Monday , August 21 2017
Home / دنیا / حوثی باغیوں کی انسانی حقوق کی پامالی

حوثی باغیوں کی انسانی حقوق کی پامالی

اقوام متحدہ نوٹ لے ، یمنی وزیر خارجہ کا بانکی مون کو مکتوب
کویت ۔ 4 جون ۔(سیاست ڈاٹ کام) یمن کی حکومت نے اقوام متحدہ پر زور دیا ہے کہ وہ تعز شہر میں حوثی باغیوں اور علی صالح ملیشیا کے ہاتھوں انسانی حقوق کی سنگین پامالیوں، بچوں اور معصوم شہریوں کے قتل عام کا سختی سے نوٹس لے۔’العربیہ‘ کے مطابق کویت میں امن مذاکرات میں سرگرم یمنی سرکاری وفد کے سربراہ اور وزیر خارجہ عبدالملک المخلافی نے اقوام متحدہ کے سکریٹری جنرل بان کی مون کوایک مکتوب ارسال کیا ہے جس میں ان سے مطالبہ کیا گیا ہے کہ وہ تعز میں حوثی باغیوں کے ہاتھوں ہونے والی انسانی حقوق کی پامالیوں پر فوری رد عمل ظاہر کرتے ہوئے ان جرائم کا نوٹس لیں۔ مکتوب میں تعز میں حوثی باغیوں کے تازہ حملوں میں تین خواتین اور ایک بچی سمیت 11 افراد کی ہلاکت 41 افراد کے زخمی ہونے کی تفصیلات سے بھی آگاہ کیا گیا ہے۔ عبدالملک المخلافی نے اپنے مکتوب میں اقوام متحدہ کے سکریٹری جنرل سے مطالبہ کیا کہ یمن میں حوثی باغیوں کی جانب سے شہریوں پرحملوں کا معاملہ فوری طورپر سلامتی کونسل میں اٹھایا جائے۔ انہوں نے مطالبہ کیا کہ عالمی برادری حوثی اور علی صالح ملیشیا کو شہری آبادیوں، بازاروں، اسپتالوں، اسکولوں اور پناہ گزین کیمپوں پر گولہ باری سے باز رکھے۔ انہوں نے کہا کہ حوثیوں کی جانب سے ملک میں جاری وحشیانہ کارروائیاں کویت کی میزبانی میں جاری امن مذاکرات کو تباہ کرنے کی سازش ہیں۔ یمنی وزیر خارجہ نے تعز میں حوثی باغیوں کے ہاتھوں ہونے والی انسانی حقوق کی پامالیوں کے بارے میں یو این امن مندوب اسماعیل والد الشیخ احمد کو بھی آگاہ کیا اور ان پر واضح کیا کہ اس طرح کی کارروائیاں امن بات چیت کو متاثر کرنے کا موجب بن سکتی ہیں۔

TOPPOPULARRECENT