Sunday , May 28 2017
Home / اضلاع کی خبریں / حکومت کی مہربانی! عوام پر مصیبتوں کے پہاڑ

حکومت کی مہربانی! عوام پر مصیبتوں کے پہاڑ

نرمل میں بنک عہدیداروں کا ہمدردانہ رویہ ، صارفین کو کچھ راحت
نرمل /16 نومبر ( جلیل ازہر کی رپورٹ ) ایک ہزار اور پانچ سو کے نوٹوں کے چلن کو اچانک بند کئے جانے سے عوام جن تکالیف کا سامنا کر رہے ہیں ۔ اس کو قلمبند کرنے کیلئے بھی اخباری نمائندوں کو لفظوں کو تلاش کرنا پڑ رہا ہے ۔ اچانک نوٹوں کی تبدیلی سے غریب عوام کا جینا محال ہوگیا ۔ ہرشخص اب مرکزی حکومت کے اس فیصلہ کی شدت سے مخالفت کرتے ہوئے وزیر اعظم کو شدید تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے آپس میں تبصرہ کر رہے ہیں ۔ کسی نے یہ کہا کہ لاکھوں روپئے کے سوٹ پہننے والے وزیر اعظم نے کبھی غریبوں کی تکلیف کا جائزہ نہیں لیا ۔ آج دودھ سے لیکر ترکاری کی خریدی میں مشکل مسئلہ بن گئی ہے ۔ اسٹیٹ بنک آف حیدرآباد برانچ نرمل میں نوٹوں کی تبدیلی اور کھاتہ میں رقم جمع کرانے والوں کی بڑی تعداد میں خواتین کی اکثریت بھی دیکھی گئی ۔ ایک بزرگ کھاتہ دار نے کہا کہ اقتدار کے حصول کی خاطر نریندر مودی نے ملک کے چپہ چپہ میں اچھے دنوں کی آمد کا ذکر کرتے ہوئے ملک کی جلیل القدر عہدہ حاصل کرلیا ۔ اچھے دنوں کی آمد کا ہر کوئی طبقہ منتظر تھا لیکن نوٹوں کی چلن نے قیامت برپا کردی اگر یہ اچھے دن ہے تو آنے والے دنوں میں عوام کو کن کن مصیبتوں کا سامنا ہوگا یہ سمجھ میں نہیں آرہا ہے ۔ ایک ضعیف خاتون نے کہا کہ وہ اپنی لڑکی کی شادی کیلئے رقم جمع کی تھی آج اگر نوٹوں کی تبدیلی نہیں ہوتی تو شادی تبدیل نہ ہوتی ۔ ایسے کئی ایک واقعات سامنے آرہے ہیں جن کو سننے کے بعد کلیجہ منہ کو آتا ہے ۔ دلچسپ پہلو یہ ہے کہ بنک ملازمین کا حسن سلوک دیکھتے ہوئے ہر شخص ستائش کر رہا ہے ۔ بڑے سے بڑے عہدیدار ضعیف خواتین کو تعاون کرتے ہوئے انہیں نوٹوں کی تبدیلی میں فارمس کی خانہ پری کرتے ہوئے سہولت پہونچا رہے ہیں ۔ جبکہ چیف منیجر ایس بی ایچ مسٹر پردھان دن بھر اپنی کرسی چھوڑ کر عمر رسیدہ کھاتہ داروں کو حالات سے واقف کرواتے ہوئے انہیں تعاون کرتے دیکھا گیا ۔ آئندہ دنوں میں ان نوٹوں کے نتائج کیا ہوں گے یہ تو وقت ہی بتائے گا ۔ اس لئے کہ یہ کسی ایک علاقہ کا مسئلہ نہیں سارے ملک میں غریب سڑکوں پر اترے ہیں بنک کے کھلتے ہی بڑی بڑی قطاروں میں اپنی اپنی باری کا انتظار کرتے ہوئے کئی خواتین کی گود میں چھوٹے بچوں کو سنھالتے ہوئے ان پر جو گذر رہی ہے اس کا اندازہ حکومت نہیں کرسکتی لیکن یہ پہلا موقع ہے کہ ہر طبقہ مرکزی حکومت کے اس فیصلہ پر کافی برہم ہے جبکہ آج بنک میں ایک تبدیلی یہ دیکھنے کو ملی کہ عوام اور کھاتہ داروں میں زیادہ تعداد رقم جمع کرنے والوں کی تھی جبکہ حکومت کی جانب سے چار ہزار پانچ سو تک نوٹوں کی تبدیلی کیلئے بہت کم لوگ نظر آئے ۔ تصویر میں کھاتہ داروں کی سہولت کیلئے ایس بی ایچ نرمل کے چیف منیجر خود اپنے چیامبر سے باہر آکر عام کرسی پر بیٹھتے ہوئے کھاتہ داروں کی مدد کر رہے تھے ۔ بنک کا عملہ صبح 9 بجے سے  شام تک اپنے فرائض انتہائی صبر و تحمل سے نبھا رہے ہیں ۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT