Saturday , September 23 2017
Home / شہر کی خبریں / حیدرآباد میں ڈینگو کی وباء میں تیزی سے اضافہ،صفائی اور کچرے کی نکاسی میں بلدیہ کی لاپرواہی

حیدرآباد میں ڈینگو کی وباء میں تیزی سے اضافہ،صفائی اور کچرے کی نکاسی میں بلدیہ کی لاپرواہی

حیدرآباد /9 اکتوبر (سیاست نیوز) شہر حیدرآباد میں ڈینگو کی وباء تیزی سے پھیلتی جا رہی ہے، لیکن اس پر قابو پانے کے لئے کوئی منظم اقدامات ہوتے نظر نہیں آرہے ہیں۔ بلدی عہدہ دار صفائی اور کچرے کی نکاسی پر توجہ دینے کی بجائے دیگر امور میں مصروف نظر آرہے ہیں اور شہر میں جابجا کچرے کے انبار دکھائی دے رہے ہیں۔ دونوں شہروں کے کئی دوا خانوں میں شدید کھانسی، تیز بخار اور نزلہ کی شکایت کے ساتھ مریض رجوع ہو رہے ہیں۔ بیشتر مریضوں کی حالت انتہائی ناگفتہ بہ بتائی جا رہی ہے۔ سرکاری دوا خانوں بالخصوص عثمانیہ دوا خانہ اور گاندھی ہاسپٹل سے رجوع ہونے والے مریضوں کی تعداد میں بھی بتدریج اضافہ ہوتا جا رہا ہے۔ خانگی دوا خانوں میں بھی بڑی تعداد میں مریض علاج کے لئے رجوع ہو رہے ہیں۔ بلدی عہدہ داروں کی جانب سے کچرے کی عدم نکاسی اور صفائی کے انتظامات پر توجہ نہ دیئے جانے کے سبب شہر کے بیشتر محلہ جات کی حالت انتہائی ابتر ہوچکی ہے۔ متعدد مرتبہ شکایت کے باوجود بلدی عہدہ داروں کی جانب سے عملی اقدامات نہ کئے جانے پر عوام میں شدید برہمی پائی جاتی ہے۔ جی ایچ ایم سی نے سابق میں سوائن فلو اور ڈینگو جیسی وباؤں سے نمٹنے کے لئے باضابطہ شعور بیداری مہم کا آغاز کیا تھا اور گھر گھر مہم چلاتے ہوئے عوام کو ان امراض سے بچنے کے لئے کی جانے والی احتیاطی تدابیر سے واقف کروایا جاتا تھا، لیکن شہر میں فی الحال کئی اموات کے باوجود بھی بلدی عہدہ داروں کی جانب سے کسی قسم کی شعور بیداری مہم کے اثرات نظر نہیں آرہے ہیں، بلکہ بلدی عہدہ دار اس مسئلہ کو نظرانداز کرنے کا رویہ اپنائے ہوئے ہیں۔ شہری انتظامیہ اور بلدیہ کی جانب سے فی الفور اقدامات کے ذریعہ اگر ان وبائی امراض سے نمٹنا شروع نہیں کیا جاتا ہے تو ایسی صورت میں ڈینگو جیسے وبائی امراض مزید پھیل سکتے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT