Thursday , August 17 2017
Home / کھیل کی خبریں / حیدرآباد سن رائیزر کا آج دہلی سے دلچسپ مقابلہ متوقع

حیدرآباد سن رائیزر کا آج دہلی سے دلچسپ مقابلہ متوقع

حیدرآباد۔18اپریل (سیاست ڈاٹ کام ) پنجاب کے خلاف سنسنی خیز کامیابی کے ذریعہ دوبارہ فتح کی سمت گامزن دفاعی چمپئن سن رائزرس حیدرآباد کی ٹیم  کل یہاں  اپنے گھریلو میدان پر دہلی ڈیئر ڈیولس کے خلاف فتح کے سلسلہ کو برقرار رکھنے کے ارادے سے اترے گی۔ حیدرآباد نے اپنا پچھلا مقابلہ بڑے دلچسپ انداز میں پنجاب کو پانچ رن سے شکست دے کر جیتا تھا۔ اس میچ میں آخری وقت تک دونوں ٹیموں کے درمیان مقابلہ فیصلہ کن بنا ہوا تھا ۔ چمپئن ڈیوڈ وارنر کی حیدرآباد کا اب تک ٹورنمنٹ میں سفرنشیب و فراز سے بھرپور نظر آیا اور وہ پانچ میچوں میں تین فتوحات اور دو ناکامیوں کے ساتھ تیسرے نمبر پر ہے جبکہ گزشتہ سیزن کی ناکام ٹیم  دہلی  اب تک چار میچوں میں دو کامیابی اور دو شکست کے ساتھ چوتھے نمبر پر ہے ۔کے کے آر کے خلاف اپنے میدان پر شکست سے جہاں دہلی کے حوصلے کمزور ہوئے ہیں تو وہیں حیدرآباد نے اپنے گزشتہ میچ میں کے کے آر سے قریبی شکست برداشت کرنے کے بعد پنجاب سے نزدیکی ناکامی ٹالتے ہوئے دلچسپ جیت درج کی تھی اور وہ پھر سے گھریلو میدان پر اسی کارکردگی کو دہرانے کو تیار نظر آرہی ہے ۔ پنجاب کے خلاف مین آف دی میچ رہے بھونیشور کمار نے جس طرح آخر تک اپنی ٹیم کو میچ میں بنائے رکھا وہ قابل تعریف رہا۔ اننگز میں محض 19 رنز دے کر سب سے زیادہ پانچ وکٹ لینے والے بھونیشور اب تک حیدرآباد کے لئے پانچ میچوں میں5.40 کی اوسط سے 15 وکٹ لے چکے ہیں اور سب سے زیادہ کامیاب بولر ہیں۔ ویسے بھی حیدرآباد کی ٹیم باقی ٹیموں سے الگ اپنی بہترین بولنگ لائن اپ کے لئے جانی جاتی ہے جس میں بھونیشور، افغانستان کے راشد خان، تجربہ کار فاسٹ بولر آشیش نہرا، سدھارتھ کول اور دیپک ہڈا جیسے کھلاڑی ہیں اور حیدرآباد کے لئے یہ اس کی سب سے بڑی طاقت ہے ۔وارنر کی ٹیم کو اپنے گھریلو میدان پر جس طرح مقامی شائقین کی بے پناہ حمایت مل رہی ہے وہ بھی اس کے لئے کافی مثبت بات ہے ۔ ساتھ ہی بیٹسمینوں میں ٹیم کے پاس کپتان وارنر، شکھر دھون، آل راؤنڈر یوراج سنگھ، ھینرکس جیسے اچھے کھلاڑی ہیں، لیکن گزشتہ میچوں میں دھون اور یوراج نے جس طرح بیٹنگ میں مایوس کیا ہے اس نے کپتان پر دباؤ بڑھا دیا ہے ۔کپتان وارنر ٹیم کے بہترین اسکورر ہیں اور پنجاب کے خلاف ان کی70 رن کی اننگز نے ٹیم کو قابل چیلنج اسکور تک پہنچایا۔انہوں نے اب تک پانچ میچوں میں دو نصف سنچریوں سمیت235  رنز بنائے ہیں جبکہ دھون رنوں کے حساب سے دوسرے اور ھینرکس تیسرے نمبر پر ہیں۔ مڈل آرڈر میں یوراج کی بیٹنگ ناکامی کا دور جاری ہے جو گزشتہ میچ میں صفر پر لوٹ گئے ۔ یوراج نے اب تک 0،26،05 اور62  رنز کی اننگز کھیلی ہیں۔مڈل آرڈر میں اگرچہ نمن اوجھا اور دیپک رنوں کے لحاظ سے حیدرآباد کو مدد کر سکتے ہیں لیکن یقیناً چمپئن ٹیم کو اپنی لے برقرار رکھنے کیلئے بیٹنگ میں بڑے پیمانے پر بہتری کی ضرورت ہے ۔ دوسری طرف ظہیرخان کی دہلی کے لئے ٹورنمنٹ میں اتار چڑھاو کا دور جاری ہے لیکن ٹیم اچھی کارکردگی کے باوجود کئی مرتبہ کامیابی درج کرنے میں ناکام ہو ئی ہے اور اس کے لئے ڈیتھ اووروں میں مایوس کن بولنگ اس کی وجہ ہے وہیں گزشتہ میچوں میں کھلاڑیوں نے آخری وقت تک جدوجہد نہیں دکھائی ۔دہلی کے لئے پچھلے میچ میں کھلاڑیوں کی کارکردگی تسلی بخش رہی لیکن بولر168 کے اسکور کا بھی دفاع نہیں کر سکے ۔ دہلی میں سنجو سامسن، سیم بلنگس اور رشبھ پنت کے طور پر زبردست بیٹسمینس ہیں جو متاثر کر رہے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT