Tuesday , September 26 2017
Home / شہر کی خبریں / حیدرآباد میٹرو ریل پراجیکٹ کی تکمیل میں ایک سال تاخیر

حیدرآباد میٹرو ریل پراجیکٹ کی تکمیل میں ایک سال تاخیر

جون 2018 میں تکمیل پانے کا امکان ۔ایم ڈی حیدرآباد میٹرو ریل این وی ایس ریڈی
حیدرآباد 4 مارچ ( سیاست نیوز ) شہر میں 72 کیلومیٹر طویل حیدرآباد میٹرو ریل جاریہ سال جون کی بجائے جون 2018 میں شروع ہوسکتی ہے ۔ تاہم اس کی قطعی تاریخ کا حکومت تلنگانہ کی جانب سے بعد میں اعلان کیا جائیگا ۔ حیدرآباد میٹرو ریل لمیٹیڈ کے مینیجنگ ڈائرکٹر این وی ایس ریڈی نے آج یہ بات بتائی ۔ اولی فنٹا اور دوسرے مقام پر حیدرآباد میٹرو ریل اوور برج کے جرایہ کاموں کا معائنہ کرنے کے بعد مسٹر این وی ایس ریڈی نے کہا کہ خانگی عوامی شراکت کے ماڈل کے طور پر تعمیر کیا جا رہا حیدرآباد میٹرو ریل پراجیکٹ جاریہ سال جون میںمکمل ہوجانا چاہئیتھا تاہم مختلف وجوہات کی بنا پر اس میں تاخیر ہوئی ہے اور ان وجوہات کو ایل اینڈ ٹی کی اکاؤنٹ بک میں واضح کیا جائیگا ۔ انہوں نے کہا کہ ہم ایل اینڈ ٹی کو ایک سال کی توسیع دے رہے ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ میٹرو ریل راہداریاںدونوں شہروں حیدرآباد و سکندرآباد میں8 مقامات پر ساؤتھ سنٹرل ریلوے کی پٹریوں کو کراس کر رہی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ چونکہ ملک پیٹ ‘ الو گڈاباوی ‘ چلکل گوڑہ ‘ اولی فنٹا اور بھوئی گوڑہ میں ریلوے کی پٹریاں پہلے ہی برجس پر سے گذر رہی ہیں ایسے میں میٹرو ریل کو دوہری اونچائی والے برجس کے اوپر سے گذارا جائیگا ۔ انہوں نے کہا کہ بھرت نگر ‘ چلکل گوڑہ اور الو گڈاباوی کے مقامات پر تین روڈ اوور برجس مکمل ہوگئے ہیںاور مابقی پانچ روڈ اوور برجس تعمیر کے اختتامی مراحل میں ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اس پراجیکٹ کے دوران بڑے چیلنجس اور رکاوٹوں کا سامنا کرنا پڑا ہے اور حصول اراضیات بھی مشکل مسئلہ تھا ۔ انہوںنے بتایا کہ اس پراجیکٹ کے دوران 35 فیصد انجینئرنگ چیلنجس درپیش رہے جبکہ 65 فیصد چیلنجس سماجی رہے ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ جوآٹھ روڈ اوور برجس تعمیر کئے جا رہے ہیں ان میں اولی فنٹا برج سکندرآباد ریلوے اسٹیشن کے قریب ہے اور اس کی تعمیر ہی سب سے بڑا چیلنج اور انجینئرنگ مسئلہ ہے ۔ انہوں نے کہا کہ یہ برج 60 فیٹ کی بلندی پر بنایا جا رہا ہے اور اس میں 272 فیٹ تک کوئی درمیانی سپورٹ نہیں ہے ۔ انہوں نے کہا کہ سارے برج کو جس کا وزن 1100 ٹن ہے خصوصی اعلی گریڈ والے اسٹیل سے تیار کیا جا رہا ہے اور اسے ایک فیکٹری میں تیار اور اسمبل کیا جا رہا ہے ۔ یہ کام غازی آباد کے قریب ہو رہا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT