Wednesday , May 24 2017
Home / شہر کی خبریں / حکومت سے ہزار ایکڑ اراضی فراہمی پر ریلائنس کے تعلیمی ادارہ جات کا جال

حکومت سے ہزار ایکڑ اراضی فراہمی پر ریلائنس کے تعلیمی ادارہ جات کا جال

عالمی معیار برقرار رکھنے کی تلقین ، تحفظات کے بجائے میرٹ کو ترجیح ، قوانین میں ترمیم کے لیے حکومت سرگرم
حیدرآباد ۔ 8 ۔ دسمبر : ( سیاست نیوز ) : ریلائنس کمپنی نے شہر حیدرآباد کے مضافات میں حکومت کی جانب سے رعایت پر 1000 ایکڑ اراضی فراہم کرنے پر 10 ہزار کروڑ روپئے کے مصارف سے ایل کے جی تا پی جی بشمول انجینئرنگ میڈیکل کورسیس کے ساتھ عالمی معیار کا تعلیمی ادارہ قائم کرنے کا پیشکش کیا ہے ۔ ان تعلیمی اداروں میں تحفظات کے بجائے میرٹ کی اساس پر داخلے دینے کی شرط رکھی ہے ۔ ریاستی حکومت قوانین میں ترمیم کرنے میں مصروف ہوگئی ہے ۔ ملک کے تمام ریاستوں میں پسماندہ طبقات کے لیے تحفظات کا کوٹہ موجود ہے ۔ چاہے خانگی ہو یا سرکاری تعلیمی ادارے انہیں داخلوں کے دوران تحفظات پر عمل کرنا لازمی ہے تاہم ریلائنس انڈسٹری تحفظات پر عمل کرنے کے بجائے میرٹ حاصل کرنے والے طلبہ کو ذات پات مذہب سے بالاتر ہو کر داخلے دینے کا پیشکش کررہی ہے ۔ شہر حیدرآباد اور اس کے مضافاتی علاقوں میں تعلیمی اداروں کا جال پھیلا ہوا ہے ۔ جس میں ایک اور عالمی طرز کا تعلیمی ادارہ قائم ہونے جارہا ہے ۔ جس پر ریلائنس کمپنی 10 ہزار کروڑ روپئے کی سرمایہ کاری کرنے کے لیے تیار ہے ۔ اس تعلیمی ادارے میں ایک ہی مقام پر ایل کے جی تا پی جی کے تمام کورسیس بالخصوص پیشہ وارانہ انجینئرنگ ، میڈیکل ، سائنس و ٹکنالوجی کے ساتھ ، یونیورسٹی قائم کرنے کی تجویز ہے ۔ ریاستی وزیر آئی ٹی کے ٹی آر نے حال ہی میں ممبئی پہونچکر دوسرے بڑے کارپوریٹ اداروں کے ذمہ داروں کے ساتھ ریلائنس کمپنی کے انتظامیہ سے ملاقات کرتے ہوئے حیدرآباد کے علاوہ تلنگانہ میں سرمایہ کاری کرنے کی اپیل کی تھی ۔ جس پر ریلائنس کمپنی نے حیدرآباد میں ایک تعلیمی ادارہ قائم کرنے اور اس پر 10 ہزار کروڑ روپئے کی سرمایہ کاری کرنے سے اتفاق کرتے ہوئے ریاست کے موجودہ قوانین میں ترمیم کرنے پر زور دیا تھا ۔ ریاستی حکومت قوانین میں ترمیم کرتے ہوئے نیا قانون بنانے کی تیاریوں کا آغاز بھی کردیا ہے ۔ ریاستی وزیر کے ٹی آر نے چند دن قبل محکمہ تعلیم کے اعلیٰ عہدیداروں کے ساتھ اجلاس طلب کرتے ہوئے قانون سازی میں پیش آنے والے تمام مسائل اور اس کے حل پر تبادلہ خیال کیا تھا ۔ ملک کے کئی ریاستوں میں خانگی تعلیمی اداروں کے لیے علحدہ قوانین موجود ہیں ۔ آندھرا پردیش نے بھی نئی ریاست میں تعلیمی اداروں کے قیام کو یقینی بنانے کے لیے قوانین میں ترمیم کی ہے ۔ ریلائنس کمپنی نے جو تجاویز پیش کی ہے ۔ تلنگانہ حکومت اس کا جائزہ لے رہی ہے ۔ اس عالمی طرز کے تعلیمی ادارے میں اسکولس ، کالجس ، یونیورسٹی ، علحدہ علحدہ رہیں گے ۔ جس کو امریکہ کے اسٹانفورڈ یونیورسٹی کے طرز پر قائم کیا جارہا ہے ۔ ہر ایک تعلیمی ادارے کے علحدہ علحدہ بلاکس رہیں گے ۔ باوثوق ذرائع سے پتہ چلا ہے کہ ریلائنس کی تجویز پر ریاست کے مختلف محکمہ کے اعلیٰ عہدیداروں میں اختلاف رائے پایا گیا بعد ازاں اس نتیجے پر پہونچا گیا ہے کہ حکومت کی جانب سے کوئی رعایت و سہولت حاصل نہ کرنے کی صورت میں رول آف ریزرویشن پر عمل کرنے کی ضرورت نہیں ہے ۔ تاہم حکومت کی جانب سے گرانٹ کے علاوہ دوسری سہولتیں حاصل کرنے کی صورت میں تحفظات پر عمل کرنا لازمی ہے ۔ ریلائنس کمپنی نے اپنے تعلیمی ادارے میں تحفظات کے بجائے میرٹ کی اساس پر داخلے دینے کا اعلان کیا ہے جس پر ریاستی وزیر آئی ٹی کے ٹی آر نے تحفظات کے بغیر داخلے دینے کی حکمت عملی تیار کرنے کی عہدیداروں کو ہدایت دی ہے ۔۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT