Tuesday , May 30 2017
Home / شہر کی خبریں / حیدرآباد کی ترقی کے اقدامات پر وائیٹ پیپر جاری کرنے کا مطالبہ

حیدرآباد کی ترقی کے اقدامات پر وائیٹ پیپر جاری کرنے کا مطالبہ

تلنگانہ حکومت پر عوام کو سبز باغ دکھانے کا الزام ، محمد علی شبیر کا بیان
حیدرآباد۔5فروری(سیاست نیوز) حکومت مجلس بلدیہ عظیم تر حیدرآباد کے حدود میں جاری ترقیاتی کاموں کے متعلق وائیٹ پیپر جاری کرتے ہوئے عوام کو واقف کروائے کہ شہر حیدرآباد کی ترقی کے لئے حکومت کی جانب سے کیا اقدامات کئے جا رہے ہیں اور اب تک کئے گئے اعلانات میں کتنے اعلانات پر عمل آوری کو ممکن بنایا جا چکا ہے۔ قائد اپوزیشن تلنگانہ قانون ساز کونسل جناب محمد علی شبیر نے یہ بات کہی۔ انہوں نے بتایا کہ حکومت کی جانب سے عوام کو گمراہ کرتے ہوئے انہیں سبز باغ دکھائے گئے اور 150جی ایچ ایم سی نشستوں میں 99نشستوں پر کامیابی حاصل کرنے کے باوجود کوئی ترقیاتی کام نہیں کئے جا رہے ہیں جو کہ شہریان حیدرآباد سے دھوکہ کے مترادف ہے۔ جناب محمد علی شبیر نے بتایا کہ جی ایچ ایم سی انتخابات میں تلنگانہ راشٹر سمیتی کی جانب سے 60سے زائد وعدے کئے گئے لیکن ان میں ایک پر بھی مؤثر عمل آوری نہیں کی جا رہی ہے جس سے حکومت کی ناکامی ثابت ہوتی ہے۔ قائد اپوزیشن نے کہا کہ ڈبل بیڈ روم مکانات کی تعمیرکے اعلانات کئے گئے لیکن اب تک صحیح تعداد بتانے سے حکومت قاصر ہے کہ کتنے مکانات تعمیر کئے جا رہے ہیں اور کتنے تعمیر کئے جا چکے ہیں؟ جناب محمد علی شبیر نے بتایا کہ شہر حیدرآباد کو عالمی شہر بنانے کی باتیں کی جا رہی ہیں جبکہ شہر حیدرآباد کو عالمی شہر بنانے کی ضرورت باقی نہیں ہے جو ترقیاتی کام کئے جا چکے ہیں ان کو برقرار رکھنے کے اقدامات بھی کر لئے جائیں تو شہر ترقی یافتہ شہروں کی فہرست میں شامل ہو سکتا ہے لیکن انفارمیشن ٹکنالوجی اور بیرونی سرمایہ کاری کے نام پر عوام کو گمراہ کرتے ہوئے یہ تاثر دیا جا رہا ہے کہ حکومت شہر کی ترقی کیلئے بہت کچھ کر رہی ہے لیکن حقیقت میں صرف اعلانات کی حد تک محدود ہے۔ انہوں نے بتایا کہ حیدرآباد کی جو ترقی کا مشاہدہ کروایا جا رہا ہے وہ کانگریس کے دور حکومت میں ہوئی ترقی ہے جبکہ ٹی آر ایس نے ڈبل بیٹ روم مکانات کی تعمیر کے نام پر تاحال صرف 369مکانات آئی ڈی ایچ کالونی میں تعمیر کئے ہیں ۔ جناب محمد علی شبیر نے ریاستی وزیر بلدی نظم و نسق کے بیرونی دوروں کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ شہر کی ترقی کو نظر انداز کرتے ہوئے ریاستی وزیر بیرونی دوروں میں مصروف ہیں۔ انہوں نے جی ایچ ایم سی کی کارکردگی پر قرطاس ابیض کی اجرائی کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ شہر کے عوام کو اس بات سے واقف کروایا جانا چاہئے کہ جی ایچ ایم سی کی جانب سے اب تک کیا ترقیاتی کام انجام دیئے گئے ہیں اور معلنہ کاموں کو کب تک تکمیل کیا جائے گا۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT