Sunday , April 23 2017
Home / کھیل کی خبریں / خراب برتاؤ پر کھلاڑیوں کو میدان سے باہرکرنے کا قانون منظور

خراب برتاؤ پر کھلاڑیوں کو میدان سے باہرکرنے کا قانون منظور

دبئی ۔13 اپریل (سیاست ڈاٹ کام )کرکٹ کے قوانین کے محافظ میری لیبون کرکٹ کلب نے بیٹ کے سائز سے کمی کے علاوہ  خراب برتاؤ کرنے والے کھلاڑیوں کے خلاف سخت کارروائی کر نے کا قانون منظور کر لیا جو یکم اکتوبر سے نافذ ہو گا۔امید تھی کہ فٹبال کی طرح کرکٹ میں بھی امپائر کو اختیار دیا جائے گا کہ وہ زرد یا سرخ کارڈ دکھا کر کھلاڑیوں کو میدان سے باہر کر دیں لیکن امپائروں کو دو نئے اشارے ضرور سیکھنا ہوں گے۔ایم سی سی نے کرکٹ میں نئے قوانین متعارف کروائے ہیں جس کے تحت خراب رویے کے حامل کھلاڑیوں کو میدان سے باہر بھی کیا جا سکے گا۔ خراب رویے کے حامل کھلاڑیوں کیلئے چار نئے ضابطے متعارف کروائے گئے ہیں اور اسی کے مطابق کھلاڑیوں کے خلاف کارروائی کی جائے گی ۔پہلے مرحلہ میں کھلاڑی کو انتباہ دیا جائے گا اور اسی طرح کا رویہ دوبارہ اپنانے پر پانچ رنز کا جرمانہ کیا  جائے گا۔ دو سرے مرحلے کی سزا میں براہ راست حریف ٹیم کو پانچ رنز ایوارڈ کر دیے جائیں گے۔تیسرے درجے کی سزا کے طور پر کھلاڑی کو پانچ اوورز کیلئے معطل کردیا جائے گا جس کا دارومدار میچ کی طوالت پر ہو گا جبکہ حریف ٹیم کو پانچ رنز کی پینالٹی بھی ایوارڈ کر دی جائے گی۔چوتھے درجے کے تحت سنگین جرم کے مرتکب کھلاڑیوں کو پورے میچ کیلئے میدان سے باہر کردیا جائے گا اور حریف ٹیم کو پانچ رنز کا عطیہ بھی دیا جائے گا۔ نئے قوانین کے تحت امپائر کپتان سے کہے گا کہ سزا یافتہ کھلاڑی کو میدان سے باہر بھیجے لیکن اگر کپتان نے امپائر کے فیصلے سے اختلاف کیا تو امپائر میچ ختم کر کے حریف ٹیم کو فاتح قرار دے گا۔اسی طرح اگر حریف کپتان نے بھی امپائر کے فیصلے سے اختلاف کرتے ہوئے اسے ماننے سے انکار کیا تو میچ کو منسوخ کردیا جائے گا۔علاوہ ازیں بیٹ اور گیند کے درمیان توازن قائم کرنے کیلئے بیٹ کے سائز کو کم کرنے کا قانون بھی منظور کر لیا گیا جس کے تحت بیٹ کی زیادہ سے زیادہ چوڑائی 108 ملی میٹر، گہرائی67 ملی میٹر اور کونے 40 ملی میٹر چوڑے ہوں گے۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT