Sunday , June 25 2017
Home / Top Stories / حکومت علیحدگی پسند قائدین کو بھی سکیورٹی فراہم کرنے تیار

حکومت علیحدگی پسند قائدین کو بھی سکیورٹی فراہم کرنے تیار

حزب المجاہدین کی جانب سے دھمکی کے تناظر میں چیف منسٹر محبوبہ مفتی کا بیان

سرینگر 13 مئی (سیاست ڈاٹ کام) حکومت جموں و کشمیر علیحدگی پسند قائدین کی طرف سے سکیورٹی کے لئے کوئی بھی درخواست پیش کی جاتی ہے تو غور کرے گی بشرطیکہ وہ محبوبہ مفتی حکومت سے رجوع ہوں۔ یہ بیان حزب المجاہدین کمانڈر ذاکر موسیٰ کی جانب سے دھمکی کے پیش نظر سامنے آیا ہے۔ محبوبہ مفتی نے آج ایک تقریب کے موقع پر علیحدگی پسند قائدین کو موسیٰ کی دھمکی کے تعلق سے استفسار پر اخباری نمائندوں کو بتایا کہ جب کوئی سکیورٹی حاصل کرنے کے لئے ہم سے رجوع ہوگا تو ہم اِس پر ضرور غور کریں گے۔ حزب المجاہدین کے کمانڈر نے گزشتہ روز ایک ویڈیو پیام میں دھمکی دی تھی کہ علیحدگی پسند قیادت کا صفایا کردیا جائے گا جنھوں نے کشمیر کو اِس ریاست میں شریعت کو لاگو کرنے کے مقصد سے جاری اسلامی جدوجہد کے بجائے سیاسی مسئلہ قرار دیا ہے۔ قبل ازیں چیف منسٹر نے سارے کشمیر سے آئے مختلف خاص صلاحیتوں والے بچوں سے ملاقات کی جو جموں و کشمیر اسٹیٹ اسپورٹس کونسل کے زیراہتمام اسپیشل کیمپ میں آسٹرو ٹرف پی آر سی گراؤنڈ میں جمع ہوئے تھے۔ محبوبہ مفتی نے کیمپ میں دیگر بچوں کے ساتھ بھی اپنے رابطے کا ذکر کرتے ہوئے کہاکہ بعض کھلاڑیوں کو اُن کا متعلقہ ساز و سامان مطلوب ہے اور بہتر انفراسٹرکچر بھی چاہئے جو حکومت فراہم کرے گی۔

 

پلوامہ میں جنگجوؤں کا سیکورٹی فورسز پر حملہ
سری نگر 13مئی (سیاست ڈاٹ کام) جنوبی کشمیر کے ضلع پلوامہ میں ہفتہ کے روز جنگجوؤں نے سیکورٹی فورسز کی ایک گشتی پارٹی پر حملہ کیا۔سرکاری ذرائع نے یو این آئی کو بتایا کہ جنگجوؤں نے یہاں سے 35 کلو میٹر دور ضلع پلوامہ کے سیر ترال میں فوج کی ایک گشتی پارٹی پر فائرنگ کی۔ انہوں نے بتایاکہ سیکورٹی فورسز نے جوابی کاروائی کی جس کے بعد طرفین کے مابین گولہ باری کا تبادلہ کچھ دیر تک جاری رہا۔ سرکاری ذرائع نے بتایا کہ سیکورٹی فورسز کی گشتی پارٹی پر حملے کے مرتکب جنگجوؤں کو ڈھونڈ نکالنے کے لئے علاقہ میں بڑے پیمانے پر تلاشی آپریشن شروع کیا گیا ہے۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT