Thursday , September 21 2017
Home / جرائم و حادثات / حقہ سنٹرس پر ساؤتھ زون پولیس کے دھاوے

حقہ سنٹرس پر ساؤتھ زون پولیس کے دھاوے

 

حیدرآباد ۔ /18 اکٹوبر  (سیاست نیوز)  پولیس نے غیرسماجی اور غیرقانونی سرگرمیوں کی روک تھام کیلئے اچانک چندرائن گٹہ بارکس اور اطراف و اکناف کے علاقوں میں حقہ سنٹرس پر دھاوے کئے ۔ یہاں سے کئی نوجوانوں کو حراست میں لے لیا گیا ۔ ڈپٹی کمشنر پولیس ساؤتھ زون مسٹر ای ستیہ نارائنا کی زیرقیادت 25 مسلح ٹیموں نے رات دیر گئے بارکس علاقہ میں 11 حقہ سنٹرس پر دھاوے کئے جو قانون کی خلاف ورزی کرتے ہوئے کم عمر نوجوانوں کو حقہ نوشی کرنے کیلئے رات دیر گئے تک اپنا کاروبار چلارہے تھے ۔ ڈی سی پی نے اس لاپرواہی میں ملوث ہونے والے انسپکٹر چندرائن گٹہ اور ایڈیشنل انسپکٹر چندرائن گٹہ کے خلاف کارروائی کرتے ہوئے انہیں چارج میمو جاری کیا ۔ ساؤتھ زون پولیس نے اچانک کارروائی کرتے ہوئے یابا حقہ پارلر ، کنگس حقہ پارلر ، پرنس حقہ پارلر ، النہدی حقہ پارلر ، مندی ہوٹل ، کراؤن حقہ پارلر ، علاء الدین حقہ پارلر اور اسنوکر سنٹر گلمی ، فرینڈس ، رئیل عربین ، نمرا اور E-20 حقہ سنٹرس اور اسنوکر پارلرس پر دھاوے کئے جہاں سے 230 کم عمر نوجوانوں کو حراست میں لے لیا جو حقہ نوشی میں ملوث پائے گئے ۔ ہائیکورٹ کے احکامات کے بموجب حقہ سنٹرس کو رات 11 بجے کے بعد کاروبار چلانے کی اجازت نہیں ہے اور ان حقہ سنٹرس میں 18 سال سے کم عمر نوجوانوں کا داخلہ ممنوع ہے ۔ لیکن ان احکامات کی کھلی خلاف ورزی کی جارہی تھی جس پر پولیس نے یہ کارروائی کرتے ہوئے نوجوانوں کو حراست میں لے لیا اور انہیں پولیس اسٹیشن منتقل کرتے ہوئے ان کے والدین کو طلب کیا اور بعد از کونسلنگ انہیں رہا کردیا گیا ۔ پولیس کی اس کارروائی کے دوران گھوڑوں کے اصطبل پر بھی دھاوے کئے گئے اور گھوڑوں کے مالکین کو بھی انتباہ دیا گیا کہ وہ اپنے گھوڑے صرف شادی بارات کے استعمال کیلئے کرایہ پر دیں اور گھوڑ سواری کیلئے نوجوانوں کو کرایہ پر نہ دیں ۔  پولیس کو اس بات کا علم ہوا ہے کہ چندرائن گٹہ میں بعض نوجوانوں گھوڑسواری کے شوق میں ملوث ہوتے ہوئے علاقے کے لڑکیوں اور خواتین کو ہراساں کررہے ہیں ۔ ڈی سی پی ساؤتھ زون مسٹر ستیہ نارائنا نے یہ انتباہ دیا ہے کہ قانون کی خلاف ورزی کرنے والے اسنوکر پارلرس اور حقہ سنٹرس مالکین کے خلاف سخت کارروائی کی جائے گی کیونکہ نوجوان نسل کو برائی کی طرف راغب کرنے میں یہ لوگ اہم رول ادا کررہے ہیں ۔ مسٹر ستیہ نارائنا نے بتایا کہ مذکورہ کاروبار میں لاپرواہی میں ملوث ہونے والے پولیس عہدیداروں کے خلاف بھی کارروائی کی جائے گی ۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT