Saturday , June 24 2017
Home / شہر کی خبریں / حیدرآباد میں اراضی پر قبضہ کے معاملہ میں رول پر دیپک ریڈی معطل

حیدرآباد میں اراضی پر قبضہ کے معاملہ میں رول پر دیپک ریڈی معطل

حیدرآباد 15 جون (یواین آئی ) آندھراپردیش کی حکمران جماعت تلگودیشم نے حیدرآباد میں اراضی پر قبضہ کے معاملہ میں رول کے سلسلہ میں تاڑی پتری کے پارٹی لیڈر جے سی دیواکر ریڈی کے داماد دیپک ریڈی کو پارٹی سے معطل کردیا۔دیپک کو پہلے ہی تلنگانہ پولیس نے گرفتار کیا تھا اور ان کی معطلی ، ان کی گرفتاری کے چار ہفتوں کے بعد سامنے آئی ہے ۔حکمران تلگودیشم کے خود کے وزیر سی آئنا پاتروڈو کی جانب سے ویزاگ میں میڈیا سے بات کرنے کے دوران الزام لگایا گیا تھا کہ کئی سینکڑوں ایکڑ اراضی پرقبضہ کے سلسلہ میں تلگودیشم کے ایک وزیر اور ارکان اسمبلی کا رول ہے ۔ان کے اس بیان کے بعد وزیراعلی این چندرا بابو نائیڈو نے پارٹی کی کوارڈی نیشن کمیٹی کی میٹنگ طلب کی اور تین رکنی کمیٹی تشکیل دی تاکہ اس مسئلہ کو حل کیا جاسکے ۔بعد ازاں انہوں نے آئنا پاتروڈو اور جی سرینواس سے اپیل کی کہ وہ عوام میں اپنی رائے کا اظہار نہ کریں۔واضح رہے کہ آئنا پاتروڈو نے بالواسطہ طورپراپنے حریف جی سرینواس کو نشانہ بنایا تھا ۔ اس کے بعد ریونیو کے افسروں نے اس بات کااعتراف کیا تھا کہ ویزاگ کے اطراف کے 233مواضعات کی اراضی کے ریکارڈس میں اُلٹ پھیر کی گئی ہے ۔گزشتہ روز جی سرینواس نے وزیراعلی کو خط لکھتے ہوئے آئنا پاتروڈو پرنکتہ چینی کی تھی اور الزام لگایا تھا کہ انہوں نے پارٹی کونقصان پہنچایا ہے ۔اتفاق کی بات یہ ہے کہ انہوں نے اس خط پر دستخط نہیں کئے ۔اس کا نوٹ لیتے ہوئے چندرابابو نے ایک میٹنگ وجئے واڑہ میں طلب کی ۔اسی دوران اصل اپوزیشن وائی ایس آرکانگریس کی لیڈر روجا نے اراضی معاملتوں کی سی بی آئی جانچ کروانے کامطالبہ کیا ہے ۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT