Wednesday , August 23 2017
Home / شہر کی خبریں / حیدرآباد میں آلودگی سے پاک بیاٹری سے چلنے والے آٹوز

حیدرآباد میں آلودگی سے پاک بیاٹری سے چلنے والے آٹوز

جلد ہی شہر کی سڑکوں پر لانے کا منصوبہ،حکومت کی جانب سے سبسیڈی اور ٹیکس کی رعایت
حیدرآباد6جولائی(سیاست نیوز)حیدرآباد میں آلودگی سے پاک بیٹری سے چلنے والے آٹوز تیار کئے گئے ہیں جن کو جلد ہی شہر کی سڑکوں پر لانے کا منصوبہ ہے ۔ بی ٹیک کے دو طلبہ نے یہ کارنامہ انجام دیا ہے ۔ بھرت اور مدھوکر نامی ان دونوں دوستوں نے آلودگی سے پاک گاڑیوں کی تیاری کا تجزیہ کرنے کے بعد ان آٹوز کو تیار کیا جس کیلئے پدا عنبرپیٹ علاقہ میں کمپنی قائم کی ۔ یہ آٹو کم خرچ میں تیار کیا جاتا ہے اور تین گھنٹے کی چارجنگ پر 120 کلو میٹر مائلیج دیتا ہے ۔ ان طلبہ نے بتایا کہ جلد ہی ان آٹوز کو شمسی توانائی سے چلنے والے آٹوز میں تبدیل کرنے پر بھی غور کیا جارہا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ایک لاکھ 20ہزار روپئے میں ایک آٹو تیار کیا جاتا ہے اس آٹو کو سوئیکار نام دیا گیا ہے ۔ انہوں نے پاسنجر آٹو اور آٹو ٹرالی بھی تیار کئے ہیں ۔ لبہ نے کہا کہ ایڈپٹ موٹرس کے نام سے ایک ادارہ قائم کیا گیا ہے ۔

ریاستی حکومت ان آٹوز کی تیاری کیلئے سبسڈی اور ٹیکس کی رعایت دے رہی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اس سلسلہ میں تلنگانہ کے چیف سکریٹری اور ٹرانسپورٹ سکریٹری سے ملاقات کی جنہوں نے اس پراجیکٹ پر مسرت کا اظہار کرتے ہوئے اس سلسلہ میں تعاون کی یقین دہانی کرائی ۔ اس آٹو کو اسٹارٹ کرنے پر آواز بھی نہیں آتی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کی اجازت سے جلد ہی ان آٹوز کو چارمینار کے قریب دستیاب رکھا جائے گا ۔ ان طلبہ کو ایسے آٹوز کی تیاری کے کئی آرڈرس بھی ملے ہیں ۔ حیدرآباد سنٹرل یونیورسٹی سے سو آٹوز اور بنگلورو ایر پورٹ سے بھی آٹوز کی تیاری کے انہیں یہ آرڈرس ملے ہیں ۔ ان طلبہ کا ماننا ہے کہ بی ٹیک کی تکمیل کے بعد روزگار حاصل کرنے کے بجائے روزگار کے مواقع پیدا کرنے پر ان کا یقین تھا اور آلودگی سے پاک آٹوز کی تیاری ان کا ایک خواب تھا ۔ حکومت کی طرف سے اس کی کافی ستائش کی گئی ہے۔

TOPPOPULARRECENT