Saturday , September 23 2017
Home / شہر کی خبریں / حیدرآباد یونیورسٹی میں سکون کی بحالی کیلئے وائس چانسلر کی اپیل

حیدرآباد یونیورسٹی میں سکون کی بحالی کیلئے وائس چانسلر کی اپیل

حیدرآباد ۔ 26 ۔ مارچ : ( سیاست نیوز ) : حیدرآباد سنٹرل یونیورسٹی میں مسلسل بدامنی اور گڑبڑ کی صورتحال کے پیش نظر یونیورسٹی کے وائس چانسلر اپا راؤ پوڈیلے نے طلباء اور سرپرستوں سے اپیل کی کہ یونیورسٹی میں سکون بحال کرنے اور تعلیمی سرگرمیوں کو شروع کرنے میں تعاون کریں ۔ اپا راؤ نے آج حیدرآباد سنٹرل یونیورسٹی طلباء کے والدین کے نام جاری کردہ اپنی اپیل میں کہا کہ یونیورسٹی کا نظم و نسق آپ سے تعاون کا متمنی ہے ۔ اور آپ سے درخواست کرتا ہے کہ براہ کرم آپ اپنے بچوں کو مشورہ دیں کہ وہ کسی قسم کی سرگرمی سے گریز کریں جس سے اس پروقار یونیورسٹی کا امیج متاثر ہوگا ۔ جہاں سے وہ گریجویٹ بننے کی خواہش رکھتے ہیں ۔ اپا راؤ نے کہا کہ یونیورسٹی میں ہمیشہ اظہار خیال کی آزادی دی گئی ہے اور اختلاف رائے کے باوجود ہر ایک کو اپنی بات پیش کرنے کی اجازت ہے ۔ ناراضگیوں کی کبھی بھی حوصلہ افزائی نہیں کی گئی ۔ یونیورسٹی میں بلا شبہ کسی قسم کی بدامنی اور دیگر ڈسپلن شکنی کی حرکتیں نہیں ہوتی تھیں ۔ انہوں نے 22 مارچ کو وائس چانسلر کے لاج میں توڑ پھوڑ کا حوالہ دیا ۔ جس کو مبینہ طور پر طلباء کے ایک گروپ نے کیا تھا جب انہوں نے اپنی رخصت پوری ہونے کے بعد یونیورسٹی میں فرائض کو دوبارہ شروع کیا تو انہیں روکنے کی کوشش کی گئی ۔ 17 جنوری کو ریسرچ اسکالر روہت ویمولا کی خود کشی کے بعد سے طلباء کا گروپ احتجاج کررہا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ یونیورسٹی نے ایک ایسا میکانزم بنایا ہے جس کی مدد سے نظم و نسق کے تمام شعبوں سے تعلق رکھنے والی شکایات کا ازالہ کیا جاتا ہے ۔ وائس چانسلر نے مزید کہا کہ ہم آپ سے درخواست کرتے ہیں کہ براہ کرم آپ اپنے بچوں سے مل کر ان کی حوصلہ افزائی کرتے ہوئے یونیورسٹی کے بنائے گئے میکانزم کے مطابق اپنی شکایات کی یکسوئی کرلیں ۔ آج انہیں یونیورسٹی میں امن بحال کرنے کی ضرورت ہے ۔ طلباء بے خوف و خطر اپنے متعلقہ سربراہوں سے ملاقات کریں اور کسی بھی قسم کی شکایات اور مسئلہ سے متعلق واقف کروائیں ۔ ہم والدین کو دوبارہ تیقن دیتے ہیں کہ یہ یونیورسٹی ہمیشہ ان طلباء کے لیے ہے اور ان کی ضرورتوں کی تکمیل کیلئے اپنی ذمہ داریوں کو بروے کار لائے گی ۔یونیورسٹی کے وقار کو بحال کرنا طلباء اور سرپرستوں کی ذمہ داری ہے۔

TOPPOPULARRECENT