Thursday , September 21 2017
Home / شہر کی خبریں / خانگی انجینئرنگ کالجس کے ٹیچرس مشکلات سے دوچار : جے اے سی

خانگی انجینئرنگ کالجس کے ٹیچرس مشکلات سے دوچار : جے اے سی

حیدرآباد۔ 19 مئی (این ایس ایس) تلنگانہ کے خانگی انجینئرنگ کالجس کے اساتذہ پر مشتمل نو تشکیل شدہ جوائنٹ ایکشن کمیٹی (جے اے سی) نے حکومت سے کالجس کو اجازت دینے کے معاملے میں قواعد پر موثر عمل آوری یقینی بنانے پر زور دیا۔ میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے رام کرشنا ریڈی نے کہا کہ انجینئرنگ کالجس میں مختلف فیس اسٹرکچر ہونے کے باوجود کوئی بھی کالج چھٹے پے کمیشن پر عمل نہیں کررہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ تلنگانہ میں کسی انجینئرنگ کالج کے ٹیچر کی تنخواہ جی ایچ ایم سی کے جاروب کش سے بھی کم ہے۔ ہر کالج میں ایک پرنسپل ہوتا ہے لیکن اسے اختیارات حاصل نہیں ہوتے۔ انہوں نے بتایا کہ امتحانات کے دوران انوجلیشن ڈیوٹی کیلئے یونیورسٹی 75 روپئے ادا کررہی ہے اور 2003ء سے اب تک اس پر نظرثانی نہیں کی گئی۔ آسمان کو چھوتی مہنگائی کے سبب ٹیچرس کی زندگی اجیرن بن گئی ہے ۔ تلنگانہ میں موجود تقریباً 800 انجینئرنگ اور دیگر پروفیشنل کالجس میں تقریباً 48,000 ٹیچرس برسرخدمت ہیں۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT