Tuesday , September 26 2017
Home / شہر کی خبریں / حیدرآباد میں بیرون ریاست کے گداگروں کی سرگرمیاں عروج پر

حیدرآباد میں بیرون ریاست کے گداگروں کی سرگرمیاں عروج پر

تجارتی مراکز نشانہ ، توجہ ہٹا کر سرقہ کرنے میں مہارت ، پولیس کو توجہ دینے کی ضرورت
حیدرآباد۔23مارچ(سیاست نیوز) شہر میں بیرون ریاست گداگروں کی ٹولیاں ایک مرتبہ دوبارہ سرگرم ہوچکی ہیں اور یہ ٹولیاں اب چوراہوں پر گداگری کے بجائے تجارتی مراکز کو نشانہ بنانے لگی ہیں اور ان کا نشانہ وہ تجارتی مراکز ہیں جو شوروم کی شکل کے ہیں اور ان تجارتی مراکز میں گاہک کو اندر تک پہنچنے کی اجازت حاصل ہوتی ہے۔ بیرون ریاست بالخصوص راجستھان ‘ اترپردیش اور شمالی ریاستوں سے تعلق رکھنے والی ان گداگروں کی ٹولیوں میں خواتین کے گروہ شامل ہیں جو تین تا چار کے گروپ میں دکان میں داخل ہوتے ہوئے مالک و ملازم کی توجہ ہٹاتے ہوئے دکان میں موجود اشیاء کا بہ آسانی سرقہ کرلیتی ہیں۔ سارقوں کی یہ ٹولیاں جو گداگروں کے بھیس میں نظر آرہی ہیں وہ بھیک مانگتے ہوئے پرس اور دکانوں میں سیل فون و بہ آسانی غائب کی جانے والی اشیاء کا سرقہ کرتے ہوئے رفو چکر ہونے لگی ہیں۔ مجلس بلدیہ عظیم تر حیدرآباد کی جانب سے شہر حیدرآباد کو گداگروں سے پاک بنانے کی مہم چلائی جاتی رہی ہے لیکن اس مہم کے دوران جن گداگروں کو بازآبادکاری کے مقامات پر منتقل کیا جاتا ہے وہ تو وہیں رہتے ہیں لیکن ان کی جگہ نئے گروہ سرگرم ہونے لگے ہیں لیکن حالیہ دنوں میں پرانے شہر کے مصروف ترین تجارتی وسیاحتی علاقہ چارمینارکے اطراف گداگروں کے بھیس میں یہ سارقوں کی ٹولیاں نظر آنے لگی ہیں۔گذشتہ دنوں چارمینار کے علاقہ میں موجود ایک الکٹرانک شاپ سے سارقوں کے اس گروپ نے جو فون کی چوری کی ہے اس کا ویڈیو جو سی سی ٹی وی میں قید ہوا ہے وہ سوشل میڈیا پر گشت کر رہا ہے جس میں تین سارق خاتون جو بظاہر گداگر نظر آرہی ہیں اور سیدھے دکان کے اندر پہنچتی ہیں اورمالک انہیں باہر نکلنے کی ترغیب دیتا رہتا ہے کہ اسی دوران گداگر نما سارق مالک دکان کا موبائیل غائب کردیتی ہے۔ شہر میں اس طرح کے دھوکہ بازوں اور فرضی گداگروں کے علاوہ پیشہ ور گداگروں کی بڑھتی تعداد لمحۂ فکر ہے کیونکہ ان کی اس حرکات کے سبب عوام کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ گذشتہ ہفتہ پیش آئے اس واقعہ کے بعد شاہ علی بنڈہ سے چارمینار کی سڑک پر پرس اڑا لیجانے اور رقم چھین لئے جانے کے واقعات بھی پیش آنے کی اطلاعات ہیں لیکن معمولی رقومات ہونے کے سبب متاثرین پولیس سے رجوع نہیں ہوئے ہیں لیکن اس طرح کے واقعات کے تدارک کیلئے ضروری ہے کہ بیرون ریاست گداگروں کی ٹولیوں کو فوری واپس روانہ مرنے کے اقدمات کئے جانے چاہئے ۔

TOPPOPULARRECENT