Tuesday , May 30 2017
Home / شہر کی خبریں / خادم الحجاج اور رباط میں عازمین کے قیام پر درمیانی افراد کی سرگرمیوں کا سخت نوٹ

خادم الحجاج اور رباط میں عازمین کے قیام پر درمیانی افراد کی سرگرمیوں کا سخت نوٹ

سرگرمیوں پر سخت کارروائی اور پولیس کے حوالے کرنے کا انتباہ ، اسپیشل آفیسر حج کمیٹی پروفیسر ایس اے شکور
حیدرآباد۔ 5 مئی (سیاست نیوز) اسپیشل آفیسر تلنگانہ حج کمیٹی پروفیسر ایس اے شکور نے خادم الحجاج کی حیثیت سے انتخاب اور رباط میں رہائش کے انتظامات کے نام پر بعض درمیانی افراد کی سرگرمیوں کی اطلاع کا سختی سے نوٹ لیا ہے۔ انہوں نے انتباہ دیا کہ جو کوئی بھی اس طرح کی سرگرمیوں میں ملوث ہوں گے ان کے خلاف ایف آئی آر درج کرتے ہوئے پولیس کے حوالے کیا جائے گا چاہے ان کا تعلق کسی بھی اقلیتی ادارے سے کیوں نہ ہو۔ بعض افراد کی جانب سے شکایات موصول ہوئیں کہ جاریہ سال خادم الحجاج کی حیثیت سے انتخاب کو یقینی بنانے کا لالچ دے کر بعض ایجنٹس بھاری رقومات حاصل کررہے ہیں۔ وہ پاسپورٹس کی زیراکس اور دیگر دستاویزات حاصل کرتے ہوئے قومی سطح پر کارروائی کا تیقن دے رہے ہیں۔ بتایا گیا ہے کہ اس طرح کی سرگرمیوں میں ملوث افراد کا تعلق حج کمیٹی اور وقف بورڈ سے ہے اور ابھی تک کئی خواہشمندوں سے دستاویزات حاصل کرلیئے گئے۔ دفتری اوقات کے بعد حج ہائوز میں اس طرح کی سرگرمیاں عروج پر ہیں اور بروکرس متحرک دکھائی دیتے ہیں۔ واضح رہے کہ خادم الحجاج کا انتخاب ابھی عمل میں نہیں آیا۔ خادم الحجاج کے انتخاب کے لیے سنٹرل حج کمیٹی نے جو شرائط مقرر کی ہیں اس کے مطابق ہی انتخاب کیا جاتا ہے اور کسی سفارش کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا۔ اسپیشل آفیسر تلنگانہ حج کمیٹی کے مطابق اہل امیدواروں سے درخواست کی طلبی ابھی باقی ہے اور قرعہ اندازی کے ذریعہ انتخاب عمل میں آتا ہے۔ انہوں نے واضح کردیا کہ انتخاب کے سلسلہ میں کسی سفارش کو ہرگز قبول نہیں کیا جائے گا۔ انہوں نے بتایا کہ اگر کوئی شخص درمیانی افراد سے رجوع ہوکر رقم ادا کرے گا تو وہ اس کے لیے خود ذمہ دار ہوگا۔ تاہم حج کمیٹی جو بھی رنگ ہاتھوں پکڑے جائیں انہیں پولیس کے حوالے کردے گی ۔ خادم الحجاج کے علاوہ عازمین حج کو حیدرآبادی رباط میں قیام کا لالچ دیا جارہا ہے۔ عزیزیہ زمرے سے تعلق رکھنے والے عازمین کو حیدرآبادی رباط میں قیام کی سہولت حاصل رہے گی تاہم ان کا انتخاب قرعہ اندازی سے ہوگا۔ حیدرآباد، کرناٹک اور مہاراشٹرا کے سابق ریاست حیدرآباد کے اضلاع کے عزیزیہ زمرے کے تمام کور نمبرس کی قرعہ اندازی عمل میں آئے گی اور جاریہ سال 1283 عازمین حج کا انتخاب عمل میں آئے گا۔ بتایا جاتا ہے کہ وقف بورڈ اور حج کمیٹی کے بعض ملازمین عازمین حج کو رباط میں قیام یقینی بنانے کا لالچ دے رہے ہیں۔ اس کے علاوہ خصوصی کوٹے کے تحت عازمین حج کو جاریہ سال روانہ کرنے کے لیے بھی بھاری رقم کی مانگ کی جارہی ہے۔ حد تو یہاں تک پہنچ گئی کہ محفوظ زمرے میں منتخب ہونے والے عازمین حج کو بھی مختلف انداز سے رقم ادا کرنے کے لیے بروکرس رجوع ہوئے۔ ایسے عازمین جو محفوظ زمرے کے شرائط سے واقف نہیں وہ بآسانی دھوکہ دہی کا شکار ہوسکتے ہیں۔ بتایا جاتا ہے کہ گزشتہ سال محفوظ زمرے کے ایک حاجی سے 60 ہزار روپئے حاصل کئے گئے اور جب حاجی نے رقم واپسی کا مطالبہ کیا تو انہیں روانگی سے روک دینے کی دھمکی دی گئی۔ اس طرح کی شکایات ملنے پر اسپیشل آفیسر تلنگانہ حج کمیٹی نے سخت کارروائی کا انتباہ دیا۔ وہ اس طرح کی سرگرمیوں پر نظر رکھنے کے لیے ایک خفیہ ٹیم کو حج ہائوز میں متعین کرنے کا منصوبہ رکھتے ہیں۔ اس ٹیم سے تعلق رکھنے والوں کا تعلق کسی اقلیتی ادارے سے نہیں رہے گا۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT