Thursday , August 17 2017
Home / کھیل کی خبریں / حیدرآباد کے خلاف دہلی کو آج کرو یا مرو صورتحال

حیدرآباد کے خلاف دہلی کو آج کرو یا مرو صورتحال

نہرا باہر، سن رائزرس کے بولروں پر زائد ذمہ داری

رائے پور۔19مئی (سیاست ڈاٹ کام) مظاہروں میں عدم استقلال سے پریشان دہلی ڈیر ڈیولس کو کل یہاں کھیلے جانے والے مقابلہ میں سرفہرست سن رائزرس حیدرآباد کے خلاف کرو یا مرو صورتحال کا سامنا ہے۔ دہلی کی ٹیم رواں ٹورمنٹ میں فتوحات کے سلسلہ کو برقرار کھنے میں ناکام ہے اور یکے بعد دیگرے دو ناکامیوں کی وجہ سے اب اس کے پلے آف میں رسائی کے امکانات کو بھی شدید نقصان ہوا ہے۔ 12 مقابلوں میں دہلی نے 12 نشانات حاصل کئے ہیں اور اسے کل کے مقابلے میں پرعزم حیدرآباد کے خلاف کامیابی حاصل کرنا انتہائی ضروری ہے۔ دوسری جانب سن رائزرس حیدرآباد عملاً ٹورنمنٹ کے اگلے مرحلہ میں داخل ہوچکی ہے ۔ 12 مقابلوں میں اس نے 16 نشانات حاصل کرتے ہوئے پہلا مقام حاصل کرلیا ہے۔ پلے آف میں رسائی حاصل کرنے کے باوجود سن رائزرس حیدرآباد کوشاں ہے کہ اب جبکہ ٹورنمنٹ اپنے اختتامی مرحلہ میں داخل ہوچکا ہے تو وہ اپنی فتوحات کے سلسلہ کو برقرار رکھے۔ دہلی ڈیرڈیولس کی اگلے مرحلہ میں رسائی کی امیدوں کو اس وقت شدید دھکہ لگا جب اسے گزشتہ مقابلہ میں ٹورنمنٹ سے پہلے ہی باہر ہوچکی پونے کی ٹیم کے خلاف ڈک ورتھ لوئیس نظام کے تحت 19 رنز کی شکست ہوئی ہے۔ اس مقابلہ میں دہلی کے بیٹسمین کرون نیر اور کرس مورس نے بالترتیب 41 اور 38 رنز اسکور کئے تھے

علاوہ ازیں دہلی کے اوپنر کوئنٹن ڈیکاک ہی اپنے مظاہروں میں استقلال دکھایا ہے لیکن ان کے ساتھ اننگز کا آغاز کرنے والے دیگر اوپنرس بہتر مظاہرہ کرنے میں ناکام ہوئے ہیں۔ مقامی کھلاڑی جیسے مینک اگروال، شریاس ایئر، کرون نیر، سنجیو سامسن، ریشب پنت اور پون نیاگی کے مظاہروں میں استقلال کا فقدان ہے جس کی وجہ سے دہلی کو نقصان اٹھانا پڑرہا ہے۔ نیز سینئر بیٹسمین جے پی ڈومنی بھی بہتر فام میں نہیں ہیں جس کی وجہ سے دہلی کو فتوحات کا سلسلہ باقی رکھنے میں کامیابی حاصل نہیں ہوئی ہے۔ دوسری جانب حیدرآباد کی ٹیم ٹورنمنٹ میں سب سے بہتر اور مستقل مظاہرے کررہی ہے۔ حالانکہ اسے ٹورنمنٹ کے ابتدائی دونوں مقابلوں میں ناکامی کا سامنا کرنا پڑا تھا۔ حیدرآبادی ٹیم کے بیٹنگ کا انحصار کپتان ڈیوڈ وارنر پر ہے جن کے ساتھ ان کے ساتھی شکھر دھون اور زخموں سے صحتیاب ہونے کے بعد ٹیم میں واپسی کرنے والے یووراج سنگھ بھی فتوحات میں اپنا کلیدی رول ادا کررہے ہیں۔ کپتان وارنر ٹیم کے لئے جہاں مثالی مظاہرے کررہے ہیں وہیں دھون اور یووراج نے بھی اپنا ردھم حاصل کرلیا ہے۔ بولنگ شعبہ میں تجربہ کار آشیش نہرا کی خدمات کا ٹیم نے فائدہ اٹھایا ہے الیکن اب وہ زخمی ہوکر ٹورنمنٹ سے باہر ہوچکے ہیں جس کے بعد بھونیشور کمار اور مستفیض الرحمن پر زائد ذمہ داری عائد ہوچکی ہے۔ علاوہ ازیں بریندر سرن کے ہمراہ آسٹریلیائی آل رائونڈر ہینرکس پر بھی ذمہ داری مزید بڑھ چکی ہے۔ دہلی کے لئے اچھی بات یہ ہے کہ اس نے پہلے مرحلہ میں حیدرآباد کو شکست دی ہے اور وہ کوشاں ہے کہ اپنے گھریلو میدان پر کامیابی حاصل کرتے ہوئے اگلے مرحلہ میں رسائی کے امکانات کو برقرار رکھے کیوں کہ اس مقابلہ میں شکست کے بعد دہلی کو ٹورنمنٹ سے باہر ہونا پڑے گا۔

TOPPOPULARRECENT