Wednesday , September 20 2017
Home / Top Stories / ’خالی پیٹ میں کڑک چائے سے معدہ میں السر‘

’خالی پیٹ میں کڑک چائے سے معدہ میں السر‘

وزیراعظم مودی کے ریمارک پر صدر پنجاب کانگریس کا جوابی وار، ناعاقبت اندیش اقدام پر نظرثانی کا مطالبہ
چندی گڑھ 15 نومبر (سیاست ڈاٹ کام) پنجاب پردیش کانگریس کمیٹی کے صدر اور سابق چیف منسٹر امریندر سنگھ نے بڑے کرنسی نوٹوں کی منسوخی سے متعلق غیر منصوبہ بند اور غیر انسانی اقدام کی سخت مذمت کرتے ہوئے کہاکہ مودی حکومت پر اس ناعاقبت اندیش اقدام کا زبردست منفی اثر ہوگا۔ امریندر سنگھ نے وزیراعظم نریندر مودی کی طرف سے 2014 ء کے عام انتخابات میں شروع کردہ ’چائے پہ چرچہ‘ کو بالواسطہ تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہاکہ ’’آپ (نریندر مودی) کی ’کڑک چائے‘ سے عوام مر رہے ہیں۔ خالی پیٹ میں کڑک چائے سے معدہ کا السر ہورہا ہے‘‘۔ کیپٹن امریندر سنگھ نے کہاکہ کرنسی کی منسوخی کے ناعاقبت اندیش اقدام پر اگر فی الفور نظرثانی نہ کی جائے تو مودی حکومت پر اس کا اُلٹا اثر ہوگا۔ کانگریس قائد نے وزیراعظم کی جانب سے کرنسی کی منسوخی میں اپنی ناکامیوں کی پردہ پوشی کے لئے تاریخ کے غلط حوالوں اور جھوٹ کا سہارا لینے پر بھی سخت تنقید کی۔ انھوں نے کہاکہ منسوخ شدہ نوٹوں کی تبدیلی یا نئے نوٹوں کے حصول کے لئے بینکوں اور اے ٹی ایمس پر طویل قطاروں میں گھنٹوں کھڑے رہنے والے افراد وہ ہیں جو اپنی سخت محنت سے کمائے ہوئے چند ہزار نوٹوں کی قبولیت سے دواخانوں کے انکار کے سبب فوت ہورہے ہیں اور دن بھر قطاروں میں ٹہرنے کے باوجود خالی پیٹ سونے پر مجبور ہیں۔ کیپٹن امریندر سنگھ نے وزیراعظم مودی کا مذاق اُڑاتے ہوئے کہاکہ ’’کڑک چائے سے متعلق آپ کا ویژن ملک کے کروڑوں عام آدمیوں کے خوابوں میں ڈراؤنے بھوت کی طرح تعاقب کرتے ہوئے ان کی نیندیں حرام کررہا ہے‘‘۔ کیپٹن امریندر سنگھ نے الزام عائد کیاکہ دولتمند افراد کو نوٹوں کی منسوخی کے اقدام کی کئی ہفتوں پہلے ہی خبر دی جاچکی تھی جو پرانے کرنسی نوٹوں کی تبدیلی کا انتظام کرچکے تھے اور اس غیر منصوبہ بند و غیر انسانی اقدام سے عام آدمی ہی ناقابل بیان مصیبتوں کا شکار ہوگیا ہے۔ کیپٹن امریندر سنگھ نے مطالبہ کیاکہ نوٹوں کی منسوخی اور عوامی مفادات کے تحفظ میں ناکامی کی تمام تر ذمہ داری مودی کو قبول کرنا چاہئے۔

TOPPOPULARRECENT