Wednesday , September 20 2017
Home / شہر کی خبریں / خانگی اسکولس اور کالجس میں بے قاعدگیوں کی تحقیقات

خانگی اسکولس اور کالجس میں بے قاعدگیوں کی تحقیقات

محکمہ تعلیمات کے کسی بھی عہدیدار سے جانچ کروانے انتظامیہ کا مطالبہ
حیدرآباد ۔ 16 ۔ اپریل : ( سیاست نیوز) : تلنگانہ حکومت نے خانگی مدارس وکالجس بشمول انجینئرنگ کالجس وغیرہ میں پائی جانے والی بعض بے قاعدگیوں کی پولیس کے مختلف شعبہ جات ، اینٹی کرپشن بیورو ، سی آئی ڈی ویجلنس انفورسمنٹ اور لا اینڈ آرڈر پولیس کے ذریعہ تحقیقات کروانے کا فیصلہ کیا ۔ لیکن اسی دوران خانگی اسکولس ، کالجس و انجینئرنگ کالجس کی مشترکہ مجلس عمل ( جوائنٹ ایکشن کمیٹی ) نے حکومت کے اس فیصلہ کی پر زور مخالفت کی اور حکومت سے مذکورہ پولیس شعبہ جات سے تعلق رکھنے والے عہدیداروں کے بجائے محکمہ تعلیمات کے اعلی عہدیداروں کے ذریعہ کسی بھی نوعیت کی تحقیقات کروانے کا پر زور مطالبہ کیا ۔ مجلس عمل کا کہنا ہے کہ اگر واقعی مذکورہ پولیس شعبہ جات کے عہدیداروں سے تحقیقات کروائی جائیں گی تو یہ اقدام خانگی اسکولس ، کالجس اور انجینئرنگ کالجس وغیرہ کی توہین کے مترادف ہوگا ۔ جے اے سی نے مزید کہا کہ ایسا محسوس ہوتا ہے کہ حکومت تلنگانہ کو خود اپنے عہدیداروں پر ہی ( محکمہ تعلیمات کے عہدیداروں پر ) بھروسہ یا اعتماد نہیں ۔ جس کی وجہ سے ہی حکومت مذکورہ پولیس شعبوں کے ذریعہ تحقیقات کروانے کا ارادہ رکھتی ہے ۔ خانگی اسکولس ، کالجس اور انجینئرنگ کالجس کی جوائنٹ ایکشن کمیٹی نے واضح طور پر کہا کہ ہم کسی بھی نوعیت کی تحقیقات کروانے کے ہرگز مخالف نہیں ہیں بلکہ صرف اور صرف محکمہ تعلیمات کے کسی بھی عہدیداروں کے ذریعہ تحقیقات کروانے کی ضرورت پر زور دیا ۔ جے اے سی نے حکومت کی جانب سے کی جانے والی کوششوں کی سخت مخالفت اور افسوس کا اظہار کیا اور حکومت بالخصوص چیف منسٹر مسٹر کے چندر شیکھر راؤ سے فی الفور اپنے اس فیصلہ سے دستبرداری اختیار کرلینے کا پر زور مطالبہ کیا ۔ بصورت دیگر بڑے پیمانے پر احتجاج منظم کرنے کا حکومت کو سخت انتباہ دیا اور کہا کہ بعض مفاد پرست قائدین اور بعض طاقتیں چیف منسٹر مسٹر کے چندر شیکھر راؤ کو اور ڈپٹی چیف منسٹر امور تعلیم مسٹر کے سری ہری کو گمراہ کررہے ہیں اور خانگی اسکولس کالجس و انجینئرنگ کالجس کے خلاف سخت کارروائی کرنے کا مطالبہ کرتے ہوئے حکومت کو بدنام کرنے کیلئے کوشاں دکھائی دے رہے ہیں ۔۔

TOPPOPULARRECENT