Thursday , October 19 2017
Home / Top Stories / خانہ کعبہ کی بے حرمتی والا فیس بک پوسٹ سے کشیدگی‘ نوجوانوں کا احتجاج

خانہ کعبہ کی بے حرمتی والا فیس بک پوسٹ سے کشیدگی‘ نوجوانوں کا احتجاج

حیدرآباد 13 نومبر (سیاست نیوز) مسلمانوں کے مذہبی جذبات کو منظم طور پر ٹھیس پہنچانے کا سلسلہ ہنوز جاری ہے۔ آج کے ایک تازہ ترین واقعہ میں فیس بُک پر خانہ کعبہ کی بے حرمتی کا ایک اور واقعہ منظر عام پر آنے کے سبب پرانے شہر کے نوجوان سڑکوں پر احتجاج پر اُتر آئے۔ تفصیلات کے بموجب آج رات سنتوش نگر کے علاقہ عیدی بازار میں بعض نوجوان فیس بُک پر ’’وجئے کمار کنہیا‘‘ نامی شرپسند کی جانب سے خانہ کعبہ کی بے حرمتی کی ایک تصویر اپ لوڈ کی جس کے بعد علاقہ میں کشیدگی پیدا ہوگئی۔پولیس کی ابتدائی تحقیقات میں یہ معلوم ہوا ہے کہ دل آزار پوسٹ کو ملیشیاء سے اپ لوڈ کیا گیا تھا اور پولیس فوری کارروائی کرتے ہوئے اس پوٹس کو ہٹا دیا ۔ نوجوانوں کے اس اچانک احتجاج سے یہ معلوم ہوتا ہے کہ مرکزی حکومت کی جانب سے یکساں سیول کوڈ اور شریعت میں مداخلت کی کوششوں اور بڑے کرنسی نوٹوں کے چلن پر پابندی سے عوام برہم ہیں اور چھوٹے سے واقعہ سے عوام کے جذبات بھڑک رہے ہیں۔ برہم نوجوان اسسٹنٹ کمشنر آف پولیس سنتوش نگر بند ناکہ کے روبرو کثیر تعداد میں جمع ہوگئے اور احتجاج کیا۔ نوجوانوں کی جانب سے اچانک احتجاج کی اطلاع پر مقامی کارپوریٹرس اور رکن اسمبلی پہونچ کر اُن سے پرامن رہنے کی اپیل کی۔ لیکن نوجوانوں نے احتجاج کا سلسلہ جاری رکھتے ہوئے عیدی بازار، تالاب کٹہ، بھوانی نگر، مغلپورہ تا چارمینار تمام دوکانات و تجارتی ادارے بند کروادیئے۔ سڑکوں پر یکایک کثیر تعداد میں نوجوانوں کی جانب سے احتجاج منظم کئے جانے پر پولیس حرکت میں آگئی اور حالات کو قابو میں کرنے کے لئے گشت بڑھادی گئی۔ اسی دوران بعض نوجوانوں نے پارک کی ہوئی دو کاروں پر سنگباری کی اور شرپسند عناصر کے خلاف سخت کارروائی کا مطالبہ کرتے ہوئے نعرے بازی کی۔ پولیس نے شاہ علی بنڈہ اور چارمینار کے قریب عوام کو منتشر کرنے کے لئے طاقت کا ہلکا استعمال کیا۔ بتایا جاتا ہے کہ خانہ کعبہ کی بے حرمتی کا ایک واقعہ تین دن قبل حسینی علم علاقہ میں پیش آیا تھا جس کے نتیجہ میں مقامی نوجوانوں نے پولیس حسینی علم سے شکایت درج کروائی تھی اورجس کے نتیجہ میں ایک مقدمہ درج کیا گیا ۔ تاہم آج کے تازہ واقعہ میں سنتوش نگر پولیس نے نعیم نامی نوجوان کی شکایت پر کی ایف آئی آر جس کا نمبر 317/2016  ہے تعزیرات ہند کے دفعات 153(A) اور 295(A) کے تحت ایک مقدمہ درج کرلیا ہے ۔ پولیس  سائبر کرائم ماہرین کی مدد حاصل کی جارہی ہے۔واضح رہے کہ گذشتہ ہفتہ بھی نارسنگی علاقہ میں خانہ کعبہ کی بے حرمتی والے پوسٹ کو فیس بک پر اپ لوڈ کرنے والے آکاش سنگھ کو پولیس نے گرفتار کیا تھا ۔ پرانے شہر میں اچانک کشیدگی کی اطلاع پر کمشنر پولیس حیدرآباد مسٹر ایم مہندر ریڈی نے پرانے شہر کا دورہ کیا اور متعلقہ پولیس عہدیداروں کو چوکس رہنے اور پولیس گشت میں شدت پیدا کرنے کے احکام دیئے۔ اس سلسلہ میں کمشنر پولیس نے میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے بتایا کہ بعض نوجوانوں کی جانب سے عیدی بازار علاقہ میں احتجاج منظم کیا گیا تھا اور یہ نوجوان پرانے شہر کے مختلف علاقوں میں بڑھنے کی کوشش کررہے تھے کہ انھیں روک دیا گیا اور اُن کے مکانات کو واپس کردیا گیا۔ کمشنر پولیس نے عوام سے اپیل کی ہے کہ سوشیل نیٹ ورکنگ ویب سائٹس پر شرپسند عناصر کی جانب سے اشتعال انگیز مواد یا پوسٹ اپ لوڈ کرنے پر متعلقہ پولیس کو فوری اطلاع دیں اور قانون کو اپنے ہاتھ میں لینے سے گریز کریں۔ مسٹر مہندر ریڈی نے بتایا کہ سنتوش نگر علاقہ میں منظم کئے گئے احتجاج کے بعد دونوں شہروں میں پولیس کو چوکس کردیا گیا اور حساس علاقوں میں پولیس کی گشت بڑھادی گئی ہے۔ انھوں نے عوام سے اپیل کی ہے کہ افواہوں اور سوشیل میڈیا پر آنے والی بے بنیاد خبروں پر دھیان نہ دیں۔

TOPPOPULARRECENT