Friday , September 22 2017
Home / ہندوستان / حکومت کی غریب دشمن پالیسیوں پر کانگریس کا کنونشن

حکومت کی غریب دشمن پالیسیوں پر کانگریس کا کنونشن

گجرات میں کانگریس کا ریاست گیر سطح پر احتجاجی مظاہرے
نئی دہلی ۔ 5 جنوری (سیاست ڈاٹ کام) اعلیٰ مالیتی کرنسی نوٹوں کی تنسیخ کو پانچ ریاستوں میں اسمبلی انتخابات کا ایک بڑا موضوع بنانے کی کوشش کرتے ہوئے کانگریس 11 جنوری کو نئی دہلی میں ایک قومی کنونشن مودی حکومت کی غریب دشمن پالیسیوں کے خلاف منعقد کرے گی۔ پارٹی کے تمام ارکان بشمول مجلس عاملہ کے ارکان کانگریس کے مندوبین، صدور پردیش کانگریس، کانگریس کے تمام ارکان پارلیمنٹ اور تمام ریاستوں کے ارکان اسمبلی شرکت کریں گے۔ یہ کنونشن تال کھٹورا انڈور اسٹیڈیم میں منعقد کیا جائے گا جس سے نائب صدر کانگریس راہول گاندھی کے بشمول تمام سینئر کانگریس قائدین خطاب کریں گے۔ راہول مودی حکومت کی کرنسی نوٹوں کی تنسیخ کے مسئلہ پر مخالفت میں پیش پیش ہیں اور انہوں نے کئی اپوزیشن پارٹیوں کو متحد کردیا ہے۔ پارٹی کے جنرل سکریٹری جناردھن دیویدی نے تمام ارکان پارلیمنٹ، ارکان اسمبلی، صدور پردیش کانگریس اور ملک گیر سطح پر عہدیداروں کو ایک نوٹ روانہ کرتے ہوئے ان پر زور دیا ہیکہ قومی کنونشن میں شرکت کریں تاکہ بڑے پیمانے پر مودی حکومت کی غریب دشمن پالیسیوں بشمول نوٹوں کی تنسیخ جس کی وجہ سے کثیر تعداد میں عوام کو ہراسانی کا سامنا کرنا پڑا ہے، اجاگر کیا جاسکے۔ کانگریس کنونشن کے ذریعہ عوام کے مصائب کا پیغام پورے ملک کو دینا چاہتی ہے۔ راہول گاندھی کا کہنا ہیکہ یہ واحد سب سے بڑا یکطرفہ فیصلہ دنیا کی تاریخ میں تھا۔ ایک شخص نے ایک ارب 30 کروڑ عوام کی زندگیوں کو متاثر کیا۔ راہول کی ترقی کا مطالبہ کرتے ہوئے جو صدر کانگریس سونیا گاندھی کی علالت کی وجہ سے کانگریس کی قیادت سنبھالے ہوئے ہیں، ممکن ہیکہ کنونشن میں اٹھایا جائے۔ ایک دن طویل کنونشن میں ملک کے گوشہ گوشہ سے پارٹی قائدین نئی دہلی میں جمع ہوں گے۔ وزیراعظم کے شخصی کرپشن پر بھی روشنی ڈالی جائے گی۔ کل سے کانگریس قائدین پردیش کانگریس کمیٹیوں اور پارٹی کارکنوں کو مختلف ضلعی ہیڈکوارٹرس پر 6 اور 7 جنوری کو دھرنا دینے کی ہدایت دے رہے ہیں۔ اس کے بعد بلاک کی سطح پر مہیلا کانگریس کارکن 9 جنوری کو ’’خالی پردرشن‘‘ کا اہتمام کریں گی۔ اعلیٰ سطحی پارٹی قائدین کا ایک اجلاس 26 ڈسمبر کو راہول گاندھی کی صدارت میں منعقد کیا گیا تھا جس میں احتجاجی پروگرام کو قطعیت دی گئی ہے۔ احمدآباد سے موصولہ اطلاع کے بموجب کانگریس کارکنوں نے کلکٹروں کے دفاتر کے روبرو پورے گجرات میں احتجاجی مظاہرے کئے جو ووٹوں کی تنسیخ کے فیصلہ کے خلاف تھے۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT