Wednesday , October 18 2017
Home / Top Stories / حیدرآباد ہائیکورٹ کی تقسیم اور پراجکٹس کیلئے فنڈز کی فراہمی کی درخواست

حیدرآباد ہائیکورٹ کی تقسیم اور پراجکٹس کیلئے فنڈز کی فراہمی کی درخواست

وزیراعظم نریندر مودی سے چیف منسٹر کے سی آر کی بات چیت ‘ متعدد مرکزی وزراء سے ملاقات اور تبادلہ خیال
نئی دہلی18جولائی(سیاست ڈاٹ کام)وزیر اعظم نریندر مودی اور بعض مرکزی وزرا سے تلنگانہ کے وزیر اعلی کے چندر شیکھر راؤ نے نئی دہلی میں ملاقات کی ۔ وزیر اعظم سے ملاقات سے قبل وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ ‘ وزیر خزانہ ارون جیٹلی ‘ وزیر فروغ انسانی وسائل پرکاش جاوڈیکر سے بھی چندرشیکھر راو نے ملاقات کی ۔ وزیر اعظم سے ملاقات کے دوران انہوں نے تلنگانہ کیلئے مرکز سے تعاون کی خواہش کی ۔انہوں نے ریاست میں شجرکاری میں اضافہ کے لیے حکومت کی جانب سے شروع کردہ ہریتا ہارم پروگرام کی تفصیلات سے بھی وزیراعظم کو واقف کروایا او راس کے لیے مالی تعاون کی خواہش کی۔چندرشیکھر راو نے ہرتیا ہارم کے ساتھ ساتھ مشن بھاگیرتھااور دوسرے پروگرامو ں کے سلسلہ میں بھی مرکز سے تعاون مانگا۔وزیراعلی نے وزیراعظم کو ریاست کے دورہ کی بھی دعوت دی تاکہ وہ ریاستی حکومت کی جانب سے شروع کردہ باوقار اسکیمات اور پروگراموں کا مشاہدہ کیا جاسکے اور اس کی تفصیلات سے واقف ہوسکیں۔انہوں نے دونوں تلگو ریاستوں کے مشترکہ حیدرآباد ہائی کورٹ کی تقسیم، اس مسئلہ پر تلنگانہ کے وکلا کے احتجاج اور ججس کی معطلی جیسے امور پر بھی توجہ دلائی ۔ انہوں نے تلنگانہ کیلئے علحدہ ہائی کورٹ کے قیام کی بھی خواہش کی ۔ ساتھ ہی ریاست کے آبپاشی پروجیکٹس’ مشن کاکتیہ ‘ مشن بھگیرتا پروگراموں کیلئے مرکز سے مالی امداد دینے کی بھی خواہش کی ۔ ارون جیٹلی سے ملاقات کے دوران انہوں نے ایف آر بی ایم کے ذریعہ ریاست کو قرض منظور کرنے کی خواہش کی ۔مرکزی وزیر آبی وسائل اوما بھارتی سے بھی انہو ں نے ملاقات کی اور ریاست کے آبپاشی پروجیکٹس کے ساتھ ساتھ تلنگانہ کو منظور آبپاشی پروجیکٹس کو قومی درجہ دینے ‘ پردھان منتری کریشی سیچائی یوجنا کے تحت 11اے آئی بی پی پروجیکٹس کو گرانٹس کی منظوری ‘ نبارڈ سے قرض کی منظوری ‘ مشن کاکتیہ پروگرام کے دوسرے مرحلہ کے سلسلہ میں تعاون کی بھی خواہش کی ۔مسٹر راو نے پرکاش جاڈویکر سے ملاقات کے دوران تلنگانہ میں آئی آئی ایم اور دیگر اعلی تعلیمی اداروں کے قیام کے ساتھ ساتھ ریاست کی یونیورسٹیز کو یو جی سی سے فنڈس جاری کرنے کی بھی خواہش کی ۔کے سی آر نے اپنے دورہ کو اطمینان بخش بتایا۔

TOPPOPULARRECENT