Tuesday , September 19 2017
Home / شہر کی خبریں / حکومت پر گریٹر حیدرآباد کی ترقی کو نظر انداز کرنے کا الزام

حکومت پر گریٹر حیدرآباد کی ترقی کو نظر انداز کرنے کا الزام

چیف منسٹر وعدوں کی تکمیل میں ناکام ، تلنگانہ تلگو دیشم کی تنقید
حیدرآباد ۔ 5 ۔ جنوری : ( سیاست نیوز ) : تلنگانہ تلگو دیشم پارٹی نے ٹی آر ایس زیر قیادت حکومت پر گریٹر حیدرآباد کی ترقی کو نظر انداز کرنے کا الزام عائد کیا ۔ اور کہا کہ شہر حیدرآباد کو سلم علاقوں سے پاک شہر بنانے کا اعلان کرنے و تیقن دینے والے چیف منسٹر مسٹر کے چندر شیکھر راؤ ، حیدرآباد کی ترقی پر کوئی توجہ نہیں دے رہے ہیں ۔ آج یہاں گرٹر حیدرآباد تلگو دیشم پارٹی کے زیر اہتمام گریٹر حیدرآباد میونسپل کارپوریشن حدود میں غریب عوام کے لیے ڈبل بیڈ روم مکانات کو فی الفور تعمیر کروانے ، اہل افراد کے لیے جائیداد ٹیکس معاف کرنے کا مطالبہ کرتے ہوئے پارٹی قائدین و کارکنوں کی کثیر تعداد نے جی ایچ ایم سی آفس کے روبرو بڑے پیمانے پر دھرنا پروگرام منظم کیا ۔ اس موقعہ پر قائدین نے کہا کہ جی ایچ ایم سی کے گذشتہ عرصہ کے دوران منعقدہ انتخابات کے موقعہ پر خود چیف منسٹر کے علاوہ وزیر بلدی نظم و نسق مسٹر کے ٹی راما راؤ نے گریٹر حیدرآباد میونسپل کارپوریشن حدود میں ایک لاکھ ڈبل بیڈ روم مکانات تعمیر کر کے فراہم کرنے کا وعدہ کیا تھا ۔ لیکن اب تک کم از کم ڈبل بیڈ روم مکانات کے لیے سنگ بنیاد بھی نہیں رکھا گیا ۔ تلگو دیشم قائدین نے حکومت اور ٹی آر ایس قائدین کو اپنی سخت تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ چیف منسٹر اور ان کے کابینی رفقاء صرف زبانی جمع خرچ کرنے کی باتیں کر کے عوامی تائید حاصل کرنے اور انہیں ( عوام کو ) غلط باور کروانے کے عادی ہوچکے ہیں اور کسی بھی اعلان یا تیقنات پر عمل آوری ممکن ہی نہیں ہے ۔ تلگو دیشم پارٹی قائدین نے مزید کہا کہ اگر ٹی آر ایس زیر قیادت حکومت عوام سے کیے ہوئے وعدے اور دئیے گئے تیقنات کو پورا نہ کرنے کی صورت میں تلنگانہ حکومت کو عوامی برہمی و غیض و غضب جیسے حالات کا سامنا کرنے پر مجبور ہونا پڑے گا ۔ جی ایچ ایم سی آفس کے روبرو احتجاج کرنے والے تلگو دیشم پارٹی قائدین و کارکنوں کو پولیس نے حراست میں لیتے ہوئے تمام احتجاجیوں کو پولیس اسٹیشن منتقل کیا ۔۔

TOPPOPULARRECENT