Thursday , June 29 2017
Home / شہر کی خبریں / حکومت ڈبل بیڈ روم مکانات کی تعمیر میں ناکام : کانگریس

حکومت ڈبل بیڈ روم مکانات کی تعمیر میں ناکام : کانگریس

صرف چیف منسٹر ، فرزند اور بھانجہ کے حلقوں میں ترقیاتی کام انجام دئیے جارہے ہیں
حیدرآباد۔/27ڈسمبر، ( سیاست نیوز) کانگریس پارٹی نے الزام عائد کیا کہ حکومت عوام سے کئے گئے وعدہ کے مطابق ڈبل بیڈ روم مکانات کی تعمیر میں ناکام ہوچکی ہے۔ پارٹی نے چیف منسٹر اور ان کے فرزند اور بھانجہ کے حلقوں تک مکانات کی تعمیر اور ترقیاتی کاموں کو محدود کرنے کی شکایت کی اور کہا کہ دیگر اسمبلی حلقوں کو ترقیاتی سرگرمیوں سے محروم رکھا گیا ہے۔ کانگریس کی رکن ڈی کے ارونا نے امکنہ اسکیم پر مباحث میں حصہ لیتے ہوئے کہا کہ سیاسی مقصد براری اور ووٹ حاصل کرنے کیلئے امکنہ اسکیم کا استعمال کیا جارہا ہے۔ گریٹر حیدرآباد کے انتخابات سے قبل حکومت نے ڈبل بیڈ روم اسکیم کا اعلان کیا تھا لیکن یہ اعلان آج تک پورا نہیں ہوا۔ ارونا نے کہا کہ کانگریس پارٹی کے باعث تلنگانہ ریاست حاصل ہوئی ہے اور چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ ایک سے زائد مرتبہ اس بات کا اعتراف کرچکے ہیں کہ سونیا گاندھی کے سبب تلنگانہ ریاست حاصل ہوئی ہے۔ کے سی آر نے سونیا گاندھی سے ملاقات کرتے ہوئے ارکان خاندان کے ساتھ تصویر کشی بھی کی تھی۔ انہوں نے کہا کہ کے سی آر نے کہا تھا کہ تلنگانہ عوام سونیا گاندھی کے احسان مند ہیں۔ انہوں نے کہا کہ سابق میں جو قائدین تلگودیشم اور کانگریس میں شامل تھے آج وہ ٹی آر ایس میں موجود ہیں اور وہ اپنی پرانی حکومتوں میں تلنگانہ کو انصاف دلانے میں ناکام رہے۔ انہوں نے کہا کہ مکانات کی تعمیر کے سلسلہ میں عوام کی امیدوں پر پانی پھر رہا ہے اور مایوسی پیدا ہوگئی ہے۔ ارونا نے کہا کہ کانگریس حکومت نے امکنہ اسکیم میں بے قاعدگیوں کی تحقیقات کا اعلان کیا تھا لیکن ٹی آر ایس حکومت نے ابھی تک تحقیقات کی تکمیل نہیں کی۔ انہوں نے حکومت سے مطالبہ کیا کہ ڈبل بیڈ روم مکانات کیلئے عوام سے کئے گئے وعدہ کی تکمیل کی جائے۔ ارونا نے اندراماں اور دیگر امکنہ اسکیمات میں بے قاعدگیوں کے ذمہ دار افراد کو بے نقاب کرنے کی مانگ کی۔ ارونا نے کہا کہ چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ ان کے فرزند کے ٹی راما راؤ اور بھانجے ہریش راؤ کے اسمبلی حلقوں میں مکانات کی تعمیر اور دیگر ترقیاتی کام جاری ہیں جبکہ دیگر حلقے اس سے محروم ہیں۔ انہوں نے ہریش راؤ سے کہا کہ گزشتہ 10 برسوں میں سدی پیٹ میں جو بھی ترقیاتی کام انجام دیئے گئے وہ کانگریس حکومت کی دین ہیں۔ انہوں نے کہا کہ صرف چند مخصوص علاقوںمیں مکانات کی تعمیر کے ذریعہ سیاسی فائدہ اٹھانا ٹی آر ایس کا مقصد ہے۔ ارونا نے ہر موضع میں کم از کم 100 مکانات کی تعمیر کا مطالبہ کیا۔ بی جے پی کے ڈاکٹر لکشمن نے کہا کہ ڈبل بیڈ روم مکانات کے وعدہ کے سبب گریٹر انتخابات میں ٹی آر ایس کو کامیابی حاصل ہوئی۔ انہوں نے کہا کہ مرکزی حکومت کی جانب سے اسکیم میں ہر ممکنہ مدد کے باوجود مکانات کی تعمیر کی رفتار انتہائی سست ہے۔ انہوں نے کہا کہ غریب خاندان مکانات کی تعمیر کے منتظر ہیں۔ مجلس کے رکن اکبر اویسی نے کہا کہ حیدرآباد میں 1983 تا 2014  کے درمیان 35 ہزار 166 مکانات تعمیر کئے گئے ہیں اس میں مسلمانوں کی حصہ داری انتہائی کم ہے۔ انہوں نے بتایا کہ 2007 سے 2016 تک جو مکانات تعمیر ہوئے ہیں ان میں اقلیتوں کا حصہ 1.57 فیصد ہے۔ اور اقلیتوں میں مسلمانوں کا حصہ 1.36 فیصد ہے۔ انہوں نے امکنہ اسکیم میں مسلمانوں کو 12 فیصد تحفظات کا مطالبہ کیا اور کہا کہ حکومتوں نے مسلمانوں کے ساتھ ہمیشہ زبانی جمع خرچ سے کام لیا ہے۔ ٹی آر ایس کے گمپا گوردھن، تلگودیشم کے وینکٹ ویریا اور کانگریس کے وینکٹ ریڈی نے بھی مباحث میں حصہ لیا۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT