Tuesday , October 17 2017
Home / اضلاع کی خبریں / خانہ پور میں آبپاشی مسائل کے حل کیلئے مہادھرنا

خانہ پور میں آبپاشی مسائل کے حل کیلئے مہادھرنا

کئی قائدین کی گرفتاری و رہائی، پولیس کا ہلکا سا لاٹھی چارج، کانگریس کا آج بند
خانہ پور۔ /18جنوری، ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) خانہ پور میں کانگریس پارٹی کے سینئر قائدین نے خانہ پور اور کڑم منڈل کے کسانوں کی زرعی اراضی کو قابل کاشت بنانے اور دو فصلہ کاشت کیلئے ایس آر ایس پی کنال سے خانہ پور کے صدر ماٹ ڈیم میں پانی چھوڑنے کا مطالبہ کرتے ہوئے 3 گھنٹے طویل تاریخ ساز دھرنا منظم کیا۔ دھرنا کی قیادت سینئر کانگریس قائد پی رویندر راؤ تلنگانہ اسٹیٹ جنرل سکریٹری نے کی۔ کانگریس کے مہا دھرنا کی وجہ سے گھنٹوں ٹریفک جام رہی۔ کانگریس قائدین نے جگن چوک، قدیم بس اسٹینڈ سے گزرنے والی سڑکوں پر زبردست رکاوٹیں کھڑی کردی۔ پارٹی قائدین و کارکنوں کی بڑی تعداد مخالف حکومت نعرے بلند کرتے ہوئے خوب شور شرابہ کیا۔ مقامی پولیس نے صورتحال کو بے قابو ہوتے دیکھتے ہوئے مقام دھرنا پر زائد پولیس دستے طلب کرلئے اور حلقہ اسمبلی خانہ پور کے کئی دوسرے منڈلوں سے پولیس ایس آئی اور بھاری جمعیت کو طلب کرلیا اور سینئر کانگریس قائدین سے پولیس بار بار اپیل کرتی رہی کہ وہ فوری دھرنا ختم کردیں اس لئے کہ ٹریفک میں زبردست خلل پڑرہا ہے اور پارٹی قائدین اور کارکنوں سے نعرہ بازی ختم کرنے کی اپیل کی لیکن اس کے برعکس قائدین دھرنا پر بضد  رہے۔ احتجاجی قائدین ضلع کلکٹر نرمل کو فوری مقام دھرنا  طلب کرنے اور کسانوں اور کاشتکاروں کے مسائل کی برسر موقع سنوائی کرتے ہوئے مسئلہ کی یکسوئی کرنے کا مطالبہ کرتے رہے۔ اس موقع پر پولیس نے تحصیلدار خانہ پور اے نریندر کو دھرنا کی اطلاع دی اور انہیں فوری مقام دھرنا آنے کی اپیل کی۔ تحصیلدار کے پہنچنے پر احتجاجیوں نے دھرنا میں شدت پیدا کردی اور مخالف حکومت نعرے بلند کرتے رہے۔ اس موقع پر مقامی پولیس نے دھرنا ختم کرنے کیلئے طاقت کا استعمال کرتے ہوئے احتجاجیوں کو دھرنا سے اٹھانے کی کوشش کی۔ اس دوران احتجاجیوں اور پولیس میں زبردست دھکم پیل ہوئی اور کھینچا تگانی ہوئی۔ پولیس نے ہجوم کو منتشر کرنے ہلکا لاٹھی چارج کیا اور زورزبردستی کانگریس کے سینئر قائدین پی رویندر راؤ تلنگانہ اسٹیٹ جنرل سکریٹری، بھرت چوہان، ہری نائیک اور دیگر قائدین کو گرفتار کرکے پولیس اسٹیشن منتقل کردیا۔

اس موقع پر پارٹی کارکنوں نے پولیس ظلم کے خلاف نعرے بلند کرتے ہوئے پولیس اسٹیشن پہنچے اور دھرنا دیا اور قائدین کی رہائی کا مطالبہ کرتے رہے۔ بعد ازاں پولیس نے گرفتار کانگریس قائدین کو رہا کردیا۔ پولیس دھکم پیل اور لاٹھی چارج میں سینئر کانگریس قائد ایس لکشمن راؤ سابق صدر نشین زرعی مارکٹ کمیٹی و دیگر زخمی ہوئے جنہیں سرکاری دواخانہ منتقل کیا گیا۔ بعد ازاں پارٹی کے سینئر قائدین نے پولیس ظلم کے خلاف کل خانہ پور بند کی اپیل کی۔ دھرنا میں حلقہ اسمبلی خانہ پور کے سینئر منڈل قائدین بھرت چوہان نائب صدر تلنگانہ اسٹیٹ ایس ٹی سیل اجمیرہ ہری نائک، کے گنگا راؤ صدر کانگریس منڈل خانہ پور سریش کمار، ایم اے مجید معاون رکن منڈل پریشد، ایم اے وکیل، محمد عبدالسمیع، محمد خواجہ، ڈی راجیشور، ظہیراحمد، بی سی رمیش، سید رستم کے علاوہ پارٹی قائدین و کارکنوں کے علاوہ کسانوں کی کثیر تعداد نے شرکت کی۔ بعد ازاں سینئر کانگریس قائد پی رویندر راؤ تلنگانہ اسٹیٹ جنرل سکریٹری نے میڈیا کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ ریاستی وزیر آبپاشی ہریش راؤ نے ایک ہفتہ قبل خانہ پور پہنچ کر صدر ماٹ ڈیم پر بیاریج کے تعمیراتی کاموں کا افتتاح کیا۔ وزیر ہریش راؤ نے اس موقع پر صرف 5 ہزار ایکر اراضی کو پانی سربراہ کرنے کی بات کی جبکہ انہیں 15 ہزار ایکر زرعی اراضی کو پانی سربراہ کرنے کا تیقن دینا تھا۔ وزیر موصوف کے دورہ خانہ پور کے بعد سے خانہ پور اور کڑم منڈل کے کسانوں میں بے چینی و غم و غصہ کی لہر دوڑ گئی اور کسان احتجاج پر اُتر آئے۔ اس موقع پر سینئر کانگریس قائد پی رویندرراؤ نے ٹی آر ایس حکومت کو شدید تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ حکومت کسانوں سے انصاف کے بجائے انہیں خودکشی پر مجبور کررہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ کانگریس کسانوں اور کاشتکاروں کے ساتھ ہے مسائل کی عدم یکسوئی پر اس سے بھی بڑے دھرنے منظم کئے جائیںگے۔انہوں نے کہا کہ صدر ماٹ ڈیم کی ترقی و تعمیر کانگریس اور آنجہانی سابق چیف منسٹر وائی ایس راج شیکھر ریڈی کی مرہون منت ہے۔

TOPPOPULARRECENT