیلئے اٹھائی جانے والی آواز کا کانگریس پارٹی مکمل ساتھ دے گی اور ساتھ ہی وہ راہول گاندھی کو عثمانیہ یونویرسٹی روانہ کریں گی تاکہ طلبہ سے تبادلہ خیال کرتے ہوئے ان کے مسائل کو حل کرانے کی حکمت عملی تیار کریں گی۔ انہوں نے نئی ریاست تلنگانہ کی ترقی میں اہم رول ادا کرنے کا طلبہ کو مشورہ دیا اور طلبہ کو تلنگانہ کا گیت سنانے کی خواہش کا اظہار کیا۔ طلبہ نے تلنگانہ کا گیت سونیا گاندھی کو سنایا۔ بعدازاں صدر تلنگانہ پردیش کانگریس کمیٹی کیپٹن اتم کمار ریڈی نے میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ طلبہ نے علحدہ تلنگانہ ریاست تشکیل دینے پر سونیا گاندھی سے اظہارتشکر کیا۔ طلبہ کے احتجاج کی کانگریس پارٹی مکمل تائید و حمایت کرے گی۔ طلبہ نے میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ حیدرآباد میں رہنے کے باوجود چیف منسٹر تلنگانہ مسٹر کے چندرشیکھر راؤ نے ہم سے ملاقات نہیں کی۔ تاہم سونیا گاندھی نے ہم سے ملاقات کی ہے اور ہمارے احتجاج میں مکمل ساتھ دینے کا تیقن دیا ہے۔ بہت جلد عثمانیہ یونیورسٹی طلبہ کی جوائنٹ ایکشن کمیٹی کا اجلاس طلب کرتے ہوئے مستقبل کی حکمت عملی تیار کی جائے گی۔

TOPPOPULARRECENT