Thursday , August 17 2017
Home / Top Stories / حکومت جموں و کشمیر کو مرکز کی ممکنہ مدد کا تیقن

حکومت جموں و کشمیر کو مرکز کی ممکنہ مدد کا تیقن

وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ نے صورتحال کا جائزہ لیا ، محبوبہ مفتی سے فون پر ربط
نئی دہلی۔ 10 جولائی (سیاست ڈاٹ کام) وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ نے آج جموں و کشمیر کی صورتحال کا جائزہ لیا اور چیف منسٹر محبوبہ مفتی سے بات چیت کرتے ہوئے مرکز کی جانب سے ممکنہ مدد کا تیقن دیا۔ وزارت داخلہ کے عہدیدار نے بتایا کہ تقریباً 30 منٹ کے اس اجلاس میں وزیر داخلہ کو وادیٔ کشمیر میں برہان وانی کی ہلاکت کے بعد پیدا شدہ لا اینڈ آرڈر کی صورتحال سے واقف کرایا گیا۔ راج ناتھ سنگھ نے کل محبوبہ مفتی سے فون پر ربط قائم کرتے ہوئے مرکز کی ممکنہ مدد کا تیقن دیا تھا۔ وزیر داخلہ نے اس اجلاس میں عہدیداروں کو ہدایت دی کہ کشمیر میں پیرا ملٹری فورسیس کی فراہمی یقینی بنائی جائے اور امن کی بحالی کے لئے ریاستی حکومت کے ساتھ ممکن مدد کی جائے۔ عہدیدار نے بتایا کہ امر ناتھ یاتری جو سرینگر میں پھنسے ہوئے ہیں، انہیں یہاں سے منتقل کیا جائے گا تاکہ وہ اپنی یاترا جاری رکھ سکیں۔

جموں سے آج دوسرے دن بھی یاترا معطل رہی۔ ڈپٹی کمشنر جموں سمرن دیپ سنگھ نے بتایا کہ آج یاتریوں کا نیا بیاچ بھیجا نہیں گیا۔ وادی کشمیر میں احتیاطی اقدام کے طور پر موبائل اور انٹرنیٹ خدمات معطل ہیں۔ وزیر داخلہ نے کہا کہ امر ناتھ یاتریوں کے تحفظ کو یقینی بنانے کے لئے تمام تر ممکنہ اقدامات کئے جانے چاہئیں۔ اس کے ساتھ ساتھ کشمیری پنڈتوں کا تحفظ بھی یقینی بنایا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ حساس علاقوں میں سکیورٹی فورسیس تعینات کئے جائیں اور ضرورت پڑنے پر مزید پیرا ملٹری فورس روانہ کی جائے۔ مرکزی معتمد داخلہ راجیو مہرشی نے کہا کہ وادی میں صورتحال قابو میں ہے۔ اس اجلاس میں راجیو مہرشی کے علاوہ وزارت داخلہ، پیراملٹری فورسیس اور انٹلیجنس ایجنسیوں کے عہدیدار شریک تھے۔

TOPPOPULARRECENT