Thursday , September 21 2017
Home / دنیا / حکومت جرمنی کے دھاوے، دولت اسلامیہ کیلئے ہیکنگ پر مسجد بند کردی گئی

حکومت جرمنی کے دھاوے، دولت اسلامیہ کیلئے ہیکنگ پر مسجد بند کردی گئی

برلن 17 ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) جرمن عہدیداروں نے مسلم اسوسی ایشن اور مسجد پر دھاوے کئے۔ اُن پر الزام تھا کہ وہ دولت اسلامیہ جہادی گروپ کی شام اور عراق میں تائید کررہے ہیں۔ پولیس نے جنوب مغربی اسٹٹ گارٹ نے دونوں مقامات کی تلاشی لی اور ایک نوٹس اُن کے حوالہ کی کہ مرکز نے اِس جائیداد کو ضبط کرلیا ہے۔ جرمنی کی ریاست بیڈن ورٹیمبرگ کے وزیرداخلہ رین ہولڈ بیل نے کہاکہ ہم اسوسی ایشنس کی جانب سے مذہب کی تبلیغ کے لئے تشدد کے استعمال کی تائید کو برداشت نہیں کرسکتے۔ اُنھوں نے کہاکہ دہشت گرد گروپس کے لئے عطیہ جات جمع کرنے کو بھی برداشت نہیں کیا جاسکتا۔ انھوں نے کسی گرفتاری کا کوئی تذکرہ نہیں کیا۔ تاہم الزام عائد کیاکہ بنیاد پرست مبلغین اور بنیاد پرست اسلامی علمبردار جن کا تعلق خاص طور پر مغربی بلقان کی مملکتوں سے ہے۔ کئی بار اسلامی تعلیم و ثقافتی مرکز مسک شد سہابے کا دورہ کرچکا ہے۔ تقریباً 50 طلبہ یہاں سے شام کا سفر کرچکے ہیں تاکہ لڑائی میں حصہ لے سکیں۔ کم از کم 10 افراد یہاں پر مسجد کا دورہ کرچکے تھے۔ ان میں سے تین شام میں ہلاک ہوچکے ہیں۔ اس مرکز پر ماضی میں مارچ کے مہینے میں دھاوا کیا گیا تھا اور پولیس نے کمپیوٹرس، معلومات کا ذخیرہ کرنے والے آلات، اسمارٹ فونس اور دستاویزات بطور ثبوت ضبط کئے تھے۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT