Friday , August 18 2017
Home / شہر کی خبریں / حیدرآباد رئیل اسٹیٹ میں پھر سے بہار آگئی

حیدرآباد رئیل اسٹیٹ میں پھر سے بہار آگئی

سیاسی استحکام کی وجہ سے رہائشی عمارتوں کی مانگ بڑھ گئی
حیدرآباد ۔ 8 ۔ جولائی : ( سیاست نیوز ) : حیدرآباد میں رئیل اسٹیٹ میں پھر سے بہار آگئی ہے ۔ گذشتہ چند سال سے رئیل اسٹیٹ کاروبار ، آندھرا پردیش کی تقسیم کے بشمول مختلف وجوہات سے بے جان ہو کر رہ گیا تھا ۔ اب آہستہ آہستہ رئیل اسٹیٹ میں نئی جان پڑ رہی ہے ۔ رہائشی اور آفس مارکٹس کی تعمیر کو 2016 کے ابتدائی چھ ماہ میں کافی فروغ ہوا ہے ۔ گلوبل پراپرٹی کنسلٹنسی فرم نائٹ فرینک نے یہ رپورٹ دی ہے ۔ اس رپورٹ میں کہا گیا کہ حیدرآباد سٹی کے رہائشی مارکٹ میں نئے پراجکٹس کی شروعات میں چار فیصد کا فروغ ہوا اور جنوری تا جون کے دوران جائیدادوں کی فروخت میں 8 فیصد کا اضافہ ہوا ہے ۔ اس سے ظاہر ہورہا ہے کہ رئیل اسٹیٹ کا پھر سے عروج ہورہا ہے ۔ اس عرصہ میں تقریبا 7 ہزار سات سو نئے یونٹس کی فروخت ہوئی ۔ 5 ہزار سات سو یونٹس شروع کئے گئے ۔ اس کے علاوہ قیمتوں میں 3 فیصد اضافہ ہوا ہے ۔ حیدرآباد کا مغربی علاقہ جو آئی ٹی ہب پر مشتمل ہے تعمیر اور فروخت کے اعتبار سے بدستور سرفہرست ہے ۔ نارسنگی اور پپل گوڑہ کے رہائشی تعمیرات میں ترجیح حاصل ہے ۔ آفس عمارتوں کی تعمیر کو کافی فروغ حاصل ہوا ہے ۔ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ ملک کے رئیل اسٹیٹ نقشہ میں حیدرآباد کا تابناک مقام ہے کیوں کہ دوسرے شہروں کی بہ نسبت حیدرآباد اس شعبہ میں آگے چل رہا ہے ۔ سیاسی استحکام کی وجہ سے رہائشی عمارتوں کی مانگ بڑھ گئی ہے ۔ آفس عمارتوں کی تعمیر کو بھی فروغ حاصل ہوا ہے ۔ جیسے جیسے طلب بڑھ رہی ہے تعمیری سرگرمیوں کو فروغ حاصل ہورہا ہے ۔۔

TOPPOPULARRECENT