Sunday , June 25 2017
Home / شہر کی خبریں / حیدرآباد و سکندرآباد میں مچھروں کی کثرت سے عوام پریشان

حیدرآباد و سکندرآباد میں مچھروں کی کثرت سے عوام پریشان

مچھرکش ادویات کے چھڑکاؤ میں لاپرواہی، بلدیہ سے بروقت کچرے کی نکاسی بے فیض ثابت
حیدرآباد۔12فروری(سیاست نیوز) شہر حیدرآباد میں بلدیہ کی جانب سے صفائی کے انتظامات کے متعلق متعدد اعلانات کئے جارہے ہیں لیکن دونوں شہروں میں مچھروں کی کثرت نے عوام کوپریشانیوں میں مبتلاء کر رکھا ہے۔ شہر میں مچھر کش ادویات کے چھڑکاؤ میں برتی جانے والی غفلت کے سبب پیدا شدہ صورتحال سے شہر کے کئی محلہ جات متاثر ہیں اور دواخانے آباد ہوتے جا رہے ہیں کیونکہ دونوں شہر وں میں مچھروں کے سبب وبائی امراض میںاضافہ دیکھا جا رہا ہے۔ پرانے شہر کے علاقوں میں بھی مچھروں کی کثرت کے سبب عوام میں شدید بے چینی پائی جاتی ہے ۔ حیدرآباد میں ٹولی چوکی کے علاوہ اطراف کے علاقوں میں مچھروں کی کثرت کی شکایت کی جاتی تھی لیکن اب یہی صورتحال شہر کے بیشتر علاقوں کی بنی ہوئی ہے لیکن ان سب حالات کے باوجود مچھر کش ادویات کے عدم چھڑکاؤ کے سبب عوام میں بلدیہ کے متعلق شدید ناراضگی پائی جاتی ہے۔ شہر میں مچھر کش ادویات کے چھڑکاؤ کے متعلق کمشنر مجلس بلدیہ عظیم تر حیدرآبادڈاکٹر بی جناردھن ریڈی نے اجلاس میں باضابطہ یہ کہہ چکے ہیں کہ بلدیہ کی جانب سے جو مچھر کش ادویات کا چھڑکاؤ کیا جاتا ہے وہ مچھروں سے زیادہ انسانی صحت کے لئے مضر ثابت ہورہا ہے اور ان ادویات سے مچھروں کا خاتمہ نہیں ہو پا رہا ہے بلکہ یہ ادویات مچھروں کو کچھ وقت کیلئے صرف بے ہوش کر رہی ہیں۔پرانے شہر کے علاقوں تالاب کٹہ‘ نشیمن نگر‘ کالا پتھر‘ تاڑبن‘ مغلپورہ‘ شاہ علی بنڈہ‘ خلوت‘ جہاں نما‘ فلک نما‘ بندلہ گوڑہ کے علاوہ دیگر علاقوں میں مچھروں کی کثرت کو دور کرنے کیلئے فی الفور اقدامات کی ضرورت محسوس کی جا رہی ہے لیکن بلدی عہدیدار اس بات کی نشاندہی سے بھی قاصر ہیں کہ پرانے شہر کے کن مقامات پر مچھروں کی افزائش ہو رہی ہے کیونکہ مچھروں کی کثرت کے خاتمہ کیلئے مچھروں کی افزائش کے مقامات کی صفائی ناگزیر ہوتی ہے۔ عہدیداروں کا کہنا ہے کہ ممکنہ حد تک مچھروں کے خاتمہ کیلئے مچھر کش ادویات کا استعمال کیا جا رہا ہے لیکن اس کے باوجود مچھروں کی کثرت کی شکایت کو دورکرنے کیلئے یہ ضروری ہے کہ افزائش کے مقامات کی نشاندہی کے ذریعہ ان مقامات پر مچھر کش ادویات کا چھڑکاؤ ممکن بنایا جائے۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT