Thursday , August 17 2017
Home / Top Stories / خاتون اول ہندوستان سبرامکرجی کا انتقال، صدرجمہوریہ ہند کو صدمہ

خاتون اول ہندوستان سبرامکرجی کا انتقال، صدرجمہوریہ ہند کو صدمہ

سیاسی پارٹیوں ، قائدین ، بیرون ملک قائدین اور چیف منسٹروں کا اظہار تعزیت

نئی دہلی 18 اگسٹ (سیاست ڈاٹ کام) صدرجمہوریہ ہند پرنب مکرجی کی شریک حیات سبرامکرجی کا آج گیارہ دن کی شدید علالت کے بعد انتقال ہوگیا۔ انھوں نے 10.51 بجے صبح اپنی آخری سانس لی۔ اُنھیں فوجی ریسرچ اینڈ ریفرل ہاسپٹل میں 7 اگسٹ کو سانس پھولنے اور بے چینی کی شکایت پر شریک کیا گیا تھا۔ راشٹرپتی بھون کے ترجمان وینو راجامونی نے ایک بیان میں کہاکہ شدید رنج و غم کے اظہار اطلاع دی جاتی ہے کہ خاتون اول مسز سبرامکرجی آج صبح (18 اگسٹ 2015 ء) کو انتقال کرگئیں۔ اُنھوں نے 10.51 بجے دن آخری سانس لی۔ دواخانہ میں شریک ہونے کے بعد سبراکو انتہائی شدید نگہداشت کے شعبہ میں رکھا گیا تھا۔ وہ اُس وقت ملک کی خاتون اول بن گئی تھیں جبکہ اُن کے شوہر صدرجمہوریہ ہند منتخب ہوئے تھے۔ پرنب مکرجی ہنوز صدر کے عہدہ پر فائز ہیں۔ سبرامکرجی کے ورثاء میں دو فرزند کانگریسی رکن پارلیمنٹ ابھیجیت اور اندرجیت کے علاوہ دختر شرمستا شامل ہیں۔ اُن کا جسد خاکی صدر کی مطالعہ گاہ کے روبرو اے ڈی سی کمرہ میں رکھا گیا ہے۔ کثیر تعداد میں عوام نے اپنا آخری خراج عقیدت پیش کیا۔

اُنھوں نے صدرجمہوریہ سے بھی اظہار تعزیت کیا۔ چتا کو کل لودھی روڈ پر نذر آتش کیا جائے گا۔ اُن کے انتقال کی خبر جیسے ہی پھیلی نائب صدرجمہوریہ حامد انصاری، وزیراعظم نریندر مودی، سابق وزیراعظم منموہن سنگھ، صدر کانگریس سونیا گاندھی، چیف منسٹر مغربی بنگال ممتا بنرجی اور کابینی وزراء نے اظہار تعزیت کیا۔ وزیراعظم نریندر مودی نے اپنے ٹوئٹر پر تحریر کیاکہ مسز سبرامکرجی کا انتقال انتہائی رنج و غم کی وجہ ہے اور وہ اس رنج و غم کے لمحہ میں صدرجمہوریہ اور اُن کے ارکان خاندان کے ساتھ ہیں۔ اُنھوں نے کہاکہ سبرامکرجی کو فنون لطیفہ، ثقافت اور موسیقی کے شوق کی بناء پر یاد رکھا جائے گا۔ وہ انتہائی گرمجوش طبیعت کی تھیں جس کی وجہ سے جو بھی اُن سے ملاقات کرتا اُن کا گرویدہ ہوجاتا تھا۔ حامد انصاری اور سونیا گاندھی کے علاوہ سینئر کابینی وزراء، سیاست دانوں اور سفارت کاروں نے راشٹراپتی بھون پہونچ کر اظہار تعزیت کیا۔ پرنب مکرجی کی شادی 13 جولائی 1957 ء کو سبراسے ہوئی تھی۔ وہ جیسور کی متوطن تھیں جو اب بنگلہ دیش میں ہے اور ترک وطن کرکے 10 سال کی عمر میں کولکتہ منتقل ہوگئی تھیں۔

سبرانے مبینہ طور پر اپنے شوہر کے سیاسی کیرئیر کے عروج کے لمحہ میں جب اُنھوں نے 25 جولائی 2012 ء کو صدرجمہوریہ کا عہدہ سنبھالا تھا، کہا تھا کہ ہم آج کل کے جوڑے نہیں ہیں۔ یہ ایک دوسرے سے صرف محبت کرنے کا رشتہ نہیں ہے، ہم بعض اوقات اپنے جذبات کا حد سے زیادہ اظہار کرتے ہیں۔ وہ 17 سپٹمبر 1940 ء کو پیدا ہوئی تھیں اور گرو دیو رابندر ناتھ ٹیگور کے مداحوں میں شامل تھیں۔ اُنھوں نے گریجویشن کیا تھا۔ رابندر سنگیت میں وہ گلوکار تھیں اور اُنھوں نے موسیقی ریز رقص و ڈراموں میں کئی سال تک حصہ لیا تھا۔ ہندوستان کے کئی علاقوں یوروپ، ایشیاء اور افریقہ میں اپنے فن کا مظاہرہ کیا تھا۔ وہ 1982 ء میں ایک مہم چلارہی تھیں جس کے تحت رابندر ناتھ ٹیگور کے فلسفہ کی تشہیر کی جاتی تھی۔ اُنھوں نے گیتوں اور رقص پر مبنی ڈراموں کے ذریعہ اُن کے فلسفہ کی تشہیر کی۔ رابندر ناتھ ٹیگور اُن کے سرچشمۂ وجدان تھے۔ آخری بار اُنھوں نے 2013 ء میں اسٹیج پر اپنے فن کا مظاہرہ کیا تھا اور رابندر ناتھ ٹیگور کا ایک نغمہ سنایا تھا۔ اُنھیں موسیقی سے بھی عشق تھا۔ سبراانتہائی باصلاحیت مصور تھیں۔ اُنھوں نے کئی گروپ اور تنہا تصاویر کی نمائشوں میں شرکت کی تھی۔ اُنھیں مصور اپنی ماں سمجھتے تھے اور اُن سے تخلیقی تحریک حاصل کرتے تھے۔ اُن کی تصاویر کو ناقدین کی ستائش بھی حاصل ہوئی تھی۔

اُنھوں نے دو کتابیں ’’چھوکر الوی‘‘ بھی تحریر کی تھیں جو اُس وقت کی وزیراعظم اندرا گاندھی کے ساتھ اُن کی بات چیت پر مبنی تھیں۔ اُنھوں نے اپنی ایک کتاب میں چین کے دورہ کا تذکرہ بھی کیا تھا۔ سبراراشٹرپتی بھون منتقل ہوتے وقت اپنے ساتھ ایک ہارمونیم اور ایک کانپورا بھی لائی تھیں جو بنگالی میوزک ڈائرکٹر ڈی ایل رائے نے اُنھیں بطور تحفہ دیا تھا۔ اُن کا جسد خاکی 13 تال کٹورہ روڈ پر آخری رسومات کے لئے منتقل کیا جائے گا۔ یہاں اُن کے فرزند ابھیجیت کی سرکاری قیامگاہ ہے۔ یہ مکان ابھیجیت کو اُس وقت الاٹ کیا گیا تھا جب وہ یوپی اے حکومت میں وزیر تھے اور سبرانے یہاں بہت وقت گزارا ہے۔ صدرجمہوریہ پرنب مکرجی سے تمام سیاسی پارٹیوں اور سیاسی قائدین نے اظہار تعزیت کیا ہے۔ اُن میں مرکزی وزیر راجناتھ سنگھ، صدر کانگریس سونیا گاندھی، مغربی بنگال کی چیف منسٹر ممتا بنرجی، چیف منسٹر بہار نتیش کمار، سی پی آئی (ایم) اور سی پی آئی کے جنرل سکریٹریز سیتارام یچوری اور سدھاکر ریڈی شامل ہیں۔ لندن سے لارڈ سوراج پال اور ٹاملناڈو سے گورنر اور چیف منسٹر نے پیغامات تعزیت روانہ کئے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT