Thursday , October 19 2017
Home / شہر کی خبریں / حکومت ،عوامی مسائل پر جواب دہی سے قاصر ، عوام کے ہر ایک پیسہ کا حساب لیا جائے گا

حکومت ،عوامی مسائل پر جواب دہی سے قاصر ، عوام کے ہر ایک پیسہ کا حساب لیا جائے گا

ٹی آر ایس ایم پی سمن کے الزامات بے بنیاد ، چیرمین ٹی جے اے سی پروفیسر کودنڈا رام کا ردعمل
حیدرآباد۔9نومبر(سیاست نیوز) چیرمن تلنگانہ جوائنٹ ایکشن کمیٹی پروفیسر کودنڈرام نے حکومت تلنگانہ پر الزام عائد کرتے ہوئے کہاکہ اپنی خامیو ں او رکوتاہیوںکود ور کرنے کے بجائے حکومت کے ذمہ داران عوام کی فلاح وبہبود کے لئے کام کرنے والوں پر بے بنیاد الزامات عائد کررہے ہیں ۔ انہوںنے مزیدکہاکہ تلنگانہ جوائنٹ ایکشن کمیٹی ایسے بے بنیاد الزامات کو موثر اندازمیںجواب دے گی۔آج یہاں کمیٹی کے دفتر میں منعقدہ ایک پریس کانفرنس کے دوران کودانڈرام نے کہاکہ ’’ ٹی آر ایس قائدین کی زبان سے میرے خلاف جاری بیانات کے اصل محرک ‘ کو میںبتادینا چاہتا ہوں کہ کمیٹی عوام کی فلاح بہبود کے لئے کسی بھی طاقت سے ٹکرانے کو تک تیار ہے ‘ ہم کسی سے ڈرنے اور گھبرانے والے نہیں ہیں‘ ہمارا مقصد صرف تلنگانہ کی ترقی ہے اگر اس میںکوئی روکاٹ بنتا ہے ‘ اور اپنے ذاتی مفادات کی تکمیل کے لئے تلنگانہ کا استحصال کرتا ہے تو تلنگانہ جوائنٹ ایکشن کمیٹی عوام کے ایک ایک پیسے کا حساب لینے کا طریقہ بھی جانتی ہے‘‘۔ کودنڈرام نے ان پر کانگریس سربراہ سونیاگاندھی سے ملاقات کے متعلق لگائے گئے الزامات کو بے بنیاد قراردیا اور کہاکہ ہم جب بھی حکومت سے ریاست میںپسماندہ طبقات کی فلاح وبہبود کے لئے مختص کردہ بجٹ کے متعلق سوالات کرتے ہیںتوجواب دینے کے بجائے الزامات عائد کئے جاتے ہیں۔کودانڈرام نے کہاکہ کمیٹی نے الیکٹریسٹی پر ایک کتاب جاری کی جس کا جواب دینے کے بجائے ٹی آر ایس پارٹی قائدین نے ہم پر الزامات عائد کئے۔ تعلیم کے متعلق حکومت کی اقدامات پر سوال پوچھنے پر ہمیں کسی بھی سیاسی جماعت سے جوڑ کر ان کا ایجنٹ قراردیا جاتا ہے ۔ کودانڈرام نے برہم انداز میں کہاکہ اگر حکومت کے پاس ہمارے سوالوں کا جواب نہیںہے تو بے بنیاد الزمات سے گریز کرے ۔ انہوں نے کہاکہ رکن پارلیمنٹ بی سمن نے جس طرح کے الزامات ان پرعائد کئے ہیں وہ زبان سمن ہے مگر الفاظ کسی اور کے ہیں مگر ہم بھی عوامی تحریک سے جڑے لوگ ہیں ایسے الفاظ کا جواب کس طرح دیاجاتا ہے وہ اچھی طرح سے جانتے ہیں۔ کود نڈرام نے حکومت کو چاہئے کہ وہ بے بنیاد الزامات کے بجائے عوام کی فلاح وبہبود پراپنی توجہہ مبذول کرے جس کا خواب علیحدہ ریاست تلنگانہ تحریک کے دوران ہم نے عوام کو دیکھایاتھا۔ انہوں نے کہاکہ میں ایک عوامی آدمی ہوں او رعوام کو آواز کو حکمرانوں تک پہنچانا میری ذمہ داری ہے۔ کودانڈرام نے کہاکہ جن تواریخوں میں میری سونیاگاندھی سے ملاقات کے دعویٰ پیش کیاگیا ہے اس وقت میں واراناسی اور یس وی کیندرم میں جلسوں سے خطاب کررہا تھا جس کا ثبوت میںپیش کرسکتا ہوں اگر الزام لگانے والوںکے پاس کوئی ٹھوس ثبوت ہے تو عوام کے سامنے پیش کرے ۔ کودانڈرام نے کہاکہ تنقید کی بجائے ٹی آر ایس قائدین عوام کی فلاح وبہبود کے لئے کام کریںگے تو بہتر ہوگا۔ کودنڈرام نے کہاکہ حکومت ہمارے سوال کا جواب دینے کے بجائے پارٹی قائدین کی جانب سے ہم پر بے بنیاد الزامات عائد کررہی ہے ۔کودانڈرام نے حکومت سے مطالبہ کیا وہ من گھڑت او ربے بنیاد الزامات عائد کرنے کے بجائے عوامی مسائل کے حل پر اپنی ساری توجہہ مرکوز کرے ۔ کودانڈرام نے تلنگانہ جوائنٹ ایکشن کمیٹی کی جانب سے 11نومبر کو آبپاشی پراجکٹ کے نام پر بے گھر افراد کی منتھنی میں ملاقات اور 13نومبر کو ایس وی کیندرم میں صحت کے مسائل پر ایک جلسہ عام کا اعلان کیا۔انہو ں نے 30نومبر کو بے گھر افراد کے ساتھ ایک جلسہ عام حیدرآباد میںمنعقد کرنے کا بھی اعلان کیا۔سپریم کورٹ کی جانب سے پارٹی انحراف کے مسلئے پر علاقائی قانونی اداروں کو دی گئی ذمہ داریوں پر سنجیدگی سے کام کرنے کابھی مذکورہ اداروں کے ذمہ داران کو مشورہ دیا۔انہوں نے کہاکہ یہ ایک حساس مسلئے ہے جس سنجیدگی کے ساتھ کام کرنے کی ضرورت ہے اور یہ ذمہ داری اسمبلی اسپیکر اور چیرمن قانون ساز کونسل پر عائد ہوتی ہے کہ وہ کس طرح سپریم کورٹ کے احکامات کے مطابق کام کرتے ہوئے سیاسی جماعتوں سے انحراف کرنے والوں کے خلاف کاروائی کرتے ہیں۔اس موقع پر ٹی جے ای سی اسٹرینگ کمیٹی کے اراکین بھی موجود تھی۔ کودانڈرام نے اس موقع پرجے اے سی کے مجوزہ پروگراموں کا پوسٹر بھی جاری کیا۔

TOPPOPULARRECENT