Friday , August 18 2017
Home / شہر کی خبریں / حکومت نے عوام کی اُمیدوں پر پانی پھیر دیا: سی پی آئی و سی پی ایم

حکومت نے عوام کی اُمیدوں پر پانی پھیر دیا: سی پی آئی و سی پی ایم

گورنر کا خطبہ کھودا پہاڑ نکلا چوہا کے مترادف، رویندر کمار و ایس راجیا کا ردعمل
حیدرآباد 10 مارچ (سیاست نیوز) کمیونسٹ جماعتوں سی پی آئی اور سی پی ایم نے گورنر کے خطبہ کو کھودا پہاڑ نکلا چوہا کے مترادف قرار دیتے ہوئے کہاکہ حکومت نے عوام کی اُمیدوں پر پانی پھیر دیا ہے۔ سی پی آئی کے رکن اسمبلی مسٹر رویندر کمار نے کہاکہ تلنگانہ پوری طرح خشک سالی کا شکار ہے۔ گورنر کے خطبہ میں اس پر کوئی ردعمل کا اظہار نہیں کیا گیا۔ ہزاروں کسان فصلوں کو نقصانات اور ادائیگی قرض کے موقف میں نہ ہونے کی وجہ سے خودکشیاں کرچکے ہیں۔ دیہی علاقوں سے تقریباً 60 لاکھ مزدور نقل مقام کے لئے مجبور ہوگئے ہیں۔ ان کا کوئی پرسان حال نہیں ہے۔ انھوں نے کہاکہ خشک سالی سے متاثرہ منڈل کے اعلان میں تاخیر کی گئی اور ساتھ ہی مرکز پر دباؤ ڈالنے میں ٹی آر ایس حکومت ناکام ہوچکی ہے۔ 12 فیصد مسلم تحفظات اور 12 فیصد قبائیلی تحفظات کے وعدے کو عملی جامہ پہنانے میں ٹی آر ایس حکومت ناکام ہوچکی ہے۔ برقی شرحوں میں اضافہ کرنے کا فیصلہ کرتے ہوئے حکومت عوام پر مزید 2000 کروڑ روپئے کا مالی بوجھ عائد کرنے کی کوشش کررہی ہے۔ جس کی سی پی آئی مخالفت کرتی ہے اور بجٹ سیشن میں عوامی مسائل پر اپنی آواز اُٹھائے گی۔ سی پی ایم کے رکن اسمبلی مسٹر ایس راجیا نے گورنر کے خطبہ کو مایوس کن قرار دیتے ہوئے کہاکہ کے جی تا پی جی مفت تعلیم ڈبل بیڈ روم مکانات، خشک سالی، کسانوں کی خودکشی واقعات، کسانوں کی یکمشت قرضوں کی معافی، برقی شرحوں میں اضافہ کے علاوہ دوسرے اہم وعدوں کو گورنر کے خطبہ میں شامل نہ کرتے ہوئے حکومت نے تلنگانہ کے عوام کو مایوس کیا ہے۔ ترقی کے نام پر عوام کو دھوکہ دیا جارہا ہے۔ عوامی مسائل کی یکسوئی میں حکومت پوری طرح ناکام ہوگئی۔ کبھی پورے نہ ہونے والے اعلانات کرتے ہوئے عوام کو گمراہ کیا جارہا ہے جس کی ہم سخت مذمت کرتے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT