Tuesday , October 24 2017
Home / شہر کی خبریں / حیدرآباد میں تلبیس شخصی اور نقل نویسی کے واقعات

حیدرآباد میں تلبیس شخصی اور نقل نویسی کے واقعات

ایس ایس سی امتحانات پر خفیہ ایجنسیوں کی نظر سے متعلق ’’سیاست‘‘ کا انکشاف درست
حیدرآباد۔23مارچ (سیاست نیوز) پرانے شہر میں خانگی اسکولوں میں موجود امتحانی مراکز میں جملہ 7تلبیس شخصی اور 6نقل نویسی کے واقعات پیش آئے ہیں اور ان واقعات کے خلاف کاروائی کا آغاز کیا جاچکا ہے۔ ایس ایس سی امتحانات کے دوران امتحانی مراکز میں جاری دھاندلیوں کو روکنے کیلئے محکمہ تعلیم اور بورڈ آف سیکنڈری ایجوکیشن کے اقدامات میں خفیہ محکموں کی خدمات کے حصول کا فیصلہ کیا گیا اور ان اطلاعات پر کی گئی کاروائی کے دوران 7ایسے نوجوانوں کو حراست میں لیا گیا جو دوسروں کے امتحانات تحریر کر رہے تھے۔ ڈسٹرکٹ ایجوکیشنل آفیسر حیدرآبادمسٹر رمیش کی جانب سے فراہم کردہ تفصیلات کے مطابق حیدرآباد میں 7تلبیس شخصی کے واقعات پیش آئے ہیں جن میں جواہر ہائی اسکول یاقوت پورہ میں 2‘ صلاح الدین ہائی اسکول یاقوت پورہ میں 2‘ آئی زیڈ ایم سجادیہ گرلز ہائی اسکول یاقوت پورہ میں 1 اورصلالہ ہائی اسکول بارکس میں 2تلبیس شخصی کا واقعہ پیش آیا ہے اور جواہر ہائی اسکول میں 6نقل نویسی کے واقعات پیش آئے ہیں۔ مسٹر رمیش نے بتایا کہ حیدرآباد میں 337امتحانی مراکز قائم کئے گئے ہیں جن کی نگرانی کیلئے 133فلائنگ اسکواڈ تشکیل دیئے گئے ہیں اور آج ایک دن میں اسکواڈ نے 19امتحانی مراکز کے دورے کئے ہیں اسی طرح خود ڈسٹرکٹ ایجوکیشنل آفیسر نے 8امتحانی مراکز کا معائنہ کیا ہے۔ انہوں نے مزید بتایا کہ ساؤتھ زون ٹاسک فورس نے بڑے پیمانے پر کاروائی کرتے ہوئے تلبیس شخصی کیلئے درمیانی فرد کا رول ادا کرنے والے شخص اور ایس ایس سی امیدوارو ںکی جگہ بیٹھ کر امتحان تحریر کرنے والے نوجوانو ں کو حراست میں لیتے ہوئے متعلقہ پولیس اسٹیشنوں کے حوالہ کردیا ۔ بتایاجاتا ہے کہ پرانے شہر کے مزید منڈلوں میں اس طرح کی سرگرمیوں پر خصوصی نظر رکھی گئی ہے اور ان اسکولوں کے درمیانی افراد کی تلاش جاری ہے جو تلبیس شخصی اور نقل نویسی کی معاملتیں کروا رہے ہیں۔ محکمہ تعلیم کے عہدیداروں کا کہنا ہے کہ جن امتحانی مراکز میں تلبیس شخصی کے واقعات پیش آئے ہیں ان کے ذمہ داروں کے ملوث ہونے کا جائزہ لیا جا رہا ہے تاکہ ان کے خلاف بھی مؤثر کاروائی کی جاسکے۔ جواہر ہائی اسکول میں 6نقل نویسی اور 2تلبیس شخصی کے واقعات اور صلاح الدین ہائی اسکول میں 2تلبیس شخصی کے واقعا ت کا خصوصی نوٹ لیا جا رہا کیونکہ دونوں اسکول رشتہ داروں کے بتائے جاتے ہیں اسی طرح صلالہ ہائی اسکول میں 2تلبیس شخصی کے واقعات کے علاوہ آئی زیڈ ایم سجادیہ گرلز ہائی اسکول میں پیش آئے 1واقعہ کی بھی تفصیلی تحقیقات کی جا رہی ہے ۔ اسی طرح بہادر پورہ‘ نامپلی‘ آصف نگر ‘ گولکنڈہ کے علاوہ سعید آباد منڈل کے کئی امتحانی مراکز کے متعلق بھی اطلاعات موصول ہوئی ہیںاور بعض معاملتوں میں محکمہ تعلیم کے عہدیداروں کے ملوث ہونے کا بھی شبہ ہے جہاں کسی بھی وقت کاروائی کی جا سکتی ہے۔باوثوق ذرائع کے مطابق شہر میں امتحانی مراکز کے متعلق موصول اطلاعات پر کی جانے والی کاروائیوں میں مزید کچھ درمیانی افراد پر نگاہیں مرکوز ہیں اور ان کے خلاف شواہد اکٹھا کئے جا نے لگے ہیں۔ٹاسک فورس نے جو کارروائی کی ہے اس کاروائی کے دوران حراست میں لئے گئے نوجوانو ںکو متعلقہ پولیس اسٹیشن کے حوالہ کردیا گیا جہاں مقدمہ درج کرتے ہوئے تحقیقات جاری ہیں۔

TOPPOPULARRECENT