Saturday , September 23 2017
Home / شہر کی خبریں / خانگی و کارپوریٹ ہاسپٹلوں میں لوٹ مار کیخلاف شکایت

خانگی و کارپوریٹ ہاسپٹلوں میں لوٹ مار کیخلاف شکایت

چیف منسٹر تلنگانہ اور میڈیکل کونسل آف انڈیا کو مکتوبات : ایم اے خان

حیدرآباد ۔ 23 اپریل (سیاست نیوز) کانگریس کے رکن راجیہ سبھا مسٹر ایم اے خان نے خانگی و کارپوریٹ ہاسپٹلس کی لوٹ مار کے خلاف چیف منسٹر تلنگانہ اور میڈیکل کونسل آف انڈیا کو شکایت کی اور 26 اپریل کو راجیہ سبھا میں مسئلہ اٹھانے کا اعلان کیا۔ آج اسمبلی کے احاطے میں میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ خانگی و کارپوریٹ ہاسپٹلس کے پاس انسانیت نام کی کوئی چیز نہیں ہے۔ صحت سے متعلق نوبل پیشہ کو تجارت میں تبدیل کرنے کا الزام عائد کرتے ہوئے کہا کہ ان کی شریک حیات کو بخار اور پیچش کی شکایت تھی جس پر انہوں نے انہیں یشودھا ہاسپٹل ملک پیٹ سے رجوع کیا۔ اس سے قبل وہ پارلیمنٹ کے ڈاکٹرسے مشورہ کرچکے تھے۔ یشودھا ہاسپٹل ملک پیٹ میں ان کی شریک حیات کو شریک کرنے سے قبل 25 ہزار روپئے ادا کرنے کی ہدایت دی گئی جب انہوں نے اپنا اور انکا سی جی ایس ہیلت کارڈ دیا جس کو قبول نہیں کیا گیا اس کے باوجود انہوں نے 15 ہزار روپئے ادا کرنے کے بعد دواخانہ میں شریک کردیا گیا۔ وہ ڈاکٹرس کو بتا چکے تھے انہیں صرف بخار اور پیچشکی شکایت ہے اور 8 دن قبل ہی تمام ٹسٹ کراچکے ہیں سب نارمل ہے۔ تاہم ڈاکٹرس علی الصبح 4 بجے ان کی شریک حیات کے غیر ضروری ایچ آئی وی، دماغ، گردوں کے ٹسٹ کرائے گئے۔ ان کی شریک حیات کی جانب سے ٹسٹ کرانے سے انکار کرنے پر ان کی زندگی کو خطرہ ہونے کا دعویٰ کرتے ہوئے ڈرایا دھمکایا گیا ہے۔ وہ دوسرے دن جب ہاسپٹل پہنچے تو ڈاکٹرس کی کارروائی پر انہیں حیرت ہوئی اور 25 ہزار روپئے کا بل بنایا گیا تھا۔ یشودھا ہاسپٹل کی اس کارروائی کے خلاف وہ راجیہ سبھا کی پٹیشن کمیٹی سے شکایت کرچکے ہیں۔ 10 دن قبل وہ چیف منسٹر تلنگانہ سے اس کی شکایت کرچکے ہیں۔ ایک رکن پارلیمنٹ کے ساتھ ہاسپٹل انتظامیہ کا یہ رویہ ہے تو غریب عوام کے ساتھ کیا ہوتا ہوگا سوچنے کی بات ہے۔ کارپوریٹ ہاسپٹلس کی لوٹ کے خلاف وہ میڈیکل کونسل کے علاوہ ٹیکنیکل کمیٹی سے بھی شکایت کرچکے ہیں۔ 26 اپریل کو کارپوریٹ ہاسپٹلس کی لوٹ مار کے خلاف بھی آواز اٹھائیں گے۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT