Tuesday , October 17 2017
Home / شہر کی خبریں / حکومت کی شراب پالیسی کے خلاف خواتین کا احتجاج 2 اکٹوبر کو تمام کلکٹوریٹس پر دھرنا صدر تلنگانہ تلگو دیشم مہیلا کا انتباہ

حکومت کی شراب پالیسی کے خلاف خواتین کا احتجاج 2 اکٹوبر کو تمام کلکٹوریٹس پر دھرنا صدر تلنگانہ تلگو دیشم مہیلا کا انتباہ

حیدرآباد ۔ 26 ۔ اگست : ( این ایس ایس ) : تلنگانہ تلگو دیشم مہیلا صدر بنڈارو شوبھارانی نے تلنگانہ کی ٹی آر ایس حکومت کو مشورہ دیا کہ وہ حکومت کی نئی آبکاری پالیسی کے تحت سرکاری سطح پر سستی شراب کی فروختگی کے فیصلہ سے فوری دستبرداری اختیار کریں ۔ بصورت دیگر 2 اکٹوبر کو ریاست کے تمام ضلعی کلکٹوریٹس پر احتجاجی مظاہرے کرنے کا انتباہ دیا ہے ۔ وہ آج یہاں این ٹی آر ٹرسٹ بھون میں اخباری نمائندوں سے مخاطب تھیں ۔ اس موقع پر انہوں نے چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ پر الزام عائد کیا کہ وہ یکم اکٹوبر سے سستی شراب کی فروختگی کا منصوبہ رکھتے ہیں جو کہ نامناسب بات ہے کیوں کہ اس طرح شراب کو عام کرنے سے عوام کی صحت پر منفی اثرات مرتب ہوں گے ۔ انہوں نے بتایا کہ شراب کے خلاف خواتین کی بھاری تعداد احتجاج میں شرکت اور حکومت کی پالیسی کی شدید مخالفت کریں گے ۔ بنڈارو شوبھا رانی نے بتایا کہ تلنگانہ کی 14 ماہ کی حکومت میں ریاست کی عوام نے اس بات کی توقع نہیں کی تھی کہ ایک اور تحریک کا آغاز ہوگا تاہم تحریک شروع کرنے کے لیے حکومت نے مجبور کردیا ہے ۔ انہوں نے ڈاکٹرس کے حوالے سے بتایا کہ طبی ماہرین نے اس بات کا خدشہ ظاہر کیا کہ اگر شراب کو عام کیا جائے تو سماجی برائیوں میں اضافہ کے ساتھ صحت پر مضر اثر ہوگا کیوں کہ الکوہل کا استعمال صحت کے لیے مضرت رساں ہے ۔ صدر تلنگانہ تلگو دیشم پارٹی نے بتایا کہ غیر مجاز شراب گڑمبہ کا متبادل سستی شراب کی فروختگی ہرگز نہیں ہوسکتا ۔ انہوں نے ٹی آر ایس کی رکن پارلیمنٹ کے کویتا کے اس ریمارک پر سخت تنقید کی کہ ٹی آر ایس کا ایجنڈہ ماویسٹ کا ایجنڈہ ہے ۔۔

TOPPOPULARRECENT