Thursday , August 24 2017
Home / شہر کی خبریں / حیدرآباد ہائی کورٹ کی تقسیم کا جلد فیصلہ ضروری

حیدرآباد ہائی کورٹ کی تقسیم کا جلد فیصلہ ضروری

مرکزی وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ سے ٹی آر ایس ایم پی کویتا کی ملاقات
حیدرآباد  /31 جولائی ( این ایس ایس ) ٹی آر ایس کے رکن پارلیمنٹ اور چیف منسٹر کے چندرا شیکھر راؤ کی دختر کویتا نے آج مرکزی وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ پر زور دیا کہ وہ حیدرآباد ہائی کورٹ کی تقسیم کا فیصلہ جلد سے جلد کریں ۔ اس تقسیم کے عمل کو تعطل کا شکار بنایا گیا ہے ۔ دونوں ریاستوں کے درمیان عہدیداروں کی تقسیم بھی زیر التواء ہے ۔ کویتا نے نئی دہلی میں وزیر داخلہ سے ملاقات کرتے ہوئے ان پر زور دیا کہ وہ فوری اس مسئلہ کو حل کریں بعد ازاں اخباری نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے انہوں نے مرکز پر الزام عائد کیا کہ وہ تلنگانہ ریاست اور اس کے عوام کے مسائل کو نظر انداز کر رہا ہے ۔ انہوں نے الزام عائد کیا کہ چیف منسٹر آندھراپردیش این چندرا بابو نائیڈو ان دو اہم مسائل کی راہ میں رکاوٹ بن رہے ہیں ۔ ہم نے پارلیمنٹ میں خاموش احتجاج بھی کیا ہے تاکہ ہائی کورٹ کی تقسیم عمل میں بھی لائی جائے اور عہدیداروں کی بھی تقسیم پوری ہوسکے ۔ اگرچیکہ مرکز نے ان دو اہم مسائل پر چندرا بابو نائیڈو سے رائے طلب کی ہے اس کے باوجود وہ خاموشی اختیار کئے ہوئے ہیں ۔ انہوں نے مطالبہ کیا کہ مرکز کابینہ کی جانب سے صدر جمہوریہ پرنب مکرجی سے درخواست کی جاتی ہے تو اس مسئلہ کی دوستانہ یکسوئی ممکن ہے ۔ کویتا نے اس تشویش کا اظہار کیا کہ تلنگانہ اسٹاف کو حیدرآباد میں آندھراپردیش کے اسٹاف کے طور پر رہنے سے بھاری نقصان ہو رہا ہے ۔ تلنگانہ حکومت نے برقی ملازمین کو اصولوں کے مطابق راحت دی ہے ۔ قبل ازیں پارلیمنٹ میں ٹی آر ایس کے ارکان پارلیمنٹ نے احتجاج کرتے ہوئے ہائی کورٹ کی تقسیم اور عہدیداروں کی تقسیم کو فوری حل کرنے کا مطالبہ کیا تھا ۔

TOPPOPULARRECENT