Tuesday , September 26 2017
Home / شہر کی خبریں / خانگی اسکولس اور کالجس کی بسوں پر سخت نظر

خانگی اسکولس اور کالجس کی بسوں پر سخت نظر

ٹرانسپورٹ اتھاریٹی کے قواعد کی خلاف ورزی پر کارروائی کا فیصلہ
حیدرآباد۔/20مئی، ( سیاست نیوز) خانگی اسکول بسوں اور کالجس کیلئے چلائی جانے والی بسوں پر سخت نظر رکھی جائے گی۔ ریجنل ٹرانسپورٹ اتھاریٹی نے شرائط کی خلاف ورزی کرنے والی بسوں کے خلاف سخت کارروائی کا فیصلہ کرلیاہے۔ تاہم اسکولس اور کالج انتظامیہ کو مشورہ دیا ہے کہ وہ 30  مئی سے قبل اپنی گاڑیوں کی جانچ کرواتے ہوئے فٹنس حاصل کرلیں ۔ایک اعلیٰ عہدیدار نے بتایا کہ ایسی کسی بھی اسکول اور کالجس کی بسوں کو بخشا نہیں جائے گا جو شرائط کی خلاف ورزی کرتی ہیں۔ اس سلسلہ میں آر ٹی اے کے بشمول بیداری مہم کو بھی قطعیت دی ہے۔ تاہم 30مئی تک فٹنس کی آخری تاریخ مقر ر کی گئی ہے۔ اسکول اور کالجس کی ان بسوں کی درست حالت اور ہر لحاظ سے بسوں کا بحال رہنا نہایت ہی اہمیت کا حامل ہے اور اس مرتبہ آرٹی اے فٹنس کے تعلق سے سخت اقدامات کررہی ہے۔ 30مئی کے بعد خصوصی ڈرائیو منعقد کرتے ہوئے بسوں کی جانچ کی جائے گی اور ایسی بسوں کو جو آر ٹی اے سے فٹنس حاصل نہیں کرتی انہیں بھاری جرمانوں کے علاوہ ضبط بھی کرلیا جائے گا۔حیدرآباد اور پڑوسی اضلاع میڑچل، رنگاریی میں تقریباً 10ہزار اسکول بسیں پائی جاتی ہیں اور صرف حیدرآباد ضلع میں1200 اسکول بسیں ہیں۔ آر ٹی اے کا کہنا ہے کہ فٹنس کی جانچ اور فٹنس سرٹیفکیٹ حاصل کرنے کیلئے 960 روپئے فیس مقرر کی گئی ہے ۔ شرائط کی خلاف ورزی کے عوض 10ہزار روپئے کا جرمانہ عائد ہوگا۔ ہر سال اسکول بسوں کے فٹنس کی مدت 15مئی کو ختم ہوجاتی ہے اور انہیں 30مئی تک اس سال فٹنس سرٹیفکیٹ حاصل کرنے کا موقع دیا گیا ہے۔ آر ٹی اے کے مطابق 15سال پرانی بسوں کو کسی بھی صورت فٹنس سرٹیفکیٹ نہیں دیا جائے گا اور نہ ہی ایسی بسوں کو شہری حدود میں سرگرمیوں کی اجازت رہے گی۔15مئی تا 30مئی کا وقت اور شعور بیداری ہر لحاظ سے بسوں کے مالکین اور اسکول انتظامیہ کیلئے مفید ہوگی چونکہ جاریہ سال آر ٹی اے کسی بھی قسم کی ذرا سی لاپرواہی کو برداشت نہیں کرے گا۔ ذرائع کے مطابق گزشتہ سال 60 فیصد بسوں نے فٹنس حاصل کیا تھا اور 40 فیصد نے اپنی سرگرمیاں پڑوسی اضلاع کے نواحی علاقوں میں جاری رکھی تھیں۔ آر ٹی اے کا کہنا ہے کہ اب ان تمام پر نظر رکھی گئی ہے اور اسپیشل مہم میں ان کے خلاف سخت کارروائی انجام دی جائے گی۔

TOPPOPULARRECENT