Wednesday , August 23 2017
Home / Top Stories / حکومت نے کسی صنعتکار کا ایک روپیہ بھی معاف نہیں کیا

حکومت نے کسی صنعتکار کا ایک روپیہ بھی معاف نہیں کیا

مرکز کے خلاف راہول گاندھی کے الزامات بے بنیاد ۔ وزیر فینانس ارون جیٹلی کی وضاحت
لکھنو 14 فبروری ( سیاست ڈاٹ کام ) این ڈی اے حکومت نے کسی بھی صنعتکار کا ایک پیسہ بھی معاف نہیں کیا ہے اور راہول گاندھی اس سلسلہ میں بے بنیاد الزامات عائد کر رہے ہیں۔ مرکزی وزیر فینانس ارون جیٹلی نے آج یہ بات کہی ۔ جیٹلی نے یہاں میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ راہول گاندھی اپنے جلسوں میں یہ الزام عائد کر رہے ہیں کہ مودی حکومت نے زائد از ایک لاکھ کروڑ روپئے کے بڑے صنعتکاروں کے قرضے جات معاف کردئے ہیں۔ لیکن ان کا بیان بالکل غلط ہے ۔ انہوں نے کہا کہ نریندر مودی حکومت نے اب تک کسی بھی صنعتکار کا ایک روپیہ بھی معاف نہیں کیا ہے ۔ راہول گاندھی کو اس کی مکمل اطلاع نہیں ہے ۔ در حقیقت وہ سابقہ یو پی حکومت کے خلاف بے بنیاد الزامات عائد کر رہے ہیں کیونکہ بیشتر غیر کارکرد اثاثہ جات ان کے ہیں جنہیں کانگریس زیر قیادت حکومت نے قرض دیا تھا ۔ ایک سوال کے جواب میں جیٹلی نے کہا کہ نوٹ بندی کا اترپردیش اسمبلی انتخابات سے کوئی تعلق نہیں ہے ۔ یہ فیصلہ در اصل معاشی اور سیاسی نظام کو پاک صاف بنانے حکومت کے پروگرام کا حصہ ہے ۔ اترپردیش میں سماجوادی پارٹی زیر قیادت حکومت کے اس ادعا پر کہ ریاست کو خاطر خواہ مرکزی مدد نہیں ملی جیٹلی نے کہا کہ یہ بھی غلط ہے ۔ انہوں نے کہا کہ دستوری گنجائش کے مطابق مرکزی حکومت ریاستوں کیلئے مختص جو رقم ہے

س میں ایک پیسہ بھی کم نہیں کرسکتی ۔ مرکزی حکومت جو مالیہ وصول کرتی ہے اس کا 42 فیصد حصہ ریاست کا ہوتا ہے اور اس میں ایک پیسہ بھی کم کرنے کی کوئی گنجائش نہیں ہوتی ۔ جیٹلی نے ادعا کیا کہ 2014 کے لوک سبھا انتخابات کے وقت سے یو پی میں بی جے پی کے حق میں جو لہر تھی وہ برقرار ہے اور انہیں یقین ہے کہ ان کی پارٹی بہت آسانی کے ساتھ ریاست میں اکثریت حاصل کرلے گی ۔ ریاست میں کانگریس ۔ ایس پی اتحاد کو موقع پرستانہ قرار دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ سماجوادی پارٹی کے نظریہ ساز سمجھے جانے والے رام منوہر لوہیا نے خود کانگریس ہٹاؤ ۔ دیش بچاؤ کا نعرہ دیا تھا لیکن مخالف کانگریس تحریک کو اترپردیش میں سماجودای پارٹی نے مفاہمت کے ذریعہ نقصان پہونچایا ہے ۔ جیٹلی نے کہا کہ محض اس اتحاد کیلئے نظریات کو پس پشت ڈال دیا گیا ہے ۔ اکھیلیش یادو کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے انہوں نے کہا کہ سماجوادی پارٹی نے سیاست میں گینگسٹر راج کی روایت شروع کی ہے اور پارٹی نے ایک بار پھر اسی روایت کو زندہ کرنے کی کوشش کی ہے حالانکہ کچھ وقت کیلئے اسے ترک کیا گیا تھا ۔ جیٹلی نے کہا کہ جب یو پی میں بی جے پی کو اقتدار ملے گا تو مرکز کی مودی حکومت کے ساتھ ریاست میں تبدیلی لائی جائیگی ۔

TOPPOPULARRECENT