Sunday , August 20 2017
Home / شہر کی خبریں / حیدرآباد ۔ وجئے واڑہ قومی شاہراہ پر ٹول گیٹس سے مشکلات

حیدرآباد ۔ وجئے واڑہ قومی شاہراہ پر ٹول گیٹس سے مشکلات

ای ٹولنگ سسٹم پر غور ، مرکزی وزیر ٹرانسپورٹ نتن گڈکری کا بیان
حیدرآباد ۔ 17 ۔ فروری : ( سیاست نیوز) : ریاست تلنگانہ کے ٹول گیٹس بالخصوص حیدرآباد ۔ وجئے واڑہ قومی شاہراہ پر واقع ٹول گیٹ پر گاڑیوں کی تعداد میں اضافہ کی وجہ سے گاڑی مالکین کو کئی ایک مشکلات و مسائل سے دوچار ہونا پڑرہا ہے لیکن آئندہ دنوں میں یہ تمام مشکلات و مسائل بھی پیش نہ آنے کے لیے موثر انداز میں فنی طریقہ کار کو متعارف کرنے کے اقدامات کیے جائیں گے ۔ حیدرآباد ۔ وجئے واڑہ قومی شاہراہ پر واقع متعدد ٹول گیٹس پر ہمیشہ اکثر و بیشتر کئی کیلو میٹرس طویل فاصلہ تک ٹول گیٹ پر رقم کی وصولی میں ہونے والی تاخیر کے نتیجہ میں گاڑیوں کی قطاروں میں اضافہ ہوجاتا ہے اور ان گاڑیوں کے طویل فاصلہ تک رک جانے کی وجہ سے گاڑیوں کا ڈیزل یا پٹرول ضائع ہوتا ہے اور وقت بھی کافی خراب ہوجاتا ہے ۔ باوثوق ذرائع کے مطابق بتایا جاتا ہے کہ نہ صرف ریاست تلنگانہ کے مختلف ٹول گیٹس بالخصوص حیدرآباد وجئے واڑہ قومی شاہراہ پر واقع ٹول گیٹس پر اس طرح کی صورتحال پائے جانے کا نوٹ لیا گیا اور سمجھا جارہا ہے کہ جاریہ سال ماہ اپریل تک ملک کے مختلف مقامات پر پائے جانے والے زائد از 360 ٹول گیٹس کے پاس کسی تاخیر کے بغیر گاڑیوں سے ٹول ٹیکس وصول کرنے کے طریقہ کار کو یقینی بنانے کے لیے مرکزی وزارت ٹرانسپورٹ نے ای ٹولنگ نظام کو متعارف کرنے کے اقدامات کئے جارہے ہیں ۔ مرکزی وزیر ٹرانسپورٹ مسٹر نتن گڈکری نے یہ بات بتائی اور کہا کہ اگر اس پر موثر عمل آوری ہونے کی صورت میں گاڑیوں کو ٹول گیٹ کے پاس ٹہرنے کی ہرگز ضرورت نہیں پڑے گی ۔ بتایا جاتا ہے کہ گاڑیوں کے سامنے کے حصہ پر آر ایف آئی ڈی ٹیاگ (RFID TAG) کے ذریعہ گاڑی ٹول گیٹ کے قریب پہونچتے ہی مکمل ٹول گیٹ فیس کی رقم منہا ( کٹ ) ہوجاتی ہے اور اس کے لیے پہلے ہی سے ری چارج کروانے گارڈز کے ذریعہ ہی یہ طریقہ کار و سہولت ممکن ہوسکے گی ۔ مزید بتایا جاتا ہے کہ الیکٹرانک ٹول کلکشن ( ای ٹی سی ) چپس ، پری پیڈ سسٹم ری فلنگ کے لیے سابق میں ہی آئی سی آئی سی آئی بینک ، ایکسیس بینک ، مرکزی روڈ ٹرانسپورٹ و مرکزی وزارت قومی ہائی ویز کے ساتھ معاہدات طئے پاچکے ہیں ۔ لیکن اس طریقہ کار کے لیے کون کونسے بینکس عمل آوری کے لیے تیار ہوں گے اس کی ابھی کوئی مصدقہ اطلاع نہیں ہے ۔ بتایا جاتا ہے کہ ملک بھر میں فی الوقت 96 ہزار کیلو میٹر فاصلہ تک قومی شاہراہیں پائی جاتی ہیں اور آئندہ تین ماہ میں قومی شاہراہوں کا فاصلہ 1.52 لاکھ کیلو میٹر تک توسیع دینے کا مرکزی وزارت روڈ ٹرانسپورٹ نے اپنی کوششوں کا آغاز کردیا ہے ۔۔

TOPPOPULARRECENT